உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان کے عظیم گیند باز نے سچن تندولکر کے ساتھ کیا ڈیبیو، پہلی ہی سیریز میں ماسٹر بلاسٹرکوکر دیا تھا لہولہان

    وقار یونس کا یوم پیدائش: پاکستان کے سابق گیند باز وقار یونس آج اپنا 50 واں یوم پیدائش منا رہے ہیں۔ (تصویر کریڈٹ: اے پی)

    وقار یونس کا یوم پیدائش: پاکستان کے سابق گیند باز وقار یونس آج اپنا 50 واں یوم پیدائش منا رہے ہیں۔ (تصویر کریڈٹ: اے پی)

    HBD Waqar Younis: پاکستان کے سابق عظیم گیند باز وقار یونس (Waqar Younis) کے لئے آج کا دن خاص ہے۔ وہ 50 سال کے ہوگئے ہیں۔ پاکستان کے سابق کپتان اور تیز گیند باز وقار یونس نے سچن تندولکر (Sachin Tendulkar) کے ساتھ 1989 میں کراچی میں ٹسٹ ڈیبیو کیا تھا۔ یہ سچن تندولکر کا پہلا انٹرنیشنل میچ تھا۔ وقار یونس نے اس میچ میں سچن تندولکر کو آوٹ بھی کیا تھا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: وقار یونس (Waqar Younis) کے لئے آج کا دن خاص ہے۔ وہ 50 سال کے ہوگئے ہیں۔ پاکستان کے سابق کپتان اور تیز گیند باز وقار یونس نے سچن تندولکر (Sachin Tendulkar) کے ساتھ 1989 میں کراچی میں ٹسٹ ڈیبیو کیا تھا۔ یہ سچن تندولکر کا پہلا انٹرنیشنل میچ تھا۔ وقار یونس نے اس میچ میں سچن تندولکر کو آوٹ بھی کیا تھا۔ حالانکہ یہ میچ (India vs Pakistan) ڈرا رہا تھا۔ سیالکوٹ میں کھیلے گئے چوتھے اور آخری ٹسٹ میں وقار یونس کی باونسر پر سچن تندولکر لہولہان بھی ہوگئے تھے۔ بعد میں ماسٹر بلاسٹر سچن تندولکر نے اس حادثہ کو یاد کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس وقت مجھے کچھ دکھائی نہیں دے رہا تھا۔

      22 سال کی عمر میں کپتان بنے وقار یونس

      وقار یونس پاکستان کے سب سے کامیاب گیند بازوں میں سے ایک ہیں۔ وہ 22 سال 15 دن کی عمر میں پاکستان ٹسٹ ٹیم کے کپتان بن گئے تھے۔ بطور کپتان ایک ٹسٹ میں سب سے زیادہ 13 وکٹ کا ریکارڈ آج بھی وقار یونس کے نام ہے۔ وہ 87 ٹسٹ میں 373 اور 262 ونڈے میں 416 وکٹ لینے میں کامیاب رہے۔ وہ ونڈے میں 400 وکٹ لینے والے سب سے نوجوان گیند باز بنے تھے۔ 36 رن دے کر 7 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی رہی۔

      وقار یونس پاکستان کے سب سے کامیاب گیند بازوں میں سے ایک ہیں۔
      وقار یونس پاکستان کے سب سے کامیاب گیند بازوں میں سے ایک ہیں۔


      وقار یونس کے نام فرسٹ کلاس کرکٹ میں 950 سے زیادہ وکٹ

      وقار یونس اپنی تیز گیند بازی کے علاوہ ریورس سوئنگ کے لئے بھی جانے جاتے تھے۔ ان کی اور وسیم اکرم کی جوڑی دنیا کی سب سے خطرناک جوڑیوں میں سے ایک تھی۔ انہوں نے فرسٹ کلاس کرکٹ میں 956 وکٹ حاصل کئے ہیں۔ 63 بار 5 اور 14 بار 10 وکٹ حاصل کرنے کا کارنامہ انجام دیا۔ 17 رن دے کر 8 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی رہی۔ انہوں نے یہ کارنامہ کاونٹی کرکٹ میں انجام دیا تھا۔ اتنا ہی نہیں انہوں نے بطور بلے باز 6 نصف سنچری بھی لگائی تھی۔ اس میں 64 رنوں کی سب سے بڑی اننگ بھی شامل ہے۔ وہ لسٹ اے کرکٹ کے 411 میچوں میں 674 وکٹ لینے میں کامیاب رہے۔ 17 بار 5 وکٹ لینے کا کارنامہ انجام دیا۔

      وقار یونس پاکستانی ٹیم کے کوچ رہ چکے ہیں۔ انہیں 07-2006 میں گیند بازی کوچ بنایا گیا تھا۔
      وقار یونس پاکستانی ٹیم کے کوچ رہ چکے ہیں۔ انہیں 07-2006 میں گیند بازی کوچ بنایا گیا تھا۔


      وقار یونس پاکستان کے علاوہ آئی پی ایل میں بھی دے چکے ہیں کوچنگ

      وقار یونس پاکستانی ٹیم کے کوچ رہ چکے ہیں۔ انہیں 07-2006 میں گیند بازی کوچ بنایا گیا تھا۔ مارچ 2010 میں وہ ٹیم کے چیف کوچ بنے، لیکن اگست 2011 میں انہوں نے ذاتی وجوہات سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ وہ سال 2013 میں آئی پی ایل میں سن رائزرس حیدرآباد کے گیند بازی کوچ رہے تھے۔ ستمبر 2019 میں وقار یونس کو پھر سے پاکستانی ٹیم کا گیند بازی کوچ بنایا گیا تھا، لیکن ٹی-20 عالمی کپ سے پہلے ٹیم سلیکشن کو لے کر ہوئے تنازعہ کے بعد انہوں نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      India vs Pakistan: روہت شرما بطور کپتان بابر اعظم سے کافی آگے، ٹیم انڈیا آسٹریلیا میں پاکستان پر رہی ہے حاوی


      کیمن ولیمسن ہندوستان کے خلاف ٹی-20 سیریز میں نہیں کھیلیں گے، جانئے کون کرے گا کپتانی 


      وقار یونس کے ریکارڈ آج بھی قائم

      وقار یونس کے کئی ریکارڈ آج بھی قائم ہیں۔ وہ مسلسل تین ونڈے میں پانچ وکٹ لینے والے واحد گیند باز ہیں۔ یہ تیز گیند باز آئی سی سی کے ہال آف فیم میں بھی شامل ہے۔ گزشتہ دنوں ٹی-20 عالمی کپ کے دوران وہ ایک بیان کے سبب سرخیوں میں رہے تھے۔ انہوں نے کہا تھا کہ محمد رضوان نے ہندووں کے درمیان میں نماز پڑھی، یہ میرے لئے خاص لمحہ تھا۔ حالانکہ تنازعہ کے بعد انہوں نے معافی مانگ لی تھی۔ یہ معاملہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان میچ کے دوران ہوا تھا۔ یہ میچ پاکستان نے جیت لیا تھا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: