உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IND vs ENG : روہت شرما نے چھکے سے پوری کی ٹیسٹ سنچری ، اہلیہ ریتیکا کا ری ایکشن دیکھ کر رہ جائیں گے حیران

    IND vs ENG : روہت شرما نے چھکے سے پوری کی ٹیسٹ سنچری ، اہلیہ ریتیکا کا ری ایکشن دیکھ کر رہ جائیں گے حیران (AP)

    IND vs ENG : روہت شرما نے چھکے سے پوری کی ٹیسٹ سنچری ، اہلیہ ریتیکا کا ری ایکشن دیکھ کر رہ جائیں گے حیران (AP)

    ٹیم انڈیا کے اسٹار سلامی بلے باز روہت شرما (Rohit Sharma) جب 94 رنوں کے نجی اسکور پر تھے تو انہوں نے معین علی کی گیند پر لانگ آن پر چھکا مارا اور سنچری پوری کی ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : ہندوستانی سلامتی بلے باز روہت شرما نے انگلینڈ کے خلاف اوول میں جاری چوتھے ٹیسٹ میں شاندار بلے بازی کرتے ہوئے سنچری بنائی ۔ روہت نے معین علی کی گیند پر چھکا لگا کر اپنی سنچری پوری کی ، جو غیر ملکی سرزمین پر ٹیسٹ میں ان کی پہلی سنچری ہے ۔ روہت نے جیسے ہی چھکا لگا کر اپنی سنچری پوری کی ، کپتان وراٹ کوہلی سمیت ٹیم انڈیا کے دیگر کھلاڑی تالیاں بجاتے نظر آئے ۔

      سونی اسپورٹس نے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو شیئر کیا ہے ، جس میں روہت معین علی کی گیند پر چھکا لگاتے ہیں ۔ اس کے بعد میدان پر ان کے ساتھ موجود چتیشور پجارا ان سے ہاتھ ملاتے ہیں اور انہیں گلے لگاتے ہیں ۔ وراٹ کوہلی کے علاوہ کوچ روی شاستری بھی تالیاں بجاتے نظر آرہے ہیں ۔ روہت بھی ناظرین کا شکریہ ادا کرنے کیلئے ہوا میں بلے لہرایا ۔

      روہت کی اہلیہ ریتیکا بھی اسٹیڈیم میں موجود تھیں ۔ وہ بھی کھڑے ہوکر تالی بجاتی نظر آئیں ۔


      روہت شرما کی یہ سنچری اس لئے بھی خاص ہے ، کیونکہ ناقدین ان کی تکنیک پر اکثر سوال کھڑے کرتے تھے ۔ انگلینڈ میں ان کی ناکامی کی پیشین گوئیاں کی جارہی تھیں ، لیکن ہٹ مین کے نام سے مشہور روہت شرما نے اپنے سبھی ناقدین کی بولتی بند کردی ۔ روہت شرما نے اس وقت یہ سنچری بنائی جب ٹیم انڈیا کو اس کی سب سے زیادہ ضرورت تھی ۔

      پہلی اننگز میں انگلینڈ کو 99 رنوں کی سبقت ملی تھی اور روہت شرما سے اچھی شروعات کی امید تھی ۔ روہت امیدوں پر کھرے اترے اور انہوں نے راہل کے ساتھ پہلی وکٹ کیلئے 83 رنوں کی شراکت داری کی ۔ راہل نصف سنچری سے چوک گئے ، لیکن روہت نے پہلے نصف سنچری پوری اور اس کے بعد انہوں نے غیر ملکی سرزمین پر اپنی پہلی سنچری بنائی ۔

       
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: