உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    قصہ کرکٹ: جب 1008 رن بناکر بھی 354رن سے ہار گئی ٹیم، میچ میں لگے 19 سنچری

    Highest score in first-class Cricket: آج ہم ایسے ہی ایک شاندار میچ کی کہانی لائے ہیں، جس میں 2300 سے زائد رنز بنائے گئے۔ اس میچ میں 19 سنچریا(19 centuries in One match) شامل تھیں۔ دونوں اننگز میں تین بلے بازوں نے سنچریاں اسکور کیں۔

    Highest score in first-class Cricket: آج ہم ایسے ہی ایک شاندار میچ کی کہانی لائے ہیں، جس میں 2300 سے زائد رنز بنائے گئے۔ اس میچ میں 19 سنچریا(19 centuries in One match) شامل تھیں۔ دونوں اننگز میں تین بلے بازوں نے سنچریاں اسکور کیں۔

    Highest score in first-class Cricket: آج ہم ایسے ہی ایک شاندار میچ کی کہانی لائے ہیں، جس میں 2300 سے زائد رنز بنائے گئے۔ اس میچ میں 19 سنچریا(19 centuries in One match) شامل تھیں۔ دونوں اننگز میں تین بلے بازوں نے سنچریاں اسکور کیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: کرکٹ کی ڈکشنری میں ناممکن کا کوئی لفظ نہیں ہے۔ چاہے آپ لائیو میچ دیکھ رہے ہوں یا تاریخ کے اوراق پلٹ رہے ہوں۔ اس کھیل میں اکثر کچھ ایسا ہو جاتا ہے، جو تصور سے بھی باہر ہوتا ہے۔ کبھی کوئی کھلاڑی ایک اوور میں 36 رنز بناتا ہے تو کبھی پوری ٹیم 30 رنز بھی نہیں بنا پاتی۔ اور کبھی کبھی کوئی ٹیم ہزار رنز بنانے کے بعد بھی 300 رنز کے بڑے مارجن سے ہار جاتی ہے۔ آج ہم ایسے ہی ایک شاندار میچ کی کہانی لائے ہیں، جس میں 2300 سے زائد رنز بنائے گئے۔ اس میچ میں 19 سنچریا(19 centuries in One match) شامل تھیں۔ دونوں اننگز میں تین بلے بازوں نے سنچریاں اسکور کیں۔

      1949 میں اس دن یعنی 11 مارچ کو ممبئی اور مہاراشٹر(Bombay vs Maharashtra) کے درمیان ایک میچ شروع ہوا۔ پونے میں کھیلا گیا یہ میچ رنجی ٹرافی کا سیمی فائنل تھا۔ یہ کہنے کی ضرورت نہیں کہ دونوں ٹیموں نے فائنل تک پہنچنے کے لیے سخت محنت کی۔ دونوں ٹیموں کی یہ کوشش آج بھی اسکور کارڈ میں اچھی طرح درج ہے۔ سات روز تک جاری رہنے والے اس میچ میں 2 ہزار 376 رنز بنائے گئے۔

      اس تاریخی میچ میں ممبئی نے پہلے بلے بازی کی جسے آج ہم ممبئی کی ٹیم کے نام سے جانتے ہیں۔ مادھو منتری (Madhav Mantri) نے ممبئی کی جانب سے ڈبل سنچری بنائی۔ ادے مرچنٹ اور دتو پھاڑکر نے بھی سنچریاں بنائیں۔ جب میچ کی ایک ہی اننگز میں 3-3 بلے بازوں نے تین ہندسوں میں رنز بنائے تو ٹیم کا اسکور بہت بڑا ہونا تھا۔ اس اننگز میں ممبئی نے 651 رنز بنائے۔

      ساکشی دھونی نے بتایا، شادی کے بعد کیسے بدل جاتی ہے زندگی؟ کرکٹر سے شادی کرنے کے چیلنج پر بھی کی بات

      مہاراشٹر کی باری آئی تو اس نے بھی بھرپور بلے بازی کی۔ اس کی طرف سے منوہر داتار اور مدھوسودن ریگے نے سنچریاں بنائیں لیکن اس کے باوجود مہاراشٹر کی ٹیم 400 سے کچھ زیادہ ہی اسکور کر سکی۔ انہوں نے 407 رنز بنائے اور اس طرح ممبئی کو پہلی اننگز میں 244 رنز کی برتری حاصل ہوئی۔

      مہاراشٹر نے اس میچ میں 1008 رنز بنائے اور اس کے باوجود اسے 354 رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ لیکن ان کے جذبے کی وجہ سے یہ میچ آج تاریخ کے سب سے سنسنی خیز میچوں میں شمار ہوتا ہے۔ اس میچ میں بلے بازوں نے مجموعی طور پر 9 سنچریاں اسکور کیں اور گیندبازوں کے نام 10 ان چاہی سنچریاں درج ہیں۔ 7 دن تک جاری رہنے والے اس میچ میں 707.2 اوورز میں کل 2376 رنز (2376 runs in Ranji Match) بنے۔ یہ اب بھی فرسٹ کلاس کرکٹ میں ایک میچ میں سب سے زیادہ رنز بنانے کا ریکارڈ ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: