உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ریلائنس انڈسٹریز اب امیرات کرکٹ بورڈ کی نئی یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ میں خریدے گی ٹیم، تیاری پوری

    ریلائنس انڈسٹریز اب امیرات کرکٹ بورڈ کی نئی یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ میں خریدے گی ٹیم

    ریلائنس انڈسٹریز اب امیرات کرکٹ بورڈ کی نئی یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ میں خریدے گی ٹیم

    ریلائنس انڈسٹریز لمیٹیڈ امیرات کرکٹ بورڈ ( ای سی بی) کی ہونے والی یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ میں ایک نئی فرنچائزی کی ملکیت حاصل کرے کیلئے تیار ہے ۔

    • Share this:
      ممبئی : ریلائنس انڈسٹریز لمیٹیڈ امیرات کرکٹ بورڈ ( ای سی بی) کی ہونے والی یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ میں ایک نئی فرنچائزی کی ملکیت حاصل کرے کیلئے تیار ہے ۔ ایک بیان کے مطابق یہ قدم ورلڈ فرنچائزی بیسڈ کھیلوں میں ریلائنس انڈسٹریز کے کرکٹ آپریشنز کی پہلی بڑی غیر ملکی توسیع ہے ۔ خاص بات ہے کہ ریلائنس کے پاس انڈین پریمیئر لیگ کی پانچ مرتبہ کی چیمپئن ٹیم ممبئی انڈینس کی بھی ملکیت کے حقوق ہیں ۔

      ممبئی انڈینس کی شریک مالک نیتا امبانی نے کہا کہ میں اس نئی لیگ کے ذریعہ سے اپنے عالمی مداحوں کی تعداد کو مضبوط کرنے اور ان کے ساتھ طویل عرصہ تک وابستگی رکھنے کیلئے تیار ہوں ۔ ریلائنس انڈسٹریز لمیٹیڈ اپنی شریک کمپنی ریلائنس اسٹریٹجک بزنس وینچرس لمیٹڈ کے ذریعہ سے اس ٹیم کی ملکیت اور آپریشن کے حقوق حاصل کرے گی ۔

      یہ قدم ورلڈ فرنچائزی بیسڈ کھیلوں میں ریلائنس انڈسٹریز کے کرکٹ آپریشنز کی پہلی بڑی غیر ملکی توسیع ہے ۔ کمپنی کے کرکٹ کاروبار میں اب اسپانسرشپ ، کنسلٹینسی ، براڈ کاسٹ اور ٹیلنٹ مینجمنٹ کے علاوہ دو کرکٹ کلب شامل ہوں گے ۔ آر آئی ایل ، ممبئی انڈینس کے توسط سے انڈین پریمیئر لیگ کے آٹھ بانی اراکین میں سے ایک ہے ۔

      یو اے ای ٹی 20 لیگ کے چیئرمین اور ای سی بی کے وائس چیئرمین خالد الزرونی کا ماننا ہے کہ یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ میں آر آئی ایل کی سرمایہ کاری یو اے ای کے ویزن اور عالمی سطح کی کرکٹ کو فروغ دینے کی صلاحیت میں کارپوریٹ صعنت کے بھروسے کو دکھاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا ہدف یو اے ای ٹی ٹوینٹی لیگ کے توسط سے یو اے ای میں کرکٹ کو بدلنا ہے ۔

      آر آئی ایل کے پاس ایک ثابت شدہ ٹریک ریکارڈ ہے ۔ لیگ کے ساتھ آر آئی ایل جیسی بڑی کمپنی کا جڑنا ہم پر اعتماد اور ہمارے بنیادی ڈھانچے کی طاقت کی عکاسی کرتا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: