உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    انڈونیشیا کے فٹ بال میچ کے دوران کیسے بچھ گئی سینکڑوں لاشیں، کیوں ایک ہی ٹیم کے فینس کو بیچی گئی تھی ٹکٹ؟

    انڈونیشیا کے فٹ بال میچ کے دوران کیسے بچھ گئی سینکڑوں لاشیں، کیوں ایک ہی ٹیم کے فینس کو بیچی گئی تھی ٹکٹ؟ (Reuters Photo)

    انڈونیشیا کے فٹ بال میچ کے دوران کیسے بچھ گئی سینکڑوں لاشیں، کیوں ایک ہی ٹیم کے فینس کو بیچی گئی تھی ٹکٹ؟ (Reuters Photo)

    Indonesia Football Stampede: آخر میچ کے دوران ایسا کیا ہوا جس سے صورتحال پولیس کے قابو سے باہر ہوگئی اور انہیں آنسو گیس کے گولے داغنے پڑگئے؟

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • intern, Indiaindonesiaindonesia
    • Share this:
      جکارتہ : انڈونیشیا کے شہر ملنگ میں فٹ بال میچ کے دوران بھگدڑ مچنے سے ہلاکتوں کی تعداد 174 تک پہنچ گئی ہے۔ درجنوں افراد کی سنگین حالت کے پیش نظر بتایا جا رہا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد 200 سے تجاوز کر سکتی ہے۔ انڈونیشیا کی میڈیا رپورٹس کے مطابق مشرقی جاوا صوبہ کے شہر ملنگ میں ہفتہ کی رات ہونے والے پرسیبایا سوربایا اور اریما ملنگ کے درمیان میچ پہلے ہی کافی کوتاہی برتی جارہی تھی ۔ اس کے باوجود وہی صورتحال سامنے آئی جس کا افسروں کو ڈر تھا ۔ مگر آخر میچ کے دوران ایسا کیا ہوا جس سے صورتحال پولیس کے قابو سے باہر ہوگئی اور انہیں آنسو گیس کے گولے داغنے پڑگئے؟

      حکام نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ دونوں ٹیموں کے درمیان میچ پرتشدد جھڑپ کا باعث بن سکتا ہے۔ دونوں ٹیموں کے فینس کے درمیان جھڑپ کے خدشہ کے پیش نظر منتظمین نے پہلے ہی ایک ٹیم کے فینس کی آمد پر پابندی لگا دی تھی۔ اس کھچا کھچ بھرے ملنگ فٹ بال اسٹیڈیم میں 38000 ہزار افراد کے بیٹھنے کی گنجائش کے باوجود 42 ہزار سے زائد ٹکٹ فروخت ہوئے تھے ۔ تاہم جھڑپ کے اندیشہ کو دیکھتے ہوئے منتظمین نے صرف اریما ملنگ کے حامیوں کو میدان میں بیٹھنے کی اجازت دی تھی ۔ منتظمین کے مطابق انہوں نے میچ کے دوران پرسیبایا سوربایا کے فینس کو اندر جانے کی اجازت نہیں دی تھی ۔

      رات آٹھ بجے شروع ہونے والے اس میچ میں پرسیبایا سوربایا نے اریما ملنگ کے حامیوں سے بھرے اسٹیڈیم میں 3-2 سے انتہائی سنسنی خیز جیت حاصل کی۔ اریما ملنگ کو اپنے ہوم گراؤنڈ پر ہارتے دیکھ کر ہارنے والی ٹیم کے موجود فینس بھڑک گئے۔ انہوں نے میچ کے بعد کھلاڑیوں اور فٹ بال آفیشلز پر بوتلیں پھینکنی شروع کر دیں۔

       

      یہ بھی پڑھئے: مہندر سنگھ دھونی اور وراٹ کوہلی سے نہیں ہوا جو کام ، روہت شرما نے وہ کردیا دکھایا


      جس کے بعد جلد ہی اسٹیڈیم کے باہر ہنگامے شروع ہوگئے ۔ فینس نے پولیس کی پانچ گاڑیوں کو پلٹنے کے بعد آگ لگا دی، جس سے صورتحال سیکورٹی اہلکاروں کے ہاتھوں سے نکل گئی ۔ ساتھ ہی سینکڑوں افراد نے اپنے غصے کا اظہار کرنے کے لئے فٹبال گراؤنڈ پر ہی ہنگامہ شروع کر دیا۔ ایسے ہی ایک ویڈیو میں فینس کو آخری سیٹی کے بعد میدان پر بھاگتے ہوئے دکھایا گیا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: انگلینڈ سے ہار کے بعد پاکستانی بلے باز نے شیئر کیا ویڈیو، کہا: ہماری صحت بگڑ سکتی ہے


      فینس کی طرف سے شروع ہونے والے ہنگامے کو دیکھتے ہوئے فسادات کنٹرول پولیس نے فیفا کے قوانین کے خلاف جا کر اسٹیڈیم میں ہی آنسو گیس کے گولے داغنے شروع کر دئے۔ فٹبال شائقین کی جانب سے سوشل میڈیا پر کئی ویڈیوز شیئر کئے جا رہے ہیں، جن میں پولیس لوگوں پر آنسو گیس کے گولے داغتی ہوئی نظر آرہی ہے ۔ اس دوران آنسو گیس کے گولوں سے بچنے کیلئے فینس ایک ہی گیٹ کی طرف بھاگنے لگے، جس سے بھگدڑ مچ گئی۔

      اچانک گیٹ پر بڑھی ہوئی بھیڑ میں 34 سے زائد افراد دب گئے جن کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔ اس کے ساتھ ہی کئی لوگ چوٹ لگنے اور دم گھٹنے کی وجہ سے جان کی بازی ہار گئے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: