ہوم » نیوز » اسپورٹس

فواد عالم کی ایک دہائی بعد پاکستانی ٹیسٹ ٹیم میں واپسی

پاکستان کے بلے باز فواد عالم انگلینڈ اور پاکستان کے مابین تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے دوسرے میچ میں 10 سال اور 8 ماہ کے طویل وقفے کے بعد ٹیسٹ ٹیم میں واپس آئے ہیں۔

  • Share this:
فواد عالم کی ایک دہائی بعد پاکستانی ٹیسٹ ٹیم میں واپسی
فواد عالم کی ایک دہائی بعد پاکستانی ٹیسٹ ٹیم میں واپسی

ساوتھمپٹن: پاکستان کے بلے باز فواد عالم (Fawad Alam) انگلینڈ اور پاکستان (England vs Pakistan) کے مابین تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے دوسرے میچ میں 10 سال اور 8 ماہ کے طویل وقفے کے بعد ٹیسٹ ٹیم میں واپس آئے ہیں۔ فواد عالم نے آخری بار جولائی 2009 میں ٹیسٹ ڈیبیو کرنے کے بعد نومبر 2009 میں نیوزی لینڈ کے خلاف ڈنیڈن میں ایک ٹیسٹ میچ کھیلا تھا۔ اس کے بعد پاکستان نے 88 ٹیسٹ میچ کھیلے، جو ٹیسٹ کرکٹ میں کسی کھلاڑی کے لئے دو میچوں کے درمیان ساتواں سب سے طویل فرق ہے۔ یہ کسی بھی پاکستانی کرکٹر کے لئے یونس احمد کے بعد دوسرا طویل ترین گیپ ہے۔ یونس احمد ٹیم میں واپسی سے قبل 1969–1987 کے دوران 104 ٹیسٹ مس کئے تھے۔

فواد عالم (Fawad Alam) دنیا کے 25 ویں کھلاڑی (اور پاکستان کے دوسرے) ہیں جس نے کم سے کم 10 سال انتظار کرنے کے بعد ٹیسٹ میچ میں واپسی کی۔ پاکستان کے یونس احمد کے نام دو ٹیسٹ کے درمیان طویل فاصلہ 17 سالہ ریکارڈ ہے۔ بائیں ہاتھ کے بیٹسمین عالم اپنے کیریئر کا چوتھا ٹیسٹ میچ کھیل رہے ہیں۔ اس سے قبل اپنے تین ٹیسٹ میچوں میں وہ کولمبو میں سری لنکا کے خلاف افتتاحی میچ میں ایک سنچری کے علاوہ 41.66 کی اوسط سے 250 رنز بنا چکے ہیں۔




فواد عالم 25 ویں کھلاڑی (اور پاکستان کے دوسرے) ہیں جس نے کم سے کم 10 سال انتظار کرنے کے بعد ٹیسٹ میچ میں واپسی کی۔
فواد عالم 25 ویں کھلاڑی (اور پاکستان کے دوسرے) ہیں جس نے کم سے کم 10 سال انتظار کرنے کے بعد ٹیسٹ میچ میں واپسی کی۔

فواد عالم نے لگایا رنوں کا انبار


 سال 2009 میں ٹیم سے باہر ہونے کے بعد فواد عالم (Fawad Alam) نے اپنی بلے بازی پر جم کر محنت کی۔ بائیں ہاتھ کے اس 2009 بلے باز نے اپنی پوری تکنیک بدلی اور ساتھ ہی انہوں نے  توجہ مرکوز کرنے پر بھی کام کیا۔ یہی وجہ ہے کہ فواد عالم آج فرسٹ کلاس کرکٹ کے سب سے اچھے بلے بازوں میں سے ایک ہیں۔ فواد عالم کے نام 56.78 کی اوسط سے 12,265 رن ہیں۔ فواد عالم نے 34 سنچریاں لگائی ہیں۔ دسمبر 2009 کے بعد سے اگر سب سے زیادہ فرسٹ کلاس کی اوسط کی بات کریں تو فواد عالم، وراٹ کوہلی اور اے بی ڈیویلیئرس سے بھی آگے ہیں۔ فواد عالم (Fawad Alam) نے اس دوران 111 ٹسٹ میچوں میں 56.48 کی اوسط سے 7965 رن بنائے ہیں۔ اس دوران ان کے بلے سے 26 سنچری اور 13 نصف سنچری لگائی۔ فواد عالم نے گزشتہ کافی طویل وقت سے مسلسل خود کو ثابت کیا، لیکن پاکستانی ٹیم نے اس بلے باز کو 11 سال بعد ٹسٹ ٹیم میں جگہ دی۔ فواد عالم نے جس طرح کی کارکردگی گھریلو کرکٹ میں پیش کی ہے، پاکستانی ٹیم کو ان سے انگلینڈ میں بھی ویسی ہی کارکردگی کی امید ہوگی۔ سیریز میں بنے رہنے کے لئے یہ پاکستان کے لئے بے حد ضروری ہے۔



Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 14, 2020 10:25 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading