உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IND vs ENG: رشبھ پنت-ہاردک پانڈیا کی بدولت ہندوستان نے انگلینڈ میں 8 سال بعد جیتی ونڈے سیریز

    India vs England 3rd ODI Match Report: ہندوستانی ٹیم نے تین ونڈے میچوں کی سیریزکے آخری مقابلے میں انگلینڈ کو پانچ وکٹ سے شکست دی۔

    India vs England 3rd ODI Match Report: ہندوستانی ٹیم نے تین ونڈے میچوں کی سیریزکے آخری مقابلے میں انگلینڈ کو پانچ وکٹ سے شکست دی۔

    India vs England 3rd ODI Match Report: ہندوستانی ٹیم نے تین ونڈے میچوں کی سیریزکے آخری مقابلے میں انگلینڈ کو پانچ وکٹ سے شکست دی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ہندوستانی ٹیم نے تین ونڈے میچوں کی سیریزکے آخری مقابلے میں انگلینڈ کو پانچ وکٹ سے شکست دی۔ مینچسٹرکے اولڈ ٹریفرڈ میں کھیلے گئے مقابلے میں انگلینڈ کی ٹیم نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے ٹیم انڈیا کے سامنے 260 رنوں کا ہدف رکھا۔ رشبھ پنت کی شاندار سنچری اور ہاردک پانڈیا کی طوفانی اننگوں کی بدولت ٹیم انڈیا نے اس ہدف کو 5 وکٹ گنواکر  حاصل کرلیا۔ اس کے ساتھ ہی ہندوستانی ٹیم نے روہت شرما کی قیادت میں ٹی20 کے بعد ونڈے سیریز بھی 1-2 سے جیت لی۔

      رشبھ پنت نے لگائی شاندار سنچری

      رشبھ پنت نے فیصلہ کن مقابلے میں تب سنچری لگائی، جب ہندوستان نے 38 رنوں پر 3 وکٹ گنوا دیئے تھے۔ یہ وکٹ کیپر بلے باز کی ونڈے کیریئر میں پہلی سنچری ہے۔ رشبھ پنت نے 106 گیندوں پر اپنی سنچری مکمل کی۔ رشبھ پنت سنچری بناکر رکے نہیں، بلکہ ٹیم کو جیت دلاکر ہی پویلین لوٹے۔ رشبھ پنت 113 گیندوں میں 125 رن بناکر ناٹ آوٹ رہے۔ انہوں نے سنچری لگانے کے بعد آخری 7 گیندوں میں 6 چوکے لگائے اور 25 رن بنائے۔

      روہت شرما انگلینڈ میں ونڈے سیریز جیتنے والے تیسرے ہندوستانی کپتان

      انگلینڈ میں سب سے پہلے ونڈے سیریز جیتنے کا کارنامہ سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہر الدین نے 1990 میں انجام دیا تھا۔ اس وقت دو ونڈے میچوں کی سیریز میں ٹیم انڈیا نے 0-2 سے جیت حاصل کی۔ اس کے بعد سال 2014 میں مہندر سنگھ دھونی کی قیادت میں ٹیم انڈیا نے پانچ ونڈے میچوں کی سیریز میں انگلینڈ کو 1-3 سے شکست دی تھی۔ بطور کپتان روہت شرما نے مسلسل سیریز جیتی ہے۔ روہت شرما کپتان بننے کے بعد اب تک 16 ونڈے میچوں میں 13 مقابلے جیت چکے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      PAK vs SL: بابر اعظم کی شاندار سنچری برسوں رکھے جائے گی یاد، اکیلے پلٹ دیا پورا میچ


      یہ بھی پڑھیں۔

      SL vs PAK: یاسر شاہ بڑی تاریخ کے قریب، عبدالقادر کو پیچھے چھوڑا، دانش کنیریا کا ریکارڈ خطرے میں

      اس سے قبل زخمی رہت شرما نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کرنے کا فیصلہ کیا۔ حالانکہ اولڈ ٹریفرڈ پر گزشتہ نو میچوں میں سے آٹھ میں پہلے بلے بازی کرنے والی ٹیم جیتی ہے۔ جوس بٹلر پہلے بلے بازی کرنے سے خوش تھے اور جسپریت بمراہ کا نہیں کھیلنا میزبانوں کے لئے خوشی کی خبر تھی، لیکن انہیں کہاں معلوم تھا کہ دنیا کے سب سے بہترین گیند بازوں میں شمار جسپریت بمراہ کی عدم موجودگی میں بھی مخالف ٹیم ان کی اننگ میں اتنی جلدی وکٹ حاصل کرلے گی اور وہ بھی بلے بازی کی مفید پچ پر۔ جسپریت بمراہ کی جگہ کھیل رہے محمد سراج نے دن کے کھیل میں اپنی تیسری ہی گیند پر جانی بیرسٹو کا وکٹ حاصل کرلیا، جس سے ان کی خود اعتمادی میں کافی اضافہ ہوا ہوگا۔ انگلینڈ کے اس سلامی بلے باز نے لیگ سائیڈ کی طرف گیند کھیلی، لیکن گیند بلا چھوکر مڈ آف پر کھڑے شرے یس ایئر کے ہاتھوں میں چلی گئی۔



      محمد سراج نے پھر جو روٹ کا وکٹ حاصل کرلیا۔ انگلینڈ کے کھلاڑی نے ان کی باہر جاتی گیند پر بلا لگا دیا اور دوسری سلپ میں کھڑے کپتان روہت شرما نے اسے لپک لیا۔ اس طرح انگلینڈ کے فارم میں چل رہے دو بلے باز صفر پر پویلین لوٹ چکے تھے اور ٹیم دوسرے اوور میں 12 رن پر دو وکٹ گنواکر مشکل میں تھی۔ جیسن رائے (41) نے محمد شمی پر تین باونڈری لگائی تھی، جس میں سے ایک چوکا میچ کی پہلی ہی گیند پر مڈ آف پر لگا تھا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: