ہوم » نیوز » اسپورٹس

آسٹریلیا کے خلاف شاندار پانچ وکٹ لینے کے بعد نکلے محمد سراج کے آنسو، کہا- کاش والد زندہ ہوتے

محمد سراج (Mohammed Siraj) نے برسبین ٹسٹ کی دوسری اننگ میں پانچ وکٹ لینے کا کارنامہ انجام دیا۔ دورے سے قبل اس ہندوستانی تیز گیند باز کے والد کا انتقال ہوگیا تھا۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 19, 2021 10:56 AM IST
  • Share this:
آسٹریلیا کے خلاف شاندار پانچ وکٹ لینے کے بعد نکلے محمد سراج کے آنسو، کہا- کاش والد زندہ ہوتے
آسٹریلیا کے خلاف شاندار پانچ وکٹ لینے کے بعد نکلے محمد سراج کے آنسو، کہا- کاش والد زندہ ہوتے-

برسبین: ہندوستانی تیزگیندباز محمدسراج برسبین کے گابا میدان میں آسٹریلیا کی دوسری اننگز میں پانچ وکٹ حاصل کرکے ایراپلی پرسنا، بشن سنگھ بیدی، مدن لال اور ظہیرخاں جیسے عظیم گیندبازوں کی فہرست میں شامل ہوگئے ہیں۔ اپنا تیسرا ٹسٹ میچ کھیل سراج نے ٹسٹ کرکٹ میں پہلی اننگز میں پانچ وکٹ حاصل کئے ہیں ۔ سراج نے 73 رن دے کر پانچ وکٹ حاصل کئے۔ انہوں نے میچ کے چوتھے دن پیر کے رو ز یہ شاندار ریکارڈ اپنے نام کیا۔ سراج نے جوش ہیزلووڈ (9) کو شاردل ٹھاکر کے ہاتھوں کیچ کراکر اننگز کا پانچواں وکٹ حاصل کیا۔


دن کا کھیل ختم ہونے کے بعد پریس کانفرنس میں سراج نے ایک مرتبہ اپنے والد کو یاد کرتے ہوئے کہا، ’’ والد کی دعاؤں کی وجہ سے وہ ایسا کرسکے۔ میرے والد میری سب سے زیادہ حمایت کرتے تھے۔ ان کا خواب تھا کہ میں ہندوستان کے لئے کھیلوں اور ملک کا نام روشن کروں۔ ان کی خواہش تھی کہ ان کا بیٹا کھیلے اور پوری دنیا اس کو دیکھے۔ کاش وہ ہوتے اور میچ دیکھتے تو کافی خوش ہوتے.. یہ ان کی دعا ہے کہ میں پانچ وکٹ حاصل کرسکا ،میرے پاس بیان کرنے کے لئے الفاظ نہیں ہیں‘‘۔


اپنا تیسرا ٹسٹ میچ کھیل سراج نے ٹسٹ کرکٹ میں پہلی اننگز میں پانچ وکٹ حاصل کئے ہیں ۔ سراج نے 73 رن دے کر پانچ وکٹ حاصل کئے۔ انہوں نے میچ کے چوتھے دن پیر کے رو ز یہ شاندار ریکارڈ اپنے نام کیا۔
اپنا تیسرا ٹسٹ میچ کھیل سراج نے ٹسٹ کرکٹ میں پہلی اننگز میں پانچ وکٹ حاصل کئے ہیں ۔ سراج نے 73 رن دے کر پانچ وکٹ حاصل کئے۔ انہوں نے میچ کے چوتھے دن پیر کے رو ز یہ شاندار ریکارڈ اپنے نام کیا۔


آسٹریلیا دورے پر بریک اپ گیندباز کے طور پر شامل کئے گئے سراج کے لئے کچھ کچھ مہینے کافی چیلنجنگ رہے۔ انہوں نے اس دوران نومبر میں اپنے والد کو کھو یا۔ اس کے بعد انہیں اپنے ڈیبیو میچ میں ہی نسلی تبصروں کا سامنا کرنا پڑا۔محمد سراج کو آسٹریلیا میں ناظرین کے ذریعہ نسلی تعصب پر مبنی جملوں کا سامنا کرنا پڑاتھا۔ ان سب کے باوجود سراج اپنے ہدف سے ڈگمگائے نہیں اور تمام چیلنجوں سے لڑتے ہوئے برسبین میں وہ کرکے دکھایا جو ہندوستان کے عظیم گیندبازوں نے اپنے وقت میں کیا تھا۔

 ٹیم انڈیا کے سابق جارح بلے باز وریندر سہواگ نے لکھا، اس دورے پر ایک بچہ بڑا ہوگیا۔ اپنی پہلی ہی ٹسٹ سیریز میں گیندبازی کی کمان ملی اور انہوں نے شاندار طریقے سے اس کی قیادت کی۔

ٹیم انڈیا کے سابق جارح بلے باز وریندر سہواگ نے لکھا، اس دورے پر ایک بچہ بڑا ہوگیا۔ اپنی پہلی ہی ٹسٹ سیریز میں گیندبازی کی کمان ملی اور انہوں نے شاندار طریقے سے اس کی قیادت کی۔


انہوں نے مزید کہا کہ میرے والد کے انتقال کے بعد میرے لئے یہ صورتحال بہت مشکل تھی لیکن ماں سے بات کرنے کے بعد میرا حوصلہ اور بڑھ گیا اور میں ذہنی طور پر مضبوط ہوا۔ میری کوشش صرف اپنے والد کے خواب کو پورا کرنے کی تھی۔ اپنی ڈیبیو سیریز میں تین میچوں میں 13 وکٹیں حاصل کرنے والے محمدسراج کی کارکردگی اور کھیل کی ہرکوئی تعریف کررہا ہے۔ برسبین میں بہترین گیندبازی کے بعد سابق کرکٹروں سمیت کئی لوگوں نے ان کی تعریف کی۔

سابق آل راونڈر عرفان پٹھان نے کہا، فرسٹ کلاس کرکٹ میں محنت کرنا اہم ہے اور سراج اور شاردل دونوں کی کارکردگی میں یہ نظرآیا۔ دونوں کو مبارکباد۔
سابق آل راونڈر عرفان پٹھان نے کہا، فرسٹ کلاس کرکٹ میں محنت کرنا اہم ہے اور سراج اور شاردل دونوں کی کارکردگی میں یہ نظرآیا۔ دونوں کو مبارکباد۔


ٹیم انڈیا کے سابق جارح بلے باز وریندر سہواگ نے لکھا، اس دورے پر ایک بچہ بڑا ہوگیا۔ اپنی پہلی ہی ٹسٹ سیریز میں گیندبازی کی کمان ملی اور انہوں نے شاندار طریقے سے اس کی قیادت کی۔ سابق آل راونڈر عرفان پٹھان نے کہا، فرسٹ کلاس کرکٹ میں محنت کرنا اہم ہے اور سراج اور شاردل دونوں کی کارکردگی میں یہ نظرآیا۔ دونوں کو مبارکباد۔ سابق کرکٹر اور کمنٹیٹر آکاش چوپڑا نے لکھا، والد کو کھویا لیکن آسٹریلیا میں رکنے کا فیصلہ کیا۔ نسلی تبصروں کا سامنا کیا لیکن اس سے خود کو متاثر نہیں ہونے دیا۔ اپنے تیسرے ہی ٹسٹ میں گیندبازی کے حملے کی قیادت کی اور پانچ وکٹ حاصل کئے۔ سراج تمھارے لئے پیار اور احترام۔ ٹیم انڈیا کے سابق تیزگیندباز آر پی سنگھ نے لکھا، ’’شاباش سراج، تمہارے والد کو تم پر فخر ہوگا۔ یہ پانچ وکٹیں ایک یادگار لمحہ ہے۔
26 سالہ سراج نے آسٹریلیائی اننگز کے دوران مارنس لابوشین (25)، میتھیو ویڈ (0)، اسٹیو اسمتھ (55) اور مشل اسٹارک (1) جیسے بہترین کھلاڑی کو اپنا شکار بنایا۔ سراج اس شاندار کارکردگی کے بعد گابا میں ایک اننگز میں 5 یا اس سے زیادہ وکٹیں لینے والے پانچویں ہندوستانی گیندباز بن گئے۔ سراج سے پہلے ایراپلی پرسنا، بشن سنگھ بیدی، مدن لال اور ظہیر خان نے یہ کارنامہ انجام دیا تھا۔ آف اسپنر پرسنا نے برسبین میں 1968 کی سیریز میں 104 رنز دے کر 6 وکٹیں حاصل کی تھیں۔ سابق کپتان بشن سنگھ بیدی اور مدن لال نے 1977 کی سیریز میں 5-5 وکٹیں حاصل کی تھیں۔ بائیں ہاتھ کے اسپنر بیدی نے 55 رن دے کر 5 وکٹیں ، میڈیم تیزگیندباز مدن لال نے 72 رنز دے کر 5 وکٹیں اپنے نام کی تھیں۔ آخری بار بائیں ہاتھ کے تیز گیندباز ظہیر خان نے 04-2003کی سیریز میں گابا پر 95 رنز دے کر 5 وکٹیں حاصل کی تھیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jan 19, 2021 10:35 AM IST