உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan: شاہد آفریدی پر پولیس نے لگایا جرمانہ، پھر سیلفی لے کر کی خاص اپیل، جانئے پورا معاملہ

    Pakistan: شاہد آفریدی پر پولیس نے لگایا جرمانہ، پھر سیلفی لے کر کی خاص اپیل، جانئے پورا معاملہ

    Pakistan: شاہد آفریدی پر پولیس نے لگایا جرمانہ، پھر سیلفی لے کر کی خاص اپیل، جانئے پورا معاملہ

    Shahid Afridi Fined : جرمانہ ادا کرنے کے بعد آفریدی نے ہائی وے پولیس کے دو اہلکاروں کے ساتھ اپنی تصویر ٹویٹر پر شیئر کی۔ اس کے ساتھ انہوں نے لکھا: ’’نیشنل ہائی وے اور موٹروے پولیس کے عملے سے بات کر کے بہت اچھا لگا۔ ان کا رویہ مکمل طور پر پیشہ ورانہ تھا۔

    • Share this:
      نئی دہلی : پاکستان کی نیشنل ہائی وے اینڈ موٹروے پولیس نے سابق کرکٹ کپتان شاہد آفریدی پر جرمانہ عائد کیا ہے۔ آفریدی پر کراچی سے لاہور سفر کے دوران تیز رفتار سے گاڑی چلانے کیلئے جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ آفریدی نے 1500 روپے جرمانہ ادا کیا اور ہائی وے پولیس کی تعریف کی کہ انہوں نے اسپورٹس سلیبریٹی ہونے کے باوجود انہیں کوئی رعایت نہیں دی۔

       

      یہ بھی پڑھئے: میچ کے دوران آپس میں ٹکرائے شائقین، جم کر چلے لات اور گھونسے، دیکھئے ویڈیو


      جرمانہ ادا کرنے کے بعد آفریدی نے ہائی وے پولیس کے دو اہلکاروں کے ساتھ اپنی تصویر ٹویٹر پر شیئر کی۔ اس کے ساتھ انہوں نے لکھا: ’’نیشنل ہائی وے اور موٹروے پولیس کے عملے سے بات کر کے بہت اچھا لگا۔ ان کا رویہ مکمل طور پر پیشہ ورانہ تھا۔ بس میری عاجزانہ تجویز ہے کہ ہمارے پاس بہت اچھی شاہراہیں ہیں۔ اس پر رفتار کی حد 120 کلومیٹر فی گھنٹہ سے زیادہ ہونی چاہئے۔ نیشنل ہائی وے پولیس اتھارٹی نے بھی اپنے افسران کی تعریف کرنے پر آفریدی کا شکریہ ادا کیا ہے ۔



       

      یہ بھی پڑھئے: ہندوستان کا پاسپورٹ، ہریانہ کا آدھار کارڈ ... Afghanistan کے کھلاڑی پر دہلی میں کیس درج


      خیال رہے کہ آفریدی انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائر ہونے کے بعد سے سوشل میڈیا پر کافی سرگرم رہتے ہیں اور اکثر اپنی تصاویر شیئر کرتے رہتے ہیں۔ آفریدی نے اپنا انٹرنیشنل ڈیبیو 1996 میں کینیا کے خلاف کیا تھا اور اپنا آخری انٹرنیشنل میچ 2018 میں ویسٹ انڈیز کے خلاف کھیلا تھا ۔

      آفریدی نے 2009 میں پاکستان کو ٹی ٹوینٹی چیمپئن بنانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ آفریدی نے 27 ٹیسٹ میں 1716 رنز بنائے ہیں۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: