ہوم » نیوز » اسپورٹس

IND Vs AUS: کلین سوئپ سے بچی ٹیم انڈیا، آخری ونڈے میں آسٹریلیا کو شکست دے کر بچائی لاج

ہاردک پانڈیا اور رویندر جڈیجہ نے 150 رن کی ناٹ آوٹ شراکت کرکے آسٹریلیا کے سامنے 303 رنوں کا ہدف رکھا تھا۔ جواب میں آسٹریلیائی ٹیم 289 رن بناکر آوٹ ہوگئی۔ اس طرح سے آخری ونڈے میں ٹیم انڈیا نے 13 رنوں سے شکست دے کر کچھ حد تک اپنی عزت بچانے میں کامیاب ہوگئی۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 02, 2020 07:00 PM IST
  • Share this:
IND Vs AUS: کلین سوئپ سے بچی ٹیم انڈیا، آخری ونڈے میں آسٹریلیا کو شکست دے کر بچائی لاج
کلین سوئپ سے بچی ٹیم انڈیا، آخری ونڈے میں آسٹریلیا کو شکست دے دی

کینبرا: ہاردک پانڈیا کی (ناٹ آؤٹ 92) اور رویندر جڈیجہ کی (ناٹ آؤٹ 66) کی شاندار نصف سنچریوں اور ان کے درمیان چھٹے وکٹ کے لئے محض 108 گیندوں پر 150 رنوں کی ناقابل شکست شراکت داری اور شاردل ٹھاکر (51 رن پر تین وکٹ) کی بہترین گیندبازی کی بدولت ہندوستان نے آسٹریلیا کو تیسرے اور آخری ونڈے میں بدھ کو 13 رنوں سے شکست دے کرکچھ عزت بچالی۔ میچوں کی یہ سیریز آسٹریلیا نے 1-2 سے جیت لی تھی۔ ہندوستان نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 50 اووروں میں پانچ وکٹ کے نقصان پر 302 رنوں کے مشکل اسکور بنانے کے بعد آسٹریلیا کو 49.3 اووروں میں 289 رن بناکر آؤٹ کیا۔ وراٹ کوہلی کی ٹیم نے اس جیت سے نہ صرف اپنی عزت بچالی بلکہ آسٹریلیا کو کلین سوئپ کرنے سے بھی روکا۔ آسٹریلیا کی طرف سے کپتان آرون فنچ نے 75 اور آل راؤنڈر گلین میکسویل نے 59 رن بنائے۔

اس سے پہلے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرتے ہوئے ہندوستان نے کپتان وراٹ کوہلی (63) کی نصف سنچری کے باوجود اپنے پانچ وکٹ 152 رن پرہی کھو دیئے تھے اور اس کی حالت کافی خراب نظر آ رہی تھی، لیکن ہاردک پانڈیا اور رویندر جڈیجہ نے اس کے بعد مورچہ سنبھالا اور زبردست اننگ کھیلیں، جن کی بدولت ہندوستان 300 رن عبور کرسکا۔ ہاردک پانڈیا نے اپنا سب سے بڑا اسکور بناتے ہوئے 76 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 92 رن میں 7چوکے اور ایک چھکا لگایا جبکہ رویندر جڈیجہ نے 50 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 66 رن میں پانچ چوکے اور تین چھکے لگائے۔ دونوں نے چھٹے وکٹ کے لئے 108 گیندوں پر 150 رن کی شراکت داری کی۔ دونوں بلے بازوں نے آخری پانچ اوور میں 76 رن لگائے۔


 ہندوستان نے آسٹریلیا کو تیسرے اور آخری ونڈے میں بدھ کو 13 رنوں سے شکست دے کرکچھ عزت بچالی۔ میچوں کی یہ سیریز آسٹریلیا نے 1-2 سے جیت لی تھی۔
ہندوستان نے آسٹریلیا کو تیسرے اور آخری ونڈے میں بدھ کو 13 رنوں سے شکست دے کرکچھ عزت بچالی۔ میچوں کی یہ سیریز آسٹریلیا نے 1-2 سے جیت لی تھی۔


قبل ازیں کپتان وراٹ کوہلی نے 78 گیندوں پر 63 رن کی اننگ میں پانچ چوکے لگائے اور اپنی اننگ کا 23 واں رن بنانے کے ساتھ ہی ون ڈے میں 12 ہزار رن بھی پورے کر لیے۔ وراٹ ون ڈے کے سب سے تیز 12 ہزاری بھی بن گئے اور انہوں نے ہم وطن لیجینڈ سچن تیندولکر کا ریکارڈ توڑ دیا۔ پانڈیا اور جڈیجہ نے مشکل صورتحال میں بوجھ اور حملہ انگیزی کا بے جوڑ نمونہ پیش کرتے ہوئے شاندار بلے بازی کی۔ پانڈیا نے اپنی نصف سنچری 55 گیندوں میں اور جڈیجہ نے 43 گیندوں میں مکمل کی۔ جڈیجہ نے اننگ کے 48 ویں اوور میں سین ایبوٹ کی گیندوں پر مسلسل تین چوکے مار کر نصف سنچری مکمل کر لی۔ انہوں نے مسلسل تین چوکے مار کر اگلی گیند پر چھکا بھی مارا۔ دونوں بلے بازوں کے درمیان 150 رنوں کی شراکت داری چھٹے وکٹ کے لئے ہندوستان کی تیسری سب سے بڑی شراکت داری ہوئی۔ ہندوستان کی آسٹریلیا کے خلاف چھٹے وکٹ کے لیے یہ سب سے بڑی شراکت داری ہے۔ پانڈیا نے سیریز کے پہلے میچ میں بنائے گئے 90 رن کے بڑے اسکور کو تیسرے میچ میں پیچھے چھوڑا۔ پانڈیا نےمکمل احتیاط کے ساتھ ہندوستانی اننگ کو سنبھالے رکھا۔

ہاردک پانڈیا اور رویندر جڈیجہ کے درمیان 150 رنوں کی شراکت داری چھٹے وکٹ کے لئے ہندوستان کی تیسری سب سے بڑی شراکت داری ہوئی۔ ہندوستان کی آسٹریلیا کے خلاف چھٹے وکٹ کے لیے یہ سب سے بڑی شراکت داری ہے۔
ہاردک پانڈیا اور رویندر جڈیجہ کے درمیان 150 رنوں کی شراکت داری چھٹے وکٹ کے لئے ہندوستان کی تیسری سب سے بڑی شراکت داری ہوئی۔ ہندوستان کی آسٹریلیا کے خلاف چھٹے وکٹ کے لیے یہ سب سے بڑی شراکت داری ہے۔


ہندوستان نے اس مقابلے کے لیے چار تبدیلیاں کی تھیں۔ مینک اگروال کی جگہ شبھمن گل کو، یجویندر چہل کی جگہ کلدیپ یادو کو، محمد سمیع کی جگہ شاردل ٹھاکر کو اور نودیپ سینی کی جگہ ٹی نٹراجن کو ٹیم میں شامل کیا۔ نٹراجن نے اس طرح ہندوستان کی طرف سےکریئر کا پہلا ون ڈے کھیلا۔ سلامی بلے باز شیکھر دھون نے مایوس کیا اور 27 گیندوں میں 16 رن بنا کر ایبوٹ کی گیند پر آؤٹ ہو گئے۔ گِل کو لیفٹ آرم اسپنر ایشٹن ایگر نے پویلین بھیجا۔ گل نے 39 گیندوں پر 33 رن میں تین چوکے اور ایک چھکہ لگایا۔ شریئس ایئر 21 گیندوں پر 19 رن بنا کر لیگ اسپنر ایڈم زمپا کا شکار ہوئے۔ لوکیش راہل پانچ رن بنا کر ایگر کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔ وراٹ نے اپنی نصف سنچری 64 گیندوں میں مکمل کی۔ وراٹ کو تیز گیندباز جوش ہیزل وڈ نے سیریز میں تیسری بار اپنا شکار بنایا۔ وراٹ کا وکٹ 152 کے اسکور پر گرا اور اس وقت ہندوستانی پاری شدید بحران میں نظر آ رہی تھی لیکن پانڈیا اور جڈیجہ کی شراکت داری نے اسے مقابلے کے لائق اسکور تک پہنچا دیا۔ آسٹریلیا کی جانب سے ایگر نے 44 رن پر دو وکٹ لیے جبکہ ہیزل وڈ، ایبوڈ اور زمپا نے ایک ایک وکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 02, 2020 06:16 PM IST