உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IND vs PAK Asia Cup 2022: پاکستان کی طاقت ہی اس کی کمزوری، ایک حملے سے گزشتہ شکست کا حساب ادا ہوجائے گا

    پاکستان کی طاقت ہی اس کی کمزوری، ایک حملے سے گزشتہ شکست کا حساب ادا ہوجائے گا

    پاکستان کی طاقت ہی اس کی کمزوری، ایک حملے سے گزشتہ شکست کا حساب ادا ہوجائے گا

    India vs Pakistan Asia cup 2022: پاکستان کی ٹیم گزشتہ ٹی20 عالمی کپ سے مسلسل اچھی کارکردگی پیش کر رہی ہے۔ تاہم جو ٹیم کی سب سے بڑی طاقت ہے، وہی اس کی کمزوری بھی ثابت ہوسکتی ہے۔ ٹیم انڈیا کو بھی اس کے بارے میں اچھے سے معلوم ہے۔ ایسے میں اگر ہندوستان نے شروعات میں ہی اس کی طاقت پر حملہ کیا اور اسے ختم کر دیا تو پھر میچ مٹھی میں آتے ہوئے دیر نہیں لگے گی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: 10 ماہ بعد ہندوستان اور پاکستان کی کرکٹ ٹیم پھر آمنے سامنے ہوں گی۔ مقام وہی ہے، جہاں گزشتہ بار دونوں ٹیموں کی ٹکر ہوئی تھی۔ تب پاکستان نے تاریخ بدلی تھی۔ پہلی بار اس نے ہندوستان کو عالمی کپ میں شکست دی تھی۔ شکست بھی ایسی کہ فینس تو ٹھیک، ٹیم انڈیا بھی آج تک اس کا درد نہیں بھولی ہے۔ ایک دن پہلے ہندوستانی کپتان روہت شرما نے یہی بات کہی تھی۔ لیکن، اب نئی شروعات ہے۔ دونوں ہی ٹیمیں جیت کے رتھ پر سوار ہوکر ایشیا کپ میں پہنچی ہیں۔ ایسے میں ٹکر زبردست ہونے کا پورا امکان ہے۔ تاہم پاکستان کی پریشانی یہ ہے کہ اس کی طاقت ہی اس کی سب سے بڑی کمزوری ہے۔  یہ بات ٹیم انڈیا کو بھی معلوم ہے۔ ایسے میں ٹیم انڈیا کی جیت کا راستہ، پاکستان کی طاقت پر زبردست حملہ کرنے سے نکلے گا۔

      اب آپ کو بتاتے ہیں کہ پاکستان کی طاقت کیا ہے، جو اس کی کمزوری بھی ہے۔ دراصل، پاکستان کی سب سے بڑی طاقت اس کی بلے بازی ہے۔ اس میں بھی ٹاپ-3 بلے بازوں پر پاکستان کی پوری بلے بازی مرکوز ہے۔ ایسے میں اگر پاکستان کے ٹاپ-3 بلے بازوں کا ہندوستان نے جلدی شکار کردیا تو پھر میچ پر شکنجہ کستے دیر نہیں لگے گی۔ اب سلسلہ وار طریقے سے پاکستان کی طاقت کے بارے میں جانتے ہیں، جو اس کی کمزوری بھی ثابت ہوسکتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ہندوستانی عظیم کرکٹر کا بڑا بیان- بابر اعظم کی کامیابی میں رضوان کا اہم تعاون، ویڈیو سے سمجھیں پورا ماجرا
       یہ بھی پڑھیں۔

      Asia Cup 2022: روہت شرما کا پاکستانی صحافی کو دلچسپ جواب، اوپننگ کے سوال پر بولے- تھوڑا تو سیکریٹ... 

       پاکستان کے ٹاپ-3 نے 67 فیصد رن بنائے

      گزشتہ سال ہوئے ٹی20 عالمی کپ سے پاکستان کے ٹاپ-3 بلے بازوں یعنی بابر اعظم، محمد رضوان اور فخر زماں کی تکڑی نے  ٹی20 میں مل کر پاکستان کے 67.5 فیصد رن بنائے ہیں۔ اس مدت میں ان تینوں بلے بازوں نے انٹرنیشنل ٹی20 میں پاکستان کے لئے 72 فیصد گیندیں کھیلی ہیں۔ یعنی بیشتر مقابلوں میں یہی تین بلے باز سب سے زیادہ وقت تک کریز پر رہے ہیں اور لازمی ہے کہ پاکستان کی حالیہ کامیابی میں بھی انہیں تینوں کا ہی ہاتھ ہے۔ ایسے میں اگر ہندوستانی گیند بازوں نے اس تکڑی کو سستے میں سمیٹ دیا تو پھر بڑا کم ہو جائے گا۔

      ہندوستان کی بھی سب سے بڑی طاقت ٹاپ آرڈر

      پاکستان کی طرح ہندوستانی ٹیم بھی اپنے ٹاپ-3 بلے بازوں پر محصر ہے۔ گزشتہ سال ٹی20 عالمی کپ سے ٹاپ-3 بلے بازوں نے ٹیم انڈیا کے 58.4 فیصد رن بنائے ہیں۔ پاکستان کے بعد ہندوستان اس معاملے میں دوسرے مقام پر ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: