உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آئی سی سی نے بنائی کمیٹی، پی سی بی چیئرمین رمیز راجہ کی رپورٹ سے ہوگا افغانستان کرکٹ کا فیصلہ

    پاکستان کے رپورٹ کی بنیاد پر افغانستان کرکٹ سے متعلق آئی سی سی کرسکتا ہے فیصلہ

    پاکستان کے رپورٹ کی بنیاد پر افغانستان کرکٹ سے متعلق آئی سی سی کرسکتا ہے فیصلہ

    افغانستان کرکٹ بورڈ ان دنوں تبدیلی کے دور سے گزر رہا ہے۔ ملک میں طالبان نے خاتون کرکٹ کی مخالفت کی، جس کے سبب اس کی مرد ٹیم کے ساتھ آسٹریلیا نے (Cricket Australia) واحد ٹسٹ کو ملتوی کردیا گیا۔

    • Share this:
      دبئی: آئی سی سی (ICC) افغانستان کرکٹ بورڈ (ACB) کو لے کر آئندہ ہفتے کوئی بڑا فیصلہ لے سکتا ہے۔ طالبان کا اقتدار آنے کے بعد وہاں خواتین کے کھیل پر پوری طرح سے روک لگا دی گئی ہے۔ آئی سی سی نے افغانستان کے جائزہ کے لئے ایک ورکنگ گروپ بنایا ہے، جس میں پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین رمیز راجہ (Ramiz Raja) بھی شامل ہیں۔ اس گروپ کی صدارت عمران خواجہ کریں گے۔ اس میں راس میکولم، لاسن نائیڈو اور رمیز راجہ بھی شامل ہیں۔ یہ گروپ آنے والے مہینوں میں آئی سی سی کو رپورٹ دے گا۔ خاتون کرکٹ کی بحالی نہیں ہونے پر افغانستان کی مکمل رکنیت پر خطرہ ہے۔

      طالبان کے قبضے کے بعد صورتحال میں تبدیلی

      افغانستان پر طالبان کے قبضے کے بعد افغانستان کرکٹ سے متعلق غیر یقینی کی صورتحال بن گئی ہے۔ طالبان نے خاتون کرکٹ کی مخالفت کی، جس کے سبب اس کی مرد ٹیم کے ساتھ آسٹریلیا نے (Cricket Australia) واحد ٹسٹ کو ملتوی کردیا گیا۔ آئی سی سی کے صدر گریگ بارکلے نے کہا، ’آئی سی سی بورڈ مرد اور خاتون کرکٹ کی ترقی کے لئے افغانستان کرکٹ کی حمایت جاری رکھنے کے لئے پابند عہد ہے۔ ہم صورتحال پر باریکی سے نظر بنائے ہوئے ہیں اور اسی کے مطابق کوئی فیصلہ لیں گے‘۔

      ٹی-20 عالمی کپ کے لئے راشد خان (Rashid Khan) کو کپتان بنایا گیا تھا، لیکن انہوں نے ٹیم سلیکشن میں شامل نہیں ہونے کے سبب عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔

      آئندہ ہفتے میٹنگ میں اس موضوع پر ہوگی بات

      آئی سی سی کے عبوری کارگزار افسر جیوف اڈارلس نے کہا کہ آئندہ ہفتے میٹنگ میں افغانستان کو لے کر ہمیں رپورٹ ملے گی۔ اس سے پتہ چلے گا کہ چیزیں کیسے آگے بڑھ رہی ہیں۔ وہ ملک کے اندر کئی تبدیلیوں سے گزر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کرکٹ مسلسل کھیلا جا رہا ہے اور ہم نے ان کی حمایت بھی کی ہے۔ ان کے کھلاڑیوں نے اچھی کارکردگی بھی پیش کی ہے۔ خاتون کھلاڑیوں کو لے کر افغانستان کے رویے پر ایلارڈس نے کہا کہ ہمارا ہدف افغانستان میں مرد اور خواتین دونوں کو کرکٹ کھیلتے ہوئے دیکھنا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      پاکستان میں چمپئنز ٹرافی کے لئے جائے گی ہندوستانی ٹیم؟ وزیرکھیل انوراگ ٹھاکر نے دیا بڑا جواب


      انہوں نے کہا کہ خواتین کو کھیل سے جوڑںے کے لئے سب سے اچھا طریقہ یہ ہے کہ ہم کرکٹ بورڈ سے جڑے رہیں اور بورڈ کے ذریعہ سے انہیں متاثر کرنے کی کوشش کریں۔ واضح رہے کہ طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد بورڈ میں مسلسل تبدیلیاں بھی ہو رہی ہیں۔ ٹی-20 عالمی کپ کے لئے راشد خان (Rashid Khan) کو کپتان بنایا گیا تھا، لیکن انہوں نے ٹیم سلیکشن میں شامل نہیں ہونے کے سبب عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔ اس کے بعد محمد نبی کو ذمہ داری دی گئی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: