உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹی-20 عالمی کپ: وراٹ کوہلی کی ضد پڑی بھاری، کپتان کے تین فیصلوں سے ہاری ٹیم انڈیا

    ٹی-20 عالمی کپ: وراٹ کوہلی کی ضد پڑی بھاری، کپتان کے تین فیصلوں سے ہاری ٹیم انڈیا

    ٹی-20 عالمی کپ: وراٹ کوہلی کی ضد پڑی بھاری، کپتان کے تین فیصلوں سے ہاری ٹیم انڈیا

    IND vs NZ T20 World Cup: ٹی-20 عالمی کپ میں نیوزی لینڈ کے خلاف ہوئے کرو یا مرو کے مقابلے (IND vs NZ T20 World Cup 2021) میں ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کی ضد ٹیم انڈیا پر بھاری پڑگئی۔ ان کا کوئی بھی فیصلہ ٹیم کے کام نہ آیا۔ الٹا ہندوستان- نیوزی لیںڈ سے ہار گیا اور سیمی فائنل میں پہنچنے کی امیدیں اور کمزور ہوگئیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ٹی-20 عالمی کپ میں نیوزی لینڈ کے خلاف ہوئے کرو یا مرو کے مقابلے (IND vs NZ T20 World Cup 2021) میں ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کی ضد ٹیم انڈیا پر بھاری پڑگئی۔ ان کا کوئی بھی فیصلہ ٹیم کے کام نہ آیا۔ الٹا ہندوستان- نیوزی لیںڈ سے ہار گیا اور سیمی فائنل میں پہنچنے کی امیدیں مزید کمزور ہوگئیں۔ اس میچ میں وراٹ کوہلی نے بلے بازی آرڈر میں تین بڑی تبدیلیاں کیں، لیکن ان کا ایک بھی داوں نہیں چلا اور ہندوستانی ٹاپ آرڈر بکھر گیا اور محض 50 رن کے اندر 4 بلے باز پویلین لوٹ گئے۔ اسی وجہ سے ہندوستانی ٹیم نیوزی لینڈ کے خلاف بڑا اسکور نہیں کھڑا کر پائی۔

      نیوزی لینڈ کے خلاف مقابلے کے لئے سوریہ کمار یادو کی جگہ ایشان کشن (Ishan Kishan) کو پلیئنگ الیون میں موقع دیا گیا تھا اور ٹاس کے وقت ہی کپتان وراٹ کوہلی نے یہ کہہ دیا تھا کہ ایشان کشن ٹاپ آرڈر میں کھیلیں گے۔ اب سوال اٹھ رہا ہے کہ آخر کیوں وراٹ نے 3 بین الاقوامی ٹی-20 کھیلنے والے ناتجربہ کار ایشان کشن سے اننگ کی شروعات کرانے کا خطرہ اٹھایا۔ وہ بھی تب جب ایشان کشن کو نئی گیند سے ٹرینٹ بولٹ (Trent Boult) اور ٹم ساودی جیسے سوئنگ گیند بازوں کا سامنا کرنا تھا۔ جیسا کہ خدشہ تھا، وہی ہوا، ایشان کشن ایک چوکا لگاکر بولٹ کا شکار ہوگئے۔

      وراٹ کوہلی کا دوسرا حیران کرنے والا فیصلہ تھا روہت شرما کو بطور سلامی بلے باز نظر انداز کرنا۔
      وراٹ کوہلی کا دوسرا حیران کرنے والا فیصلہ تھا روہت شرما کو بطور سلامی بلے باز نظر انداز کرنا۔


      روہت شرما کو اوپنر کے طور پر کیوں کیا نظر انداز؟

      وراٹ کوہلی کا دوسرا حیران کرنے والا فیصلہ تھا روہت شرما کو بطور سلامی بلے باز نظر انداز کرنا۔ کرو یا مرو کے مقابلے میں ایشان کشن کو ٹاپ آرڈر میں کھلانے کے لئے روہت شرما کے بلے بازی آرڈر میں تبدیلی کی گئی۔ وہ تین نمبر پر کھیلنے آئے اور ایش سوڑھی کی گیند پر بڑا شاٹ کھیلنے کے چکر میں وہ بھی سستے میں آوٹ ہوگئے۔ روہت شرما نے 14 گیندوں میں 14 رن بنائے۔ اس سے ٹیم انڈیا کے مڈل آرڈر پر اور دباو آگیا۔ روہت شرما کا ریکارڈ بطور سلامی بلے باز شاندار ہے۔ انہوں نے 113 بین الاقوامی ٹی-20 میں سے 80 میں اوپننگ کی ہے اور اس میں انہوں نے 2404 رن بنائے ہیں۔ روہت شرما نے اننگ کا آغاز کرتے ہوئے ٹی-20 میں 4 سنچری بھی لگائی ہے۔ ایسے میں وراٹ کوہلی کا یہ فیصلہ بھی سمجھ سے باہر تھا۔

      روہت شرما کی جگہ کے ایل راہل کو مڈل آرڈر میں بھیج سکتا تھا

      نیوزی لینڈ کے خلاف مقابلے میں کے ایل راہل نے ٹاپ آرڈر میں اپنا مقام برقرار رکھا۔ جبکہ  روہت شرما کو تین نمبر پر بلے بازی کرنی پڑی۔ کے ایل راہل کے پاس مڈل آرڈر میں بلے بازی کرنے کا ایک اچھا تجربہ ہے۔ وہ بین الاقوامی کرکٹ اور آئی پی ایل دونوں میں مڈل آرڈر میں بلے بازی کرچکے ہیں اور مڈل آرڈر میں کھیلتے ہوئے ان کا ریکارڈ شاندار رہا ہے۔

      کے ایل راہل نے 4 نمبر پر بلے بازی کرتے ہوئے 5 میچوں میں 87 رنوں کی اوسط سے 174 رن بنائے ہیں۔ انہوں نے ناٹ آوٹ 110 رنوں کی اننگ بھی کھیلی ہے۔ ایسے میں اگر وراٹ کوہلی کو بلے بازی آرڈر میں تبدیلی کرنی بھی تھی، تو کے ایل راہل کو 4 نمبر پر بھیجا جاسکتا تھا۔ بلے بازی آرڈر میں ہوئی تبدیلی کے سبب وراٹ کو ہلی خود بھی اپنے پسندیدہ تین نمبر کے بجائے 4 نمبر پر بلے بازی کرنے آئے اور وہ بھی 9 رن بناکر آوٹ ہوگئے اور ٹیم انڈیا کو شکست جھیلنی پڑی۔

      کپتان داسن شناکا اور وانندو ہسرنگا نے چھٹے وکٹ کے لئے نصف سنچری شراکت کرکے ٹیم کو سنبھالا۔ ہسرنگا 34 رن بناکر لیام لیونگسٹون کی گیند پر آوٹ ہوئے۔ انہوں نے 21 گیندوں پر 3 چوکا اور ایک چھکا لگایا۔ ٹیم کو آخری تین اوور میں 34 رن بنانے تھے۔ شناکا 26 رن بناکر رن آوٹ ہوئے۔ 18 ویں اوور میں جارڈن نے صرف 4 رن دیئے اور اس اوور میں دو وکٹ گرے۔ ٹیم 19ویں اوور میں 137 رن بناکر آوٹ ہوگئی۔ معین علی اور جارڈن کو بھی 2-2 وکٹ ملے۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: