உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    FIFA: قطر میں 2022 ورلڈ کپ کیلئے26 کھلاڑیوں کو منتخب کرنے کی اجازت، فیفا کی نئی پہل

    پہلے بین الاقوامی ٹورنامنٹس میں ہر اسکواڈ میں صرف 22 کھلاڑیوں کی اجازت تھی۔

    پہلے بین الاقوامی ٹورنامنٹس میں ہر اسکواڈ میں صرف 22 کھلاڑیوں کی اجازت تھی۔

    یو ای ایف اے (UEFA) نے گزشتہ سال یورو 2020 کے لیے اسی طرح کی تبدیلیاں اپنائیں، ان کوچز کے مطالبے کو پورا کیا گیا، جنہیں خدشہ تھا کہ وہ کورونا وائرس کی وجہ سے کھلاڑیوں کو کھو سکتے ہیں۔

    • Share this:
      فیفا (FIFA) رکن ممالک کو قطر میں ہونے والے 2022 ورلڈ کپ کے لیے 26 کھلاڑیوں کو منتخب کرنے کی اجازت دے گا، جس سے 21 نومبر سے 18 دسمبر تک ہونے والے ٹورنامنٹ کے لیے زیادہ سے زیادہ اسکواڈ کے سائز میں تین کا اضافہ ہو گا۔

      فیفا نے ایک بیان میں کہا کہ فائنل لسٹ میں شامل کیے جانے والے کھلاڑیوں کی تعداد کم از کم 23 اور زیادہ سے زیادہ 26 کر دی گئی ہے۔ ورلڈ فٹ بال کی گورننگ باڈی نے کہا کہ اسکواڈز کو بڑھانے کا فیصلہ اس سال کے مقابلے کے میں اضافی لچک برقرار رکھنے کی ضرورت پر کیا گیا ہے۔ جو کے تمام کھلاڑیوں کے لیے بہتر ہوگا۔

      فیفا نے ٹورنامنٹ سے پہلے اور اس کے دوران اسکواڈز پر کووڈ۔19 وبا کی وجہ سے ہونے والے خلل انگیز اثرات کے وسیع تر تناظر کو بھی مدنظر رکھا۔

      یو ای ایف اے (UEFA) نے گزشتہ سال یورو 2020 کے لیے اسی طرح کی تبدیلیاں اپنائیں، ان کوچز کے مطالبے کو پورا کیا گیا، جنہیں خدشہ تھا کہ وہ کورونا وائرس کی وجہ سے کھلاڑیوں کو کھو سکتے ہیں۔

      جاپان اور جنوبی کوریا میں 2002 کے ورلڈ کپ کے بعد سے قومی ٹیموں نے ورلڈ کپ اور یورپی چیمپئن شپ میں 23 کھلاڑیوں کے اسکواڈز کا اعلان کیا تھا۔ اس سے پہلے بین الاقوامی ٹورنامنٹس میں ہر اسکواڈ میں صرف 22 کھلاڑیوں کی اجازت تھی۔

      یہ بھی پڑھیں: BRICSکیا ہے؟ کب ہوا تھا اس کا قیام اور کیا ہے اس کے اصل مقاصد؟

      پچھلے ہفتے فٹ بال کی رولز باڈی IFAB نے تمام ٹاپ لیول میچوں کے لیے پانچ متبادل کے مستقل استعمال کی منظوری دی اور کہا کہ ٹیمیں اب ٹیم شیٹ پر 12 کے بجائے 15 متبادل کا نام دے سکتی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں: ’چین کرےعالمی قانون کااحترام، ہندوستان کےساتھ بات چیت کےسرحدی تنازع کوکرےحال‘ Australia

      فیفا نے جمعرات کو کہا کہ ورلڈ کپ گیمز کے دوران 26 سے زیادہ افراد (15 متبادل اور 11 ٹیم آفیشلز – ان میں سے ایک اہلکار ٹیم کا ڈاکٹر ہونا چاہیے) کو ٹیم بینچ پر بیٹھنے کی اجازت نہیں ہوگی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: