اپنا ضلع منتخب کریں۔

    انشااللہ، ہندوستان میں ورلڈ کپ اٹھائیں گے، پاکستان کی ہار کے بعد بولے شعیب اختر

    شعیب اختر

    شعیب اختر

    ہار کے بعد سابق کرکٹر شعیب اختر نے ٹورنامنٹ میں پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ جس جذبے کے ساتھ واپسی کی اور فائنل میں پہنچا وہ قابل تعریف ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Pakistan
    • Share this:
      آئی سی سی T20 ورلڈ کپ 2022 میں پاکستان کی جیت کا سفر اتوار (13 نومبر) کو میلبورن کرکٹ گراؤنڈ (MCG) میں جوس بٹلر کے انگلینڈ نے روک دیا۔ 'مین ان گرین' کو انگلینڈ کے ہاتھوں پانچ وکٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا، جنہوں نے کھیل کے مختصر ترین فارمیٹ میں بھی اپنا غلبہ بڑھایا۔ اس طرح انگلینڈ پہلی کرکٹ ٹیم بن گئی جس نے ایک ساتھ ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی دونوں ورلڈ کپ جیتے۔ پاکستان کے شائقین اس گراؤنڈ پر 1992 کی تاریخی فتح کو دہرانے کی امید کر رہے تھے لیکن انہیں مایوسی ہوئی۔ ایسے میں پاکستان کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر اپنی ٹیم کو تسلی دیتے نظر آئے۔

      پاکستان کرکٹ ٹیم کی بیٹنگ ان کی لارڈز میں 1999 کے ورلڈ کپ فائنل کی کوشش جیسی تھی۔ کلائی کے اسپنر عادل رشید نے بابر اعظم اینڈ کمپنی کو دباؤ میں ڈال دیا۔ ان کے شاندار ٹانگ بریک نے بلے بازوں کو دنگ کر دیا۔ پاکستان کا 8 وکٹوں پر 137 کا ٹوٹل کبھی بھی کافی نہیں تھا۔ جواب میں بین اسٹوکس (52*) نے آگے بڑھ کر 2019 کے ون ڈے ورلڈ کپ جیسا کھیل دکھایا۔ 19 اوورز میں ہدف کا پیچھا کرتے ہوئے انہوں نے ایک بار پھر 2010 میں ویسٹ انڈیز میں جیتنے والا ٹائٹل اپنے نام کیا۔

      ہار کے بعد سابق کرکٹر شعیب اختر نے ٹورنامنٹ میں پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ جس جذبے کے ساتھ واپسی کی اور فائنل میں پہنچا وہ قابل تعریف ہے۔ اختر نے ایک ویڈیو میں کہا، 'پاکستان ورلڈ کپ ہار گیا لیکن آپ لوگوں نے بہت اچھا کام کیا۔ آپ کہیں کھڑے نہیں ہوئے لیکن آخر کار آپ نے فائنل کھیلا۔ پاکستان کا باؤلنگ اٹیک، شاندار۔ آپ لوگوں نے پورے ٹورنامنٹ میں غیر معمولی کام کیا ہے۔ قسمت واقعی ایک فیکٹر تھی، لیکن انہوں نے اچھا کھیلا اور فائنل میں جگہ بنائی۔"

      T20 World Cup 2022: وراٹ کوہلی نے رقم کی تاریخ، ایک اور خاص ریکارڈ کیا اپنے نام



       

      172 ٹرینیں رد، کئی ٹرینیوں کا بدلا راستہ، جانئے اپنی ٹرین کا اسٹیٹس

      انہوں نے مزید کہا کہ ’’کوئی مسئلہ نہیں… شاہین کا ان فٹ ہونا کھیل کا اہم موڑ تھا لیکن ہمیں سر جھکانے کی ضرورت نہیں ہے۔ ٹھیک ہے۔ بین اسٹوکس نے 2016 میں پانچ چھکے لگائے تھے اور وہ انگلینڈ سے ورلڈ کپ ہار گئے تھے۔ لیکن انہوں نے 2022 میں اس کی بھرپائی کرلی تھی۔ انہوں نے اپنی ٹیم کے لیے T20 ورلڈ کپ جیتا تھا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: