உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    یوم پیدائش پرخاص: صدرکےکہنے پرریٹائرمنٹ سے واپس آئے تھےعمران خان، پھرپاکستان کو دلایا ورلڈ کپ

    عمران خان کی قیادت میں پاکستان نے 1992 میں عالمی کپ کا خطاب جیتا تھا۔

    عمران خان کی قیادت میں پاکستان نے 1992 میں عالمی کپ کا خطاب جیتا تھا۔

    پاکستان کے سابق وزیراعظم اورسابق کپتان عمران خان کا آج یوم پیدائش ہے۔ 5 اکتوبر 1952 کولاہورمیں پیدا ہوئے عمران خان آج 67 سال کے ہوگئے ہیں۔

    • Share this:
      پاکستان کے وزیراعظم اورسابق کپتان عمران خان کا آج یوم پیدائش ہے۔ 5 اکتوبر 1952 کولاہورمیں پیدا ہوئےعمران خان آج 67 سال کے ہوگئے ہیں۔ ویسے توابھی عمران خان پاکستان کے وزیراعظم ہیں، لیکن دنیا انہیں ان کےکھیل کےلئے جانتی ہے۔ عمران خان نے اپنےکیریئرمیں 88 ٹسٹ میچ کھیلےاور37.69 کی اوسط سے 3807 رن بنائے، ساتھ ہی انہوں نے 362 وکٹ بھی لئے۔ عمران خان نے175 ونڈے میں 33.41 کی اوسط سے 3709 رن بنائے اوراس فارمیٹ میں ان کے نام 182 وکٹ درج ہوئے۔ عمران خان نے اپنے کیریئرمیں کئی بڑے کارناموں کوانجام دیا، لیکن ان کی زندگی میں ایک ایسا واقعہ پیش آیا جس نےعمران خان کی ہی نہیں پورے پاکستانی کرکٹ کوبدل کررکھ دیا۔

      عمران خان نے 1987 میں لے لیا تھا ریٹائرمنٹ

      سال 1987 عالمی کپ ختم ہونےکے بعد عمران خان نے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا تھا۔ اس کے بعد پاکستان کے تانا شاہ جنرل ضیاء الحق نےعمران خان کوریٹائرمنٹ واپس لےکرٹیم کا کپتان بننےکےلئےکہا، جسے انہوں نے تسلیم کرلیا۔ عمران خان کےاس قدم نے پاکستانی کرکٹ کوبدل کررکھ دیا۔ سال 1992 میں عمران خان کی کپتانی میں پاکستان نے عالمی کپ کا خطاب جیتا۔

      سال 1992 عالمی کپ میں عمران خان نےگیند اوربلےسے زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ پاکستان کی بلے بازی کمزورہونےکےسبب انہوں نے ٹاپ آرڈربلے بازی کی اور8 میچوں میں 185 رن بنائے۔ اس کےعلاوہ انہوں نے7 وکٹ بھی حاصل کئےاوراپنی ٹیم کو عالمی کپ میں جیت دلانے میں اہم کردارادا کیا۔ عالمی کپ فائنل جیتنےکے بعد عمران خان نے ریٹائرمنٹ لےلیا۔

      عمران خان پاکستان کے موجودہ وزیراعظم ہیں۔
      عمران خان پاکستان کے موجودہ وزیراعظم ہیں۔


      عالمی کپ جیتنے کے بعد متنازعہ خطاب

      عمران خان نے عالمی کپ جیتنے کے بعد جوخطاب کیا وہ متنازعہ رہا۔ دراصل عمران خان نے عالمی کپ کی جیت کے بعد اپنی ٹیم کے کھلاڑیوں کا نہ شکریہ ادا کیا اورنہ ہی ان کا کہیں نام لیا۔

      ڈینس للی تھی عمران خان کے آئیڈیل

      عمران خان کی تیزگیند بازی کے آئیڈیل ڈینس للی تھے۔ ڈینس للی کی گیند بازی دیکھ کر انہوں نےدراصل تیزگیند بازبننےکا فیصلہ کیا۔ عمران خان نے محض 16 سال کی عمرمیں اپنا فرسٹ کلاس کرکٹ ڈیبیوکرلیا تھا۔ اس کے بعد انہیں جلد ہی پاکستان کے لئے کھیلنے کا موقع ملا۔ حالانکہ ان کا ڈیبیو اچھا نہیں رہا اورانہیں اپنا دوسرا ٹسٹ میچ کھیلنے کے لئے تین سالوں کا انتظارکرنا پڑا۔ اس کے بعد وہ آئندہ دوسالوں میں صرف تین ہی ٹسٹ میچ کھیل پائے۔ حالانکہ 1976 کے بعد انہیں بھرپورمواقع ملےاورپھرانہوں نے کبھی پیچھے مڑکرنہیں دیکھا۔
      First published: