உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرکٹر وسیم اکرم ہوئے جذباتی، کہا: دنیا مجھے مانتی ہے بہترین گیندباز، لیکن پاکستان میں فکسر کہتے ہیں

    عالمی کرکٹ میں جب بھی ریورس سوئنگ باؤلنگ کی بات آتی ہے تو سب سے پہلے وسیم اکرم کا نام لیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا انہیں ’سلطان آف سوئنگ‘ کے نام سے جانتی ہے۔

    عالمی کرکٹ میں جب بھی ریورس سوئنگ باؤلنگ کی بات آتی ہے تو سب سے پہلے وسیم اکرم کا نام لیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا انہیں ’سلطان آف سوئنگ‘ کے نام سے جانتی ہے۔

    عالمی کرکٹ میں جب بھی ریورس سوئنگ باؤلنگ کی بات آتی ہے تو سب سے پہلے وسیم اکرم کا نام لیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا انہیں ’سلطان آف سوئنگ‘ کے نام سے جانتی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Pakistan
    • Share this:
      نئی دہلی. سابق پاکستانی کھلاڑی وسیم اکرم کو کرکٹ کی تاریخ کے بہترین فاسٹ باؤلرز میں شمار کیا جاتا ہے۔ عالمی کرکٹ میں جب بھی ریورس سوئنگ باؤلنگ کی بات آتی ہے تو سب سے پہلے وسیم اکرم کا نام لیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا انہیں ’سلطان آف سوئنگ‘ کے نام سے جانتی ہے۔ ان کامیابیوں کے باوجود وسیم اکرم کو افسوس ہے کہ پاکستان کے کرکٹ شائقین کی موجودہ نسل انہیں میچ فکسر کے طور پر یاد کرتی ہے۔

      وائیڈ ورلڈ آف اسپورٹس پر گفتگو کے دوران وسیم اکرم نے جذباتی انداز میں کہا کہ جب آسٹریلیا، انگلینڈ، ویسٹ انڈیز اور بھارت میں ورلڈ الیون کی بات آتی ہے، جب دنیا کے بہترین باؤلر کی بات آتی ہے تو میرا نام ضرور آتا ہے۔ لیکن اس نسل کے لوگ جو پاکستان میں سوشل میڈیا پر ہیں حقائق جانے بغیر کچھ بھی کہتے رہتے ہیں۔ ان کا تقریباً ہر کمینٹ ایسا ہے، ارے وہ تو میچ فکسر ہے۔ تاہم میں اپنی زندگی کے اس حصے سے نکل آیا ہوں جہاں لوگوں کے تبصروں سے مجھے تکلیف ہوتی تھی۔ اپنا آخری انٹرنیشنل میچ 2003 میں کھیلنے والے وسیم اکرم نے 104 ٹیسٹ میں 414 وکٹیں حاصل کیں۔ انہوں نے 356 ون ڈے میچوں میں 502 وکٹیں حاصل کیں۔



      رمیز راجہ نے بابر اعظم کے 'بھائی' کو بھیجا قانونی نوٹس، جانئے کیا ہے پورا معاملہ

      ہندوستانی کھلاڑیوں کی سمندرکنارےمستی، ہاردک پانڈیاسمیت عمران ملک نےشرٹ لیس ہوکردکھائے ایبس

      سابق فاسٹ بولر تنازعات سے بھی جڑے رہے ہیں۔ وسیم اکرم کے بارے میں یہ افواہ سامنے آئی ہے کہ انہوں نے 1996 میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان میچ فکس کرنے کی کوشش کی تھی۔ اس کے علاوہ 1996 کے ورلڈ کپ کے کوارٹر فائنل میں ہندوستان کے خلاف نہ کھیلنے کے ان کے فیصلے پر بھی سوالات اٹھائے گئے ہیں۔ اس میچ میں پاکستان کو شکست ہوئی تھی۔ حال ہی میں اکرم نے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا تھا کہ ایک وقت میں وہ کوکین کے عادی تھے۔ ان تمام باتوں کے بارے میں انہوں نے اپنی سوانح عمری میں بتایا ہے جو جلد رلیز ہونے جا رہی ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: