உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایک فیصلہ، ایک نو بال اور Team India کو پاکستان سے ملا کبھی نہ بھولنے والا درد

    India vs Pakistan champions trophy final:  چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا تھا۔ لیکن یہ ایک فیصلہ ٹیم انڈیا پر بہت بھاری تھا، کیونکہ پہلے کھیلتے ہوئے پاکستان نے 50 اوور میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 338 رنز بنائے تھے۔

    India vs Pakistan champions trophy final: چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا تھا۔ لیکن یہ ایک فیصلہ ٹیم انڈیا پر بہت بھاری تھا، کیونکہ پہلے کھیلتے ہوئے پاکستان نے 50 اوور میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 338 رنز بنائے تھے۔

    India vs Pakistan champions trophy final: چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا تھا۔ لیکن یہ ایک فیصلہ ٹیم انڈیا پر بہت بھاری تھا، کیونکہ پہلے کھیلتے ہوئے پاکستان نے 50 اوور میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 338 رنز بنائے تھے۔

    • Share this:
      2017 India vs Pakistan champions trophy final: ہندوستان اور پاکستان کی کرکٹ ٹیمیں جب میدان پر آمنے سامنے ہوتی ہیں تو یہ محض ایک کھیل نہیں ہوتا۔ بلکہ ماحول جنگ جیسا ہو جاتا ہے۔ صرف 22 کھلاڑی جیت یا ہار کے لیے زور نہیں لگاتے۔ بلکہ دونوں ملکوں کے کروڑوں لوگ اپنی اپنی ٹیموں کے لیے دعائیں بھی کرتے ہیں۔ 5 سال قبل آج کے دن ہندوستان اور پاکستان کے درمیان ایسی ہی خطابی جنگ ہوئی تھی، جس میں چیمپئنز ٹرافی داؤ پر تھی جس پر پاکستان نے قبضہ کیا تھا۔ انگلینڈ کے اوول میدان پر 18 جون 2017 کو چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں پاکستان نے بھارت کو 180 رنز سے شکست دی تھی۔ ہندوستانی شائقین اس شکست کو شاید ہی کبھی بھول پائیں گے۔

      چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا تھا۔ لیکن یہ ایک فیصلہ ٹیم انڈیا پر بہت بھاری تھا، کیونکہ پہلے کھیلتے ہوئے پاکستان نے 50 اوور میں 4 وکٹوں کے نقصان پر 338 رنز بنائے تھے۔ اس میں پاکستان کے اوپنر فخر زمان کا اہم کردار تھا۔ انہیں شروعات میں جسپریت بمراہ کی نو بال پر جیون دان ملا۔ فخر زمان نے اس کا بھرپور فائدہ اٹھایا اور اپنا چوتھا ون ڈے کھیلتے ہوئے بلے باز نے ہندوستانی گیند بازوں کی جم کر دھنائی کی۔

      IPLکو ICCکی FTP میں شامل کئےجانے کی تجویز سے پاکستان کرکٹ بورڈ کیوں بوکھلایا؟ جانئے سب کچھ

      فخر زمان (Fakhar Zaman ) اور اظہر علی کی سلامی جوڑی نے پاکستان کو ایک اچھی شروعات دلائی۔ دونوں نے پہلی وکٹ کے لئے 128 رنز جوڑے۔ اظہر علی (59) کے آؤٹ ہونے کے باوجود فخر نے تیز رفتاری سے رنز بنانے کا سلسلہ جاری رکھا اور دوسرے سرے پر بابر اعظم (46) اور محمد حفیظ (ناٹ آؤٹ 57) کی مدد سے پاکستان نے اسکور کو 338 رنز تک پہنچا دیا۔ . فخر زمان نے اپنا چوتھا ون ڈے کھیلتے ہوئے 106 گیندوں پر 114 رنز بنائے۔

      James Andersonنےلگائی ٹیسٹ میچوں کی سنچری، سچن تندولکر،راہل دراوڑکوپیچھےچھوڑقائم کیاریکارڈ

      عامر نے انڈیا کے ٹاپ آرڈر کو تہس نہس کر ڈالا

      کسی بھی ٹورنامنٹ کے فائنل میں 339 رنز کے ہدف کا پیچھا کرنا آسان نہیں ہوتا ہے۔ بھارتی ٹاپ آرڈر پر پاکستان کے بائیں ہاتھ کے طوفانی باؤلر محمد عامر قہر بن کر ٹوٹے۔ انہوں نے پہلے ہی اوور میں روہت شرما کو پویلین بھیج دیا۔ کپتان ویرات کوہلی 5 رنز بنا کر عامر کا شکار بنے۔ دھون کو بھی عامر نے ہی چلتا کیا۔ یوراج سنگھ، مہندر سنگھ دھونی جیسے بڑے میچ فنشرز بھی بلے سے کچھ کمال نہیں دکھا سکے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: