اپنا ضلع منتخب کریں۔

    پاکستان: 72 میچ بعد ہوا ٹیسٹ ڈیبیو، اب چوٹ کی وجہ سے ٹیم سے باہرہوا بابر اعظم کا خاص گیند باز

    پاکستان: 72 میچ بعد ہوا ٹیسٹ ڈیبیو، اب چوٹ کی وجہ سے ٹیم سے باہرہوا بابر اعظم کا خاص گیند باز (Instagram)

    پاکستان: 72 میچ بعد ہوا ٹیسٹ ڈیبیو، اب چوٹ کی وجہ سے ٹیم سے باہرہوا بابر اعظم کا خاص گیند باز (Instagram)

    Pakistan vs England: پاکستان کی ٹیم کو بڑا جھٹکا لگا ہے ۔ اس کا بڑا گیند باز ملتان میں نو دسمبر سے کھیلے جانے والے دوسرے ٹیسٹ سے باہر ہوگیا ہے ۔ اتنا ہی نہیں، اس گیند باز کے کراچی میں ہونے والے تیسرے ٹیسٹ میں کھیلنے کی بھی امید کم ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Lahore
    • Share this:
      نئی دہلی : پاکستان کی ٹیم کو بڑا جھٹکا لگا ہے ۔ اس کا بڑا گیند باز ملتان میں نو دسمبر سے کھیلے جانے والے دوسرے ٹیسٹ سے باہر ہوگیا ہے ۔ اتنا ہی نہیں، اس گیند باز کے کراچی میں ہونے والے تیسرے ٹیسٹ میں کھیلنے کی بھی امید کم ہے ۔ اس گیند باز کا نام حارث روف ہے ۔ حارث نے 15 ون ڈے اور 57 ٹی ٹوینٹی یعنی 72 میچ کھیلنے کے بعد پاکستان کیلئے راولپنڈی ٹیسٹ سے ڈیبیو کیا تھا اور پہلے ٹیسٹ میں ہی زخمی ہوگئے اور ان کے سیریز سے باہر ہونے کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔

      بتادیں کہ راولپنڈی ٹیسٹ میں فیلڈنگ کے دوران حارث کا پاوں گیند کے اوپر آگیا تھا اور اس کی وجہ سے ان کے دائیں ران کے مسلز میں چوٹ لگ گئی تھی ۔ اس کے بعد ان کا ایم آر آئی اسکین ہوا تھا اور وہ ٹیسٹ میچ میں دوبارہ گیند بازی کیلئے نہیں اترے تھے ۔ انہوں نے پہلی اننگز میں 13 اوورز پھینکے تھے ۔ اس میں انہوں نے 78 رنز دے کر وکٹ لیا تھا ۔ حارث نے دوسری اننگز میں بھلے ہی گیند بازی نہیں کی، لیکن وہ بلے بازی کیلئے اترے، لیکن کھاتہ کھولے بغیر ہی پویلین لوٹ گئے ۔

      یہ بھی پڑھئے: پاکستان کیلئے صرف 8 ٹیسٹ کھیلنے والے کھلاڑی نے رقم کی تاریخ، اس لیجنڈ کو چھوڑا پیچھے


      یہ بھی پڑھئے: انگلینڈ نے پاکستان کے گیند بازوں کی ایسی کی پٹائی کہ بن گیا یہ بڑا ریکارڈ، اب تک نہیں ہوا تھا ایسا


      حارث روف کی چوٹ نے پاکستانی ٹیم کی پریشانیاں بڑھا دی ہیں ، کیونکہ شاہین شاہ آفریدی گھٹنے کی چوٹ دوبارہ ابھرنے کی وجہ سے انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز نہیں کھیل رہے ہیں۔ ایسے میں پاکستان کو اس ٹیسٹ سیریز کے لئے منتخب کی گئی 18 رکنی ٹیم کے باہر سے تیز گیند باز بلانا پڑسکتا ہے ۔ حارث روف کے زخمی ہونے کے بعد نسیم شاہ اور محمد علی کے بعد محمد وسیم جونیئر ہی واحد اسپیشلسٹ تیز گیند باز باقی ہیں۔ حالانکہ حسن علی اور محمد عباس کے طور پر پاکستان کے پاس دو متبادل ضرور ہیں ۔

      اگر محمد وسیم جونیئر کو دوسرے ٹیسٹ میں حارث روف کے متبادل کے طور پر منتخب کیا جاتا ہے تو پاکستان کیلئے اس ٹیسٹ سیریز میں ایک اور کھلاڑی ڈیبیو کرے گا ۔ اس سے پہلے راولپنڈی ٹیسٹ میں پاکستان کیلئے چار کھلاڑیوں سید شکیل، حارث روف، زاہد محمود اور محمد علی نے ڈیبیو کیا تھا ۔ حالانکہ چاروں کھلاڑیوں کیلئے ہی ٹیسٹ ڈیبیو خراب رہا ۔ لیگ اسپنر زاہد محمود ڈیبیو پر سب سے زیادہ رن دینے والے گیند باز بنے ۔ انہوں نے پہلی اننگز میں 235 رنز دئے تھے۔ محمد علی نے بھی 25 اوورز میں 124 رنز دئے تھے ۔ ایسے میں حسن علی کے تجربہ کو دیکھتے ہوئے انہیں پاکستانی ٹیم سے جوڑا جاسکتا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: