ہوم » نیوز » اسپورٹس

اس ہندوستانی کھلاڑی نے صرف 23 سال کی عمر میں چھوڑی کرکٹ ، آج یہ کام کرنے پر ہے مجبور

کامران خان نے ایک سال تک ممبئی میں جدوجہد کی ، لیکن ایک دن انہیں ممبئی میں پولیس کلب کیلئے کھیلنے کا موقع ملا اور انہوں نے اپنی رفتار کے دم پر چار وکٹ حاصل کئے ۔

  • Share this:
اس ہندوستانی کھلاڑی نے صرف 23 سال کی عمر میں چھوڑی کرکٹ ، آج یہ کام کرنے پر ہے مجبور
اس ہندوستانی کھلاڑی نے صرف 23 سال کی عمر میں چھوڑی کرکٹ ، آج یہ کام کرنے پر ہے مجبور

کرکٹ ایک ایسا کھیل ہے جہاں پتہ نہیں چلتا کہ کب کہاں کیا ہوجائے ۔ میچ کسی بھی لمحہ پلٹ جاتا ہے اور ہار کی جانب جارہی ٹیم اچانک جیت جاتی ہے ۔ کچھ ایسا ہی کرکٹ کھلاڑیوں کے ساتھ بھی ہوتا ہے ۔ کب ان کا کیریئر ساتویں آسمان پر پہنچ جائے اور کب وہ آسمان سے نیچے گر جائے ، یہ کوئی نہیں جانتا ہے ۔ آج ہم آپ کو بتاتے ہیں ایک ایسے کرکٹر کی کہانی ، جس کی رفتار نے کئی بلے بازوں کو چونکا دیا تھا ۔ اس کھلاڑی کے فین لیجنڈ اسپنروں میں سے ایک شین وارن بھی تھے ۔ شین وارن نے اس کھلاڑی کو موقع دیا ، لیکن صرف 23 سال کی عمر میں اس کا کیریئر ختم ہوگیا اور آج یہ کھلاڑی کھیتی کرکے اپنے کنبہ کی پرورش کرتا ہے ۔


ہم بات کررہے ہیں آئی پی ایل میں راجستھان رائلس اور پونے واریئرس کی جانب سے کھیل چکے بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز کامران خان کی ، جو اترپردیش کے مئو کے رہنے والے ہیں ۔ کامران خان کی کرکٹ میں انٹری کی کہانی کافی دلچسپ ہے ۔ کامران خان ایک لکڑہارے کے بیٹے تھے اور وہ اتنے غریب تھے کہ دو وقت کی روٹی بھی ان کے کنبہ کیلئے مشکل ہوتی تھی ۔ کامران خان نے پلیٹ فارم پر اپنی راتیں گزاریں ، لیکن وہ کرکٹر بننے کی خواہش لے کر ممبئی آگئے ۔


کامران خان نے ایک سال تک ممبئی میں جدوجہد کی ، لیکن ایک دن انہیں ممبئی میں پولیس کلب کیلئے کھیلنے کا موقع ملا اور انہوں نے اپنی رفتار کے دم پر چار وکٹ حاصل کئے ۔ اس میچ میں کامران خان نے 140 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے بھی تیز گیندیں پھینکیں ۔ راجستھان رائلس کے کوچنک ڈائریکٹر ڈیرین بیری کی نظر کامران پر پڑی اور اس وقت کے کپتان شین وارن بھی کامران کی گیند بازی دیکھ کر حیررران رہ گئے ۔




کامران کا قد چھوٹا تھا ، لیکن وہ انتہائی تیز گیند بازی کرتے تھے اور ان کے پاس اچھی یارکر پھینکنے کا بھی ہنر تھا ۔ کامران خان کو راجستھان رائلس کی ٹیم نے 24 ہزار ڈالر کا کنٹریکٹ دیا ۔ کامران خان نے 2009 اور 2010 میں راجستھان کی جانب سے آئی پی ایل میں کھیلا اور 2011 میں انہیں پونے واریئرس نے اپنا بنایا ، لیکن اس ٹیم نے کامران کو صرف ایک میچ میں موقع دیا ۔ کامران خان نے آئی پی ایل میں نو میچوں میں نو وکٹ لئے ۔ یہی نہیں انہوں نے آئی پی ایل کا پہلا سپراوور بھی پھینکا ، جس میں انہوں نے کرس گیل جیسے کھلاڑی کا وکٹ لے کر راجستھان کو جیت دلائی ۔

اب کھیتی کرنے پر مجبور کامران

کامران خان کی زندگی میں سب کچھ صحیح چل رہا تھا ، لیکن اچانک سال 2011 کے بعد وہ عرش سے فرش پر آگئے ۔ سال 2011 میں ایک ہی آئی پی ایل میچ میں موقع ملا اور اگلے سال انہیں کسی ٹیم نے نہیں خریدا ۔ اچانک کامران خان آئی پی ایل سے غائب ہوگئے ۔ کامران نے یوپی کیلئے دو فرسٹ کلاس میچ اور گیارہ ٹی 20 میچ بھی کھیلے ، لیکن وہاں سے بھی انہیں آگے موقع نہیں دیا گیا ۔ میڈیا رپورٹس کی مانیں تو کامران خان اب اپنے کنبہ کی پرورش کیلئے کھیتی کرتے ہیں ۔ اس کے ساتھ ہی وہ لوکل ٹورنامنٹس میں بھی کھیلتے نظر آتے ہیں ۔ کامران خان ٹینس بال کرکٹ بھی کھیلنے پر مجبور ہیں ۔ سوچئے ایک کرکٹر جو شین وارن جیسے لیجنڈ کے ساتھ کھیل رہا تھا ، آج وہ کھیتی کرتا ہے اور ٹینس بال کرکٹ کھیلتا ہے ۔ 23 سال کی عمر سے ہی کامران خان بڑے لیول پر کرکٹ نہیں کھیلے ہیں ۔
First published: Jun 15, 2020 10:48 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading