உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹی20 عالمی کپ 2022: سابق پاکستانی کپتان نے دکھایا آئینہ، اپنے ہی ان 2 کھلاڑیوں سے متعلق کہی یہ بڑی بات

    سابق پاکستانی کپتان نے اپنے ہی کھلاڑیوں کی سرزنش کی ہے۔

    سابق پاکستانی کپتان نے اپنے ہی کھلاڑیوں کی سرزنش کی ہے۔

    پاکستان کے سابق کپتان محمد حفیظ نے مڈل آرڈر پر سوال اٹھائے ہیں۔ انہوں نے سب سے زیادہ جن دو کھلاڑیوں پر نشانہ سادھا ہے کہ وہ لورآرڈر کے کھلاڑی خوش دل شاہ اور آصف علی ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ یہ دونوں کھلاڑی اننگ سنوارنے میں ناکام رہے ہیں۔ 

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: آئی سی سی مرد ٹی20 عالمی کپ کے لئے پاکستانی ٹیم کا بھی اعلان ہوچکا ہے۔ آئندہ ٹورنا منٹ کے لئے گرین ٹیم میں شاہین شاہ آفریدی سمیت کئی کھلاڑیوں کی واپسی ہوئی ہے۔ وہیں کئی کھلاڑیوں کو باہر کا راستہ دکھایا گیا ہے۔ ٹی20 عالمی کپ کے لئے پاکستانی ٹیم کا اعلان ہوچکا ہے۔ ٹیم کے اعلان کے بعد سے ہی پڑوسی ملک کے سابق کھلاڑی 15 رکنی ٹیم پر اپنا اظہار خیال پیش کر رہے ہیں۔ اسی ضمن میں پاکستان کے سابق کپتان محمد حفیظ (Mohammad Hafeez) نے بھی آئندہ ٹورنا منٹ کے لئے منتخب کئے گئے کھلاڑیوں پر اپنا نظریہ پیش کیا ہے۔

      پاکستان کے سابق کپتان محمد حفیظ نے مڈل آرڈر پر سوال اٹھائے ہیں۔ انہوں نے سب سے زیادہ جن دو کھلاڑیوں پر تنقید کی ہے وہ لور آرڈر کے کھلاڑی خوش دل شاہ اور آصف علی ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ یہ دونوں کھلاڑی اننگ سنوارنے میں ناکام رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ دونوں ہی کھلاڑی اننگ سنوارنے میں یقین نہیں رکھتے اور یہ دونوں ہی ون ڈائمنشل (ایک ہی خوبی) والے کھلاڑی ہیں۔

      پاکستان کے سابق کپتان محمد حفیظ نے مڈل آرڈر پر سوال اٹھائے ہیں۔
      پاکستان کے سابق کپتان محمد حفیظ نے مڈل آرڈر پر سوال اٹھائے ہیں۔


      محمد حفیظ نے خوش دل شاہ کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا، ان کا اسٹرائیک ریٹ 110 کا ہے اور ہم انہیں انٹرنیشنل ہٹر کے طور پر دیکھتے ہیں، جو صحیح نہیں ہے۔ ہمیں ایسے حالات میں گہرائی تک جانا چاہئے۔ اس کے علاوہ انہوں نے مڈل آرڈر پر دباو نہ جھیل پانے کی قابلیت پر بھی سوال اٹھائے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ’بابر اعظم صرف کلاسک دکھنا چاہتے ہیں‘: شعیب اختر نے پاکستانی کپتان کی شبیہ پر اٹھائے سوال

      یہ بھی پڑھیں۔

      ’خواتین فٹبالروں نے شارٹس پہنے، لیکن لیگنگ نہیں‘ گھٹیا سوال پوچھنے پر سوالوں کے زد میں پاکستانی صحافی

      محمد حفیظ کا ماننا ہے کہ ہمیں خود سے سوال کرنے کی ضرورت ہے کہ کیا منتخب کئے گئے کھلاڑیوں میں دباو برداشت کرنے کی صلاحیت ہے؟ کیا وہ اننگ سوار سکتے ہیں؟ ہم نے ان کھلاڑیوں کو اس لئے منتخب کیا ہے کیونکہ ہمارے ٹاپ آرڈر کو سیٹ ہونے میں وقت لگتا ہے، جو کہ بے حد ہی حیران کن ہے۔

      محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ محمد رضوان اور بابر اعظم نمبر ایک سلامی بلے باز ہیں، لیکن انہیں رن بنانے کے لئے اپنی بھوک دکھانی ہوگی۔ میں نے پہلے بھی ان بلے بازوں کی سراہنا کی ہے، لیکن اگر ان دونوں بلے بازوں کو کسی پہلو پر کام کرنے کی ضرورت ہے تو وہ ہے انہیں تیز رفتار سے رن بنانے کی۔ انہوں نے ترک دیتے ہوئے کہا کہ اگر آپ پہلا پاور پلے بھی کھیل جاتے ہیں اور ابتدائی 10 اووروں میں 60-65 رن بناتے ہیں تو یہ کیسے چلے گا۔ اگر آپ ابتدائی اووروں میں ایسی بلے بازی کرتے ہیں تو مڈل آرڈر کے بلے بازوں کو درمیان کے اووروں میں 12 سے 14 رن فی اوور بنانے ہوں گے، جو معقول نہیں لگتا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: