ہوم » نیوز » اسپورٹس

سچن کے سامنے شرم سے جھک گیا تھا اس پاکستانی کھلاڑی کا سر ، کہا : معاف کردو ، جانئے کیوں

پاکستان کے لیجنڈ کرکٹر ثقلین مشتاق نے بتایا کہ کیسے انہوں نے پہلی مرتبہ سچن تیندولکر کی سیلجنگ کرنے کی کوشش کی اور پھر ماسٹر بلاسٹر کے ایک جواب نے ان کی بولتی بند کردی ۔

  • Share this:
سچن کے سامنے شرم سے جھک گیا تھا اس پاکستانی کھلاڑی کا سر ، کہا : معاف کردو ، جانئے کیوں
سچن کے سامنے شرم سے جھک گیا تھا اس پاکستانی کھلاڑی کا سر ، کہا : معاف کردو ، جانئے کیوں

سچن تیندولکر کے 47 ویں یوم پیدائش پر دنیا بھر کے لیجنڈ کرکٹروں نے انہیں مبارکباد دی ۔ ان کھلاڑیوں کی فہرست میں پاکستان کے سابق آف اسپنر ثقلین مشتاق کا نام بھی شامل ہے ۔ ثقلین مشتاق نے سچن کو یوم پیدائش کی مبارکباد دینے کے ساتھ ہی ایک انٹرویو میں ایک قصہ بھی سنایا ۔ ثقلین نے بتایا کہ کیسے انہوں نے پہلی مرتبہ سچن تیندولکر کی سیلجنگ کرنے کی کوشش کی اور پھر ماسٹر بلاسٹر کے ایک جواب نے ان کی بولتی بند کردی ۔


نوے کی دہائی میں سچن اور ثقلین کے درمیان کرکٹ کے میدان پر زبردست جنگ ہوتی تھی ۔ اسی طرح کی ایک لڑائی کناڈا میں کھیلے گئے سہارا کپ میں بھی ہوئی ۔ اس سیریز میں ثقلین نے سوچا کہ انہیں سچن کی سلیجنگ کرنی چاہئے ۔ ثقلین نے بتایا کہ میں اس وقت نیا نیا ٹیم میں آیا تھا اور میں نے سچن کو پہلی مرتبہ سلیج 1997 میں کیا ۔ ثقلین نے مزید بتایا کہ سچن میرے پاس آئے اور کہا کہ میں نے کبھی تمہارے ساتھ بدتمیزی نہیں کی تو تم میرے ساتھ ایسا کیوں کر رہے ہو؟ سچن کی یہ بات سن کر مجھے کافی شرم آئی اور مجھے سمجھ میں نہیں آیا کہ انہیں کیا جواب دوں ۔


ثقلین مشتاق نے مزید بتایا کہ سچن نے مجھ سے کہا کہ میں تمہیں ایک کھلاڑی اور انسان کے طور پر کافی اچھا سمجھتا ہوں ۔ سچن کا یہ جواب سن کر میں کچھ نہیں بول سکا اور میچ کے بعد میں نے ان سے معافی مانگی ۔ اس کے بعد میں نے کبھی سچن کو سلیج نہیں کیا ۔ سچن نے میری گیندوں پر کافی رن بنائے ، لیکن میرے دماغ میں کبھی انہیں سلیج کرنے کا خیال نہیں آیا ۔


ثقلین نے 1999 میں کھیلے گئے تاریخی چنئی ٹیسٹ کو بھی یاد کیا ، جس میں انہوں نے 10 وکٹ لئے تھے اور پاکستان نے انتہائی دلچسپ مقابلہ میں ہندوستان کو ۱۲ رنوں سے ہرادیا تھا ۔ ثقلین کی شاندار گیند بازی کی وجہ سے ہی سچن کے 136 رن بنانے کے بعد ہندوستان وہ ٹیسٹ میچ ہار گیا تھا ۔

ثقلین مشتاق نے چنئی ٹیسٹ کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ 1999 میں کھیلے گئے چنئی ٹیسٹ میں ہمارے درمیان کوئی بات چیت نہیں ہوئی ، صرف گیند اور بلے کا مقابلہ ہوا ۔ ہم دونوں نے اپنے اپنے ملک کو کامیابی دلانے کی بھرپور کوشش کی ۔ میں خود کو خوش قسمت مانتا ہوں کہ سچن کے کیریئر کی اس اننگز کے ساتھ میرا نام جڑا ہوا ہے ۔ فرق صرف اتنا ہی رہا کہ اس دن اللہ ہمارے ساتھ تھے ۔
First published: Apr 24, 2020 11:24 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading