உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Asia Cup 2022: پاکستان کو نہیں محسوس ہوگی شاہین آفریدی کی کمی، 3 گیند باز جگہ لینے کے لئے تیار

    ایشیا کپ 2022: پاکستان کو نہیں محسوس ہوگی شاہین آفریدی کی کمی

    ایشیا کپ 2022: پاکستان کو نہیں محسوس ہوگی شاہین آفریدی کی کمی

    شاہین شاہ آفریدی کی کمی پاکستان کو بہت زیادہ نہیں محسوس ہوگی۔ کیونکہ شاہین شاہ آفریدی کی جگہ لینے کے لئے تین گیند باز تیار ہیں، جو موقع ملنے پر مخالف ٹیموں کی پریشانی بڑھانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اب دیکھنا ہوگا کہ پاکستان کے سلیکٹرس کسے موقع دیتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: ایشیا کپ سے پہلے ہی پاکستان کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔ ٹیم کے تیز گیند باز شاہین شاہ آفریدی گھٹنے کی چوٹ کے سبب ٹورنا منٹ سے باہر ہوگئے ہیں۔ شاہین شاہ آفریدی نے گزشتہ سال ٹی20 عالمی کپ میں ہندوستان کے خلاف پاکستان کو ملی جیت میں اہم تعاون دیا تھا۔ انہوں نے وراٹ کوہلی، روہت شرما اور کے ایل راہل کے اہم وکٹ حاصل کئے تھے، لیکن ایشیا کپ میں وہ نہیں کھیلیں گے۔ حالانکہ، پاکستان کو اس کی بہت زیادہ کمی نہیں محسوس ہوگی۔ کیونکہ شاہین شاہ آفریدی کی جگہ لینے کے لئے تین گیند باز تیار ہیں، جو موقع ملنے پر مخالف ٹیموں کی پریشانی بڑھانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اب دیکھنا ہوگا کہ پاکستان کے سلیکٹرس کسے موقع دیتے ہیں۔ آپ کو ایک ایک کرکے ان تین گیند بازوں کے بارے میں بتاتے ہیں۔

      جب سلیکٹرس نے پہلی بار ایشیا کپ کے لئے پاکستانی ٹیم منتخب کی تو اس میں دائیں ہاتھ کے تیز گیند باز حسن علی کا نام نہیں تھا۔ اب جبکہ شاہین شاہ آفریدی زخمی ہوکر باہر ہوگئے ہیں تو ان کے ریپلیسمنٹ کے طور پر حسن علی کو ٹیم میں شامل کیا جاسکتا ہے۔ ویسے گزشتہ سال ٹی20 عالمی کپ کے بعد سے ہی حسن علی کا فارم اچھا نہیں رہا ہے، لیکن ان کے پاس بڑے مقابلوں کا تجربہ ہے۔ ایسے میں ہندوستان کے خلاف ہائی پریشر مقابلے کو دیکھتے ہوئے اس گیند باز کو سلیکٹرس ایک بار پھر موقع دے سکتے ہیں۔ دائیں ہاتھ کے اس تیز گیند باز نے 60 ونڈے اور 49 ٹی20 میچ کھیلے ہیں، جس میں انہوں نے 91 اور 60 وکٹ حاصل کئے ہیں۔

      شاہین آفریدی کے رپلیسمنٹ ہو سکتے ہیں میر حمزہ

      اگر سلیکٹرس شاہین آفریدی کے مقام پر بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز کو ہی موقع دینے کا پلان بناتے ہیں، تو اس میں میر حمزہ اچھا متبادل ہوسکتے ہیں۔ میر حمزہ نے پاکستان کے لئے صرف ایک ہی ٹسٹ کھیلا ہے، لیکن وہ حال ہی میں لاہور میں نیدر لینڈ کے دورے پر جانے والی پاکستان کی ونڈے ٹیم کے خلاف ہوئے پریکٹس میچ میں کھیلتے ہوئے نظر آئے تھے۔ ایسے میں سلیکٹرس اگر بائیں ہاتھ کے گیند باز کو ہی شاہین آفریدی کے رپلیسمنٹ کے طور پر منتخب کرنے کا فیصلہ کرتے ہیں، تو میر حمزہ کا نام سب کو حیران کرسکتا ہے۔ وہ 42 ٹی20 میں 41 وکٹ حاصل کرچکے ہیں۔ انہوں نے ٹی20 میں 3 بار 4 وکٹ لینے کا کارنامہ انجام دیا ہے۔
       یہ بھی پڑھیں۔


       یہ بھی پڑھیں۔


      زماں خان بھی ہوسکتے ہیں آفریدی کے متبادل

      20 سال کے زماں خان نے اس سال پاکستان سپر لیگ میں اپنی گیند بازی سے سب کو متاثر کیا تھا۔ انہوں نے لاہور قلندرس کی طرف سے کھیلتے ہوئے 18 وکٹ لئے تھے۔ ابھی سے ہی زماں خان کا موازنہ سری لنکا کے اسٹار گیند باز لست ملنگا سے ہونے لگا ہے۔ ایسے میں اگر پاکستان اس تیز گیند باز کو ایشیا کپ میں موقع دے سکتا ہے اور مخالف ٹیموں کے لئے وہ سرپرائز فیکٹر ثابت ہوسکتے ہیں۔ زماں خان نے اب تک 18 ٹی20 میں 24 وکٹ حاصل کئے ہیں۔

      ویسے پاکستان کے ٹیم منیجمنٹ کے لئے سب سے آسان فیصلہ یہ ہوسکتا ہے کہ وہ شاہین آفریدی کے رپلیسمنٹ کے طور پر کسی گیند باز کو ٹیم سے نہیں جوڑے اور جن گیند بازوں کو ایشیا کپ کی ٹیم میں منتخب کیا ہے، انہیں پر ہی بھروسہ جتائیں۔ شاہین شاہ آفریدی کی غیر موجودگی میں بھی پاکستان کے پاس حارث روف، نسیم شاہ، محمد وسیم (جونیئر) اور شہنوازدہانی جیسے تیز گیند باز ہیں، ایسے میں ان گیند بازوں کی موجودگی میں شاہین آفریدی کے رپلیسمنٹ کے طور پر آنے والے گیند باز کے لئے بھی پلیئنگ الیون میں جگہ بنانا آسان نہیں ہوگا۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: