ہوم » نیوز » اسپورٹس

پی سی بی نے کہا : بی سی سی آئی ویزا اور سیکورٹی کی ضمانت دے ، تبھی ہندوستان میں کھیلیں گے ٹی 20 ورلڈ کپ

ICC T20 World Cup 2021 : احسان مانی نے کہا کہ ہندوستان جب تک اگلے ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ کیلئے اس کی ٹیم ، مداح اور صحافیوں کو ویزا دینے کیلئے تحریری طور پر یقین دہانی نہیں کرائے گا ، وہ ٹورنامنٹ یو اے ای میں کرانے کا مطالبہ کرتے رہیں گے ۔

  • Share this:
پی سی بی نے کہا : بی سی سی آئی ویزا اور سیکورٹی کی ضمانت دے ، تبھی ہندوستان میں کھیلیں گے ٹی 20 ورلڈ کپ
پی سی بی نے کہا : بی سی سی آئی ویزا اور سیکورٹی کی ضمانت دے ، تبھی ہندوستان میں کھیلیں گے ٹی 20 ورلڈ کپ

پاکستان کرکٹ بورڈ کے صدر احسان مانی نے کہا کہ ہندوستان جب تک اگلے ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ کیلئے اس کی ٹیم ، مداح اور صحافیوں کو ویزا دینے کیلئے تحریری طور پر یقین دہانی نہیں کرائے گا ، وہ ٹورنامنٹ یو اے ای میں کرانے کا مطالبہ کرتے رہیں گے ۔ لاہور میں پی سی بی دفتر میں صحافیوں سے بات چیت میں مانی نے کہا کہ بورڈ نے آئی سی سی کو اپنی بات بتا دی ہے ۔ احسان مانی نے کہا کہ یہ بگ تھری کی ذہنیت بدلنے کی ضرورت ہے ۔ ہم صرف قومی ٹیم کیلئے نہیں بلکہ اپنے فینس ، افسران اور صحافیوں کیلئے بھی ویزا ملنے کی تحریری ضمانت مانگ رہے ہیں ۔


مانی نے کہا کہ ہم نے آئی سی سی سے کہہ دیا کہ ہم مارچ کے آخر تک تحریری یقین دہانی چاہتے ہیں تاکہ پتہ چل سکے کہ آگے کیا کرنا ہے ۔ ورنہ ہم ورلڈ کپ ہندوستان کی بجائے یو اے ای میں کرانے کے اپنے مطالبہ پر قائم رہیں گے ۔ بتادیں کہ ٹی 20 ورلڈ کپ ہندوستان میں اکتوبر اور نومبر میں ہونے والا ہے ۔ مانی نے کہا کہ وہ پاکستان کی پوری ٹیم کے تحفظ کے انتظامات پر بھی بی سی سی آئی سے تحریری یقین دہانی چاہتے ہیں ۔


پاکستان کرکٹ بورڈ کے صدر احسان مانی نے کہا کہ وزیر اعظم اور بورڈ کے چیف نگراں عمران خان اور ان کا دفتر بڑھاتے ہیں تو وہ اس عہدہ پر بنے رہنے کیلئے تیار ہیں ۔ مانی کا تین سال کی مدت کار اس سال ستمبر میں ختم ہوجائے گی ، لیکن انہوں نے لاہور میں صحافیوں سے کہا کہ وہ اس میں توسیع کیلئے تیار ہیں ۔


آئی سی سی کے سابق صدر مانی نے کہا کہ میں نے کبھی یہ عہدہ نہیں مانگا تھا اور نہ ہی وزیر اعظم سے اس بارے میں بات کی ۔ انہوں نے مجھے ذمہ داری دی اور میں نے اس کو نبھانے کی پوری کوشش کی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے کام سے مطمئن ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے سی ای او وسیم خان کو اس کا کریڈٹ جاتا ہے کہ کورونا وبا کے باوجود وہ پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی واپسی کراسکے ۔ میں چاہوں گا کہ ان کی مدت کار تین سال کیلئے مزید بڑھادی جائے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Feb 20, 2021 07:06 PM IST