உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹی-20 عالمی کپ: وقار یونس 24 گھنٹے میں 'نماز-ہندو' ریمارکس پر معافی مانگی

    ٹی-20 عالمی کپ: وقار یونس 24 گھنٹے میں 'نماز-ہندو' ریمارکس پر معافی مانگی

    ٹی-20 عالمی کپ: وقار یونس 24 گھنٹے میں 'نماز-ہندو' ریمارکس پر معافی مانگی

    IND vs PAK T20 World Cup 2021: سوشل میڈیا پر سابق کرکٹر اور پاکستانی شائقین کے غصے کا سامنا کرنے کے بعد پاکستان کے سابق تیز گیند باز وقار یونس (Waqar Younis) نے بدھ کو اپنے "نماز-ہندو" ریمارکس کے لیے معافی مانگی۔ وقار یونس نے ٹوئٹر پر متنازعہ ریمارکس پر معافی مانگی اور واضح کیا کہ اس وقت پرجوش ماحول میں یہ ایک غیر ارادی غلطی تھی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: سوشل میڈیا پر سابق کرکٹر اور پاکستانی شائقین کے غصے کا سامنا کرنے کے بعد پاکستان کے سابق تیز گیند باز وقار یونس (Waqar Younis) نے بدھ کو اپنے "نماز-ہندو" ریمارکس کے لیے معافی مانگی۔ وقار یونس نے ٹوئٹر پر متنازعہ ریمارکس پر معافی مانگی اور واضح کیا کہ اس وقت پرجوش ماحول میں یہ ایک غیر ارادی غلطی تھی۔ انہوں نے ٹویٹ میں لکھا کہ “اس پُرجوش ماحول میں میں نے کچھ ایسا کہا جو میں کہنا نہیں چاہتا تھا، جس سے بہت سے لوگوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچی۔ میں اس کے لیے معذرت خواہ ہوں، میرا ارادہ ایسا ہرگز نہیں کرنے کا تھا، یہ ایک غیر ارادی غلطی تھی۔ کھیل ذات، رنگ یا مذہب سے قطع نظر لوگوں کو متحد کرتا ہے"

       ہرشا بھوگلے نے ایک کے بعد ایک تین ٹوئٹ کئے اور وقار یونس کے بیان کو کھیل جذبہ کے خلاف بتایا۔

      ہرشا بھوگلے نے ایک کے بعد ایک تین ٹوئٹ کئے اور وقار یونس کے بیان کو کھیل جذبہ کے خلاف بتایا۔


      واضح رہے کہ آئی سی سی ٹی۔ 20 ورلڈ کپ 2021 (IND vs PAK T20 World Cup 2021) میں پاکستان کے ہندوستان کے خلاف میچ کے بعد کیے گئے اس تبصرے نے پوری دنیا کے کھیلوں کے شائقین کو مایوس کیا تھا۔ وقار یونس نے ایک پاکستانی نیوز چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ 'بابر اعظم اور محمد رضوان (Mohammad Rizwan) نے جس طرح سے بیٹنگ کی اور ان کے چہرے کے تاثرات حیرت انگیز تھے۔ سب سے اچھی بات یہ ہے کہ رضوان نے جو کیا، ماشااللہ، اس نے ہندوؤں سے گھری زمین پر نماز پڑھی، واقعی میرے لیے خاص تھی۔ "

      اس کے بعد کرکٹر سے کمنٹیٹر بنے آکاش چوپڑا نے ٹوئٹر پر ان کے تبصرے سے اختلاف کیا۔ ایک اور سابق کرکٹر وسیم جعفر نے بھی اسے ناگوار قرار دیا تھا۔ انہوں نے ٹویٹ کیاکہ “وقار یونس کی طرف سے بالکل قابل مذمت اور نفرت انگیز تبصرہ ہے"۔



      وقار یونس نے پاکستان کے یوز چینل ARY پر کہا تھا کہ جس طرح سے بابراعظم اور محمد رضوان نے بلے بازی کی، اسٹرائیک روٹیٹ کی، وہ دیکھنا شاندار تھا، جو محمد رضوان نے کیا، اس نے میدان پر نماز ادا کی، ہندووں کے درمیان بیچ میں کھڑے ہوکر، میرے لئے یہ لمحہ خاص تھا۔ وقار یونس کے اس بیان کو لے کر لوگوں نے انہیں خوب کھری کھوٹی سنائی تھی۔ ہندوستانی کمنٹیٹر اور کرکٹ کے ایکسپرٹ ہرش بھوگلے نے بھی وقار کے متنازع بیان پر اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے اسے قابل مذمت قرار دیا۔



      ہرشا بھوگلے نے بھی وقار یونس کے بیان پر ناراضگی ظاہر کی

      ہرشا بھوگلے نے ایک کے بعد ایک تین ٹوئٹ کئے اور وقار یونس کے بیان کو کھیل جذبہ کے خلاف بتایا۔ ہرشا بھوگلے نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا، ’وقار یونس کے قد کے شخص کے لئے یہ کہنا کہ محمد رضوان کو ہندووں کے سامنے نماز ادا کرتے دیکھنا ان کے لئے بہت خاص تھا، سب سے مایوس کن چیزوں میں سے ایک ہے، جو میں نے سنا ہے۔ ہم میں سے بہت سے لوگ اس طرح کی چیزوں کو کھیلنے اور کھیل کے بارے میں بات کرنے کی بہت کوشش کرتے ہیں اور یہ سننا خطرناک ہے‘۔

      انہوں نے مزید لکھا، ’میں یقینی طور پر امید کرتا ہوں کہ پاکستان میں بہت سارے حقیقی کھیل مداح اس بیان کے خطرناک پہلو کو دیکھ سکیں گے اور میری مایوسی میں شامل ہوں گے۔ ہم جیسے کھیل مداحوں کے لئے لوگوں کو یہ بتانا بہت مشکل ہوجاتا ہے کہ یہ صرف کھیل ہے، صرف ایک کرکٹ میچ ہے‘۔ ہرشا بھوگلے نے ایک اور ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا، ’آپ سوچتے ہوں گے کہ کرکٹر ہمارے کھیل کے ایمبسڈر کے طور پر کچھ زیادہ ہی ذمہ دار ہوں گے۔ مجھے یقین ہے کہ وقار یونس کی طرف سے معافی آئے گی۔ ہمیں کرکٹ کی دنیا کو جوڑنے کی ضرورت ہے، مذہب سے تقسیم کی نہیں‘۔

      ہرشا بھوگلے نے وقار یونس کے بیان سے متعلق یکے بعد دیگرے تین ٹوئٹ کئے۔
      ہرشا بھوگلے نے وقار یونس کے بیان سے متعلق یکے بعد دیگرے تین ٹوئٹ کئے۔


      واضح رہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان اتوار کو کھیلے گئے سپر-12 کے ہائی وولٹیج میچ میں پاکستان کے ہاتھوں ہندوستان 10 وکٹ سے ہار گیا تھا۔ یہ پاکستان کی آئی سی سی عالمی کپ میں ہندوستان پر پہلی جیت ہے۔ ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی کی فاتح ٹیم کے ہیرو محمد رضوان کو گلے لگانا میچ کی سب سے اچھی تصویروں میں ایک تھی۔ ہندوستان کے سابق کپتان اور ٹیم کے مینٹار مہندر سنگھ دھونی کو بھی کھیل ختم ہونے کے بعد کپتان بابر اعظم، شعیب ملک اور تیز گیند باز شہنواز دہانی سمیت پاکستان کے کھلاڑیوں سے بات کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ ہندوستان اور پاکستان کے کھلاڑیوں کے اس طرح سے ملاقات کی سوشل میڈیا پر جم کر تعریف ہوئی تھی۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: