உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رشبھ پنت پر سابق کرکٹر کا پھوٹا غصہ، کہا-وہ بوجھ بن رہا ہے، اسے باہر کا راستہ دکھاؤ

    رشبھ پنت پر سابق کرکٹر کا پھوٹا غصہ، کہا-وہ بوجھ بن رہا ہے، اسے باہر کا راستہ دکھاؤ

    رشبھ پنت پر سابق کرکٹر کا پھوٹا غصہ، کہا-وہ بوجھ بن رہا ہے، اسے باہر کا راستہ دکھاؤ

    ریتیندر سنگھ سوڈھی نے آگے کہا، یہ تو وقت ہی بتائے گا کہ انہیں کتنے مواقع ملتے ہیں اور کتنا وقت ملتا ہے۔ وقت گزر رہا ہے اور انہیں حقیقت میں زور لگانا ہے۔ ہر چیز کی ایک حد ہوتی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      جہاں تک رشبھ پنت کا سوال ہے تو لگتا ہے کہ اب شائقین اور کرکٹ ایکسپرٹس کا صبر کا باندھ ٹوٹ رہا ہے۔ ہندوستان کے نوجوان وکٹ کیپر بلے باز آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ جیسے بڑے ٹورنامنٹ میں بینچ پر بیٹھے۔ حالانکہ، انہیں زمبامبوے کے خلاف لیگ مرحلے کے آخری میچ اور انگلینڈ کے خلاف بڑے سیمی فائنل میں موقع دیا گیا، جہاں کا مظاہرہ مایوس کن رہا۔ اس سے پہلے ایشیا کپ 2022 کے دوران وہ مین وکٹ کیپر تھے، لیکن وہاں بھی ان کے پرفارمنس پر لگاتار سوال اٹھتے رہے۔

      ہندوستان کے سابق کرکٹر ریتیندر سنگھ سوڈھی نے بھی رشبھ پنت پر تنقید کی ہے۔ انہوں نے سخت الفاظ میں وکٹ کیپر-بیٹسمین پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ہر چیز کی ایک حد ہوتی ہے۔ پنت ہندوستان کے ابھرتے ستاروں میں سے ایک رہے ہیں اور مینجمنٹ انہیں ہندوستان کے لیے سبھی فارمیٹ کے وکٹ کیپر کے طور پر تیار کرنا چاہتا ہے۔ نیوزی لینڈ کے خلاف ہندوستان کی ونڈے سیریز کے پہلے ایک انٹرویو میں سوڈھی نے ہندوستانی وہائٹ بال لائن اپ میں پنت کو بدلنے کے لیے سینجو سیمسن کی حمایت کی ہے۔

      انہوں نے کہا، وہ ٹیم انڈیا کے لیے بوجھ ب نتے جارہے ہیں۔ اگر ایسا ہے تو سنجو سیمسن کو لے آو۔ آخر میں آپ کو وہ موقع ملا، کیونکہ آپ ورلڈ کپ یا آئی سی سی ٹورنامنٹ میں ہارنے اور باہر نکلنے کا خطرہ نہیں اٹھاسکتے۔ جب آپ بہت زیادہ مواقع دیتے ہیں تو مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ نئے لوگوں کو موقع دینے کا وقت آگیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      شعیب ملک نے ہندوستان کو بتایا پسندیدہ تو وقار یونس نے اڑایا مذاق، کہہ ڈالی یہ بڑی بات

      یہ بھی پڑھیں:
      نئے کپتان کے ساتھ اگلے مقابلے میں اترے گی ٹیم انڈیا، یہاں جانئے پوری تفصیلات

      ریتیندر سنگھ سوڈھی نے آگے کہا، یہ تو وقت ہی بتائے گا کہ انہیں کتنے مواقع ملتے ہیں اور کتنا وقت ملتا ہے۔ وقت گزر رہا ہے اور انہیں حقیقت میں زور لگانا ہے۔ ہر چیز کی ایک حد ہوتی ہے۔ آپ اتنے لمبے وقت تک ایک کھلاڑی پر منحصر نہیں رہ سکتے۔ اگر وہ مظاہرہ نہیں کررہا ہے، تو آپ کو اسے باہر نکلنے کا راستہ دکھانا ہوگا۔ بتادیں کہ رشبھ پنت نے ہندوستان کے لیے 27 ونڈے اور 66 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلے ہیں جب کہ پاور اسٹار سنجو سیمسن نے صڑف 26 انٹرنیشنل وہائٹ بال میچوں میں شرکت کی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: