உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IND VS AUS: شاردل ٹھاکر کھیل سکتے ہیں سڈنی ٹسٹ، امیش یادو سیریز سے باہر

    شاردل ٹھاکر کھیل سکتے ہیں سڈنی ٹسٹ، امیش یادو سیریز سے باہر

    امیش یادو (Umesh Yadav) پٹھوں میں کھنچاو کے سبب آسٹریلیا دورے سے باہر ہوگئے ہیں، اب سوال یہ ہے کہ تیسرے ٹسٹ میچ میں ان کی جگہ کون کھیلے گا؟

    • Share this:
      نئی دہلی: تیز گیند باز امیش یادو (Umesh Yadav) پنڈلی کی پٹھوں میں کھنچاو کے سبب آسٹریلیا کے خلاف باقی بچے دو ٹسٹ میچوں میں نہیں کھیل پائیں گے اور ہندوستانی ٹیم انتظامیہ تیسرے ٹسٹ میچ کے لئے ان کے مقام پر بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز ٹی نٹراجن پر ان سے زیادہ تجربہ کار شاردل ٹھاکر کو ترجیح دے سکتا ہے۔ امیش یادو میلبورن میں دوسرے ٹسٹ میچ کے دوران زخمی ہوگئے تھے، جس کے سبب وہ سیریز سے باہر ہوگئے ہیں اور وہ باز آبادکاری کے لئے گھر لوٹیں گے۔ تیسرا ٹسٹ سات جنوری سے سڈنی میں کھیلا جائے گا۔

      شاردل ٹھاکر کیوں ہیں ٹی نٹراجن سے ریس میں آگے

      ہندوستانی کرکٹ بورڈ کے ذرائع نے رازداری کی شرط پر پی ٹی آئی - بھاشا سے کہا، ’امیش یادو کو باز آباد کاری پروگرام سے گزرنا ہوگا۔ وہ ہندوستان روانہ ہوگئے ہیں’۔ ذرائع نے بتایا، ’ٹی نٹراجن کی کارکردگی سے سبھی دلچسپی ہے، لیکن ہمیں یہ نہیں بھولنا چاہئے کہ اس نے تمل ناڈو کے لئے صرف ایک فرسٹ کلاس میچ کھیلا ہے۔ وہیں شاردل ممبئی کے لئے مسلسل گھریلو کرکٹ کھیلتا آیا ہے۔ ذرائع نے کہا، ’شاردل بدقسمت تھا کہ ویسٹ انڈیز کے خلاف اپنے پہلے ٹسٹ سے اسے چوٹ کے سبب ایک بھی اوور پھینکے بغیر باہر ہونا پڑا۔ وہ آخری الیون میں امیش یادو کی جگہ لے سکتا ہے’۔ چیف کوچ روی شاستری، کارگزار کپتان اجنکیا رہانے اور گیند بازی کوچ بھرت ارون سڈنی پہنچنے کے بعد اس پر فیصلہ کریں گے۔

      شاردل ٹھاکر نے ابھی تک 62 فرسٹ کلاس میچوں میں 206 وکٹ حاصل کئے ہیں۔ انہوں نے 6 نصف سنچریاں لگائی ہیں۔ محدود اووروں کے کرکٹ میں ہندوستان کے لئے کھیلتے ہوئے بھی وہ اچھے بلے باز کے طور پر ابھرے ہیں۔ دوسری طرف ٹی نٹراجن نے لمیٹیڈ اوور فارمیٹ میں تو خود کو ثابت کیا ہے، لیکن لال گیند کا کھیل تھوڑا الگ ہوتا ہے۔ ویسے ٹیم میں نودیپ سینی بھی موجود ہیں۔ جہاں تک امیش یادو کا سوال ہے تو وہ بنگلورو میں قومی کرکٹ اکادمی میں باز آباد کاری پروگرام پر عمل کریں گے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: