ہوم » نیوز » اسپورٹس

شعیب اختر نے پاکستانی کھلاڑیوں سے کہا- ٹی -20 بھی مت کھیلو، گھر جاو اور آرام کرو

پاکستان کے سابق عظیم تیز گیند باز شعیب اختر (Shoaib Akhtar) نے کہا کہ 16 سال کے بچوں کے ساتھ کام کریں گے اور پورے پاکستان سے لڑکوں کو لائیں گے اور ان میں سرمایہ کاری کریں گے۔

  • Share this:
شعیب اختر نے پاکستانی کھلاڑیوں سے کہا- ٹی -20 بھی مت کھیلو، گھر جاو اور آرام کرو
شعیب اختر نے پاکستانی کھلاڑیوں سے کہا- ٹی -20 بھی مت کھیلو، گھر جاو اور آرام کرو

نئی دہلی: پاکستان کے سابق عظیم تیز گیند باز شعیب اختر (Shoaib Akhtar) نے ٹسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لینے والے پاکستانی کھلاڑی محمد عامر اور وہاب ریاض کی پھٹکار لگائی ہے۔ کرکٹ پاکستان سے بات کرتے ہوئے شعیب اختر نے کہا کہ اگر یہ ان کے اختیار میں ہوتا تو وہ کھلاڑیوں کے لئے ٹسٹ کرکٹ کو لازمی کردیتے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کھلاڑی ٹسٹ کرکٹ نہیں کھیلنا چاہیں گے تو انہیں پاکستان کے لئے بھی کھیلنے کی اجازت نہیں ملے گی۔


سابق تیز گیند باز شعیب اختر نے کہا کہ اگر پالیسی ان کے ہاتھ میں ہوتی تو کھلاڑیوں سے کہتے کہ اگر آپ پاکستان کے لئے کھیلنا چاہتے ہیں تو آپ کو ٹسٹ کرکٹ بھی کھیلنا ہوگا۔ کچھ وقت پہلے محمد عامر اور وہاب ریاض نے چھوٹے فارمیٹ پر زیادہ دھیان دینے کے لئے ٹسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لیا تھا۔


سابق تیز گیند باز شعیب اختر نے کہا کہ اگر پالیسی ان کے ہاتھ میں ہوتی تو کھلاڑیوں سے کہتے کہ اگر آپ پاکستان کے لئے کھیلنا چاہتے ہیں تو آپ کو ٹسٹ کرکٹ بھی کھیلنا ہوگا۔
سابق تیز گیند باز شعیب اختر نے کہا کہ اگر پالیسی ان کے ہاتھ میں ہوتی تو کھلاڑیوں سے کہتے کہ اگر آپ پاکستان کے لئے کھیلنا چاہتے ہیں تو آپ کو ٹسٹ کرکٹ بھی کھیلنا ہوگا۔


شعیب اختر نے نوجوانوں سے متعلق کہی یہ بات

کھیل کے فٹنس پہلو کو دھیان میں رکھتے ہوئے شعیب اختر نے کہا کہ وہ ابھی بھی کھلاڑیوں کی فٹنس کو مینیج کریں گے۔ ٹریننگ دیں گے، لیکن انہیں لال گیند سے بھی کرکٹ کھیلنے کی ضرورت ہے یا پھر ٹی-20 کرکٹ بھی کھیلنا چاہئے۔ وہ سال بھر میں 12 ٹسٹ چاہتے ہیں۔ شعیب اختر نے کہا کہ اگر اس کے بعد بھی کوئی کھلاڑی ضروری کام نہیں کرے گا تو کوئی سینٹرل کانٹریکٹ (مرکزی معاہدہ) نہیں ملے گا۔

شعیب اختر نے کہا کہ پاکستان کو نوجوانوں کی صلاحیت نکھارنی چاہئے اور انہیں مستقبل کے ورلڈ کلاس کرکٹر کے طور پر تیار کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اگر وہ کرکٹ کا سب سے لمبا فارمیٹ نہیں کھیلنا چاہے تو وہ یہی کہیں گے کہ ٹی -20 کرکٹ بھی نہ کھیلیں اور گھر جاکر آرام کریں۔ وہ 16 سال کے بچوں کے ساتھ کام کریں گے اور پورے پاکستان سے لڑکوں کو لائیں گے اور ان میں سرمایہ کاری کریں گے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 06, 2021 10:57 AM IST