ہوم » نیوز » اسپورٹس

ہندوستان بنام جنوبی افریقہ : مینک کی ڈبل ​​سنچری کی بدولت ہندوستان نے بنایا رنوں کا پہاڑ

ہندوستان نے جنوبی افریقہ کے خلاف پہلے کرکٹ ٹسٹ کے دوسرے دن جمعرات کو سات وکٹ پر 502 رن کا ہمالیائی اسکور بنا لیا۔ جنوبی افریقہ نے اس کے جواب میں دن کا کھیل ختم ہونے تک 3 وکٹ کے نقصان پر 39 رنز بنا لئے ہیں۔

  • Share this:
ہندوستان بنام جنوبی افریقہ : مینک کی ڈبل ​​سنچری کی بدولت ہندوستان نے بنایا رنوں کا پہاڑ
جڈیجہ 46 گیندوں میں ایک چھکے کی مدد سے 30 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔

اوپنروں مینک اگروال (215) اور روہت شرما (176) کی کرشمہ ساز بیٹنگ اور دونوں کے درمیان 317 رنز کی اوپننگ شراکت کی بدولت ہندوستان نے جنوبی افریقہ کے خلاف پہلے کرکٹ ٹسٹ کے دوسرے دن جمعرات کو سات وکٹ پر 502 رن کا ہمالیائی اسکور بنا لیا۔ جنوبی افریقہ نے اس کے جواب میں دن کا کھیل ختم ہونے تک 3 وکٹ کے نقصان پر 39 رنز بنا لئے ہیں۔مینک نے اپنی پہلی سنچری کو ڈبل سنچری میں بدلا اور 371 گیندوں پر 215 رن بنائے جبکہ روہت نے 244 گیندوں پر 176 رن بنائے۔ ان دونوں کی سب سے زیادہ دلچسپ بات یہ رہی کہ دونوں نے اپنی اننگز میں یکساں 23 چوکے اور چھ چھکے لگائے۔ دونوں کے درمیان 82 اوور میں 317 رن کی زبردست شراکت ہوئی اور اس دوران انہوں نے کئی ریکارڈ بنا ڈالے۔


 اوپنرمینک اگروال (215)۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔
اوپنرمینک اگروال (215)۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔


ہندستان نے کل کے بغیر کوئی وکٹ کھوئے 202 رن سے آگے کھیلنا شروع کیا تھا اور کپتان وراٹ کوہلی نے اپنی پہلی اننگز سات وکٹ پر 502 رن کا بڑا اسکور بناکر اعلان کر دی۔ روہت نے 115 اور مینک نے 84 رنز سے اپنی اننگز کو آگے بڑھایا تھا۔ وراٹ نے 20، اجنکیا رہانے نے 15، رویندر جڈیجہ نے ناٹ آؤٹ 30، هنوما وهاري نے 10 اور ردھمان ساہا نے 21 رن بنائے جبکہ چتیشور پجارا چھ رن بنا کر آؤٹ ہوئے۔جنوبی افریقہ کے لئے دن کا باقی وقت اچھا نہیں رہا اور تجربہ کار آف اسپنر روی چندرن اشون نے جنوبی افریقہ کے بلے بازوں کو پریشانی میں ڈالتے ہوئے دو وکٹ لئے۔ اشون نے پریکٹس میچ میں سنچری بنانے والے سے ایڈن ماركرم کو بولڈ کیا اور تھيونس ڈی برون کو وکٹ کیپر ردھمان ساہا کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔ ماركرم نے پانچ اور برون نے چار رن بنائے۔لیفٹ آرم اسپنر رویندر جڈیجہ نے ڈین پئٹ کو بولڈ کر جنوبی افریقہ کو سخت مصیبت میں ڈال دیا۔ پئٹ کا اکاؤنٹ نہیں کھلا۔ اسٹمپس کے وقت اوپنر ڈین ایلگر 27 اور تمبا باوما دو رنز بنا کر کریز پر تھے۔ جنوبی افریقہ ہندستان کے اسکور سے 463 رنز پیچھے ہے۔


روہت اور مینک۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔
روہت اور مینک۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔


پہلے ٹیسٹ کا پہلا دن اگر ہٹمین روہت کے نام رہا تھا تو دوسرا دن مکمل طور مینک کے نام رہا۔ مینک نے زبردست بلے بازی کرتے ہوئے اپنے کیریئر کی پہلی ڈبل ​​سنچری بنا دی۔ مینک نے پہلے سیشن میں اپنی سنچری مکمل کی اور لنچ کے بعد ڈبل سنچری جڑ دی۔ ہندستانی اننگز کے 115 ویں اوور میں کیشو مہاراج کی پہلی گیند پر دو رن لے کر مینک نے اپنی ڈبل ​​سنچری مکمل کی۔کرناٹک کے 28 سالہ مینک کا اس سے پہلے سب سے بہترین اسکور 77 رنز تھا اور وہ اپنے پانچویں ٹیسٹ میں اپنی پہلی ڈبل سنچری پر پہنچے ہیں۔ دوسرے دن کے دونوں سیشن مینک کے نام رہے۔ پہلے سیشن میں انہوں نے اپنی سنچری مکمل کی اور دوسرے سیشن میں اس سنچری کو ڈبل سنچری میں تبدیل کر دیا۔ ڈبل سنچری لگانے کے ساتھ ہی مينك چوتھے ایسے ہندوستانی بلے باز بن گئے ہیں جنہوں نے اپنی پہلی ٹیسٹ سنچری کو ڈبل سنچری میں تبدیل کر دیا ہے۔

مينك سے پہلے لیجنڈ بلے باز دلیپ سردیسائی (ناٹ آؤٹ 200) نے نیوزی لینڈ کے خلاف سال 1965 میں، ونود کامبلی (224) نے انگلینڈ کے خلاف 1993 میں اور كر ونا نائر (ناٹ آؤٹ 303) نے انگلینڈ کے خلاف 2016 میں یہ کارنامہ کیا ہے۔اس طرح مینک ہندوستانی ٹیم کے لئے 10 سال بعد ڈبل سنچری جڑنے والے سلامی بلے باز بن گئے ہیں۔ سال 2009 میں ٹیم انڈیا کے دھماکہ خیز اوپنر وریندر سہواگ نے سری لنکا کے خلاف ممبئی کے برابورن اسٹیڈیم پر 293 رن بنائے تھے۔مینک نے اس کے ساتھ ہی سہواگ کے ریکارڈ کی برابری بھی کر لی ہے۔ وہ ہندستان کے دوسرے بلے باز بن گئے ہیں، جنہوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف ڈبل سنچری بنائی ہے۔ یہ ان کا ہندوستان میں پہلا ٹیسٹ میچ ہے۔ اس طرح انہوں نے ہندستان میں کھیلے گئے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میچ میں نہ صرف سنچری، بلکہ ڈبل سنچری جما دی۔

روہت اور مینک۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔
روہت اور مینک۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔


روہت اور مینک نے پہلے وکٹ کے لئے 317 رن کی ساجھےداری کی۔ ہندستانی ٹیسٹ تاریخ میں تیسری بار ایسا ہوا ہے کہ ہندستان کے لئے اوپننگ جوڑی نے 300 سے اوپر کی شراکت کی ہے۔ وینو مانكڈ اور پنکج رائے نے 1956 میں چنئی میں نیوزی لینڈ کے خلاف اوپننگ شراکت میں 413 رنز اور سہواگ اور راہل دراوڑ نے 2006 میں پاکستان کے خلاف لاہور میں پہلے وکٹ کے لئے 410 رنز جوڑے تھے۔یہ ہندستان کی جنوبی افریقہ کے خلاف کسی بھی وکٹ کے لئے سب سے بڑی شراکت ہے۔ اس سے پہلے سہواگ اور دراوڑ نے 2008 میں چنئی میں دوسرے وکٹ کے لئے 268 رنز جوڑے تھے۔ دونوں اوپنروں نے کل 391 رن بنائے جو کسی ٹیسٹ اننگز میں اوپنروں کا تیسرا سب سے زیادہ اسکور ہے۔اپنی شراکت کے دوران دونوں بلے بازوں نے چھکوں کا انوکھا ریکارڈ بنا ڈالا۔ روہت اور مینک نے پہلی اننگز کے دوران کل 12 چھکے لگائے۔ اس میں سے روہت کے بلے سے 6 چھکے اور مینک کے بیٹ سے 6 چھکے نکلے۔ اس سے پہلے سال 1994 اور 2009 میں سری لنکا کے خلاف ہندستانی اوپنرس نے 8-8 چھکے لگائے تھے۔

روہت اپنی ڈبل سنچری سے جب 24 رن دور تھے کہ تبھی لیفٹ آرم اسپنر کیشو مہاراج کو ہٹ کرنے کی کوشش میں اسٹمپ ہو گئے۔ ہندوستان کو دوسرا جھٹکا جلد لگ گیا جب پجارا کو تیز گیند باز ورنون فلینڈر نے بولڈ کر دیا۔ پجارا نے 17 گیندوں میں چھ رن بنائے۔ مینک اور وراٹ نے تیسرے وکٹ کے لئے 53 رن کی ساجھےداری کی۔ وراٹ کو سینرن متھوسامي نے اپنی ہی گیند پر کیچ کیا۔ ہندوستانی کپتان نے 40 گیندوں پر چار چوکوں کی مدد سے 20 رن بنائے۔کیشو مہاراج نے رہانے اور وهاري کے وکٹ بھی لئے جبکہ لیفٹ آرم اسپنر ڈین ایلگر نے مینک کا قیمتی وکٹ لیا۔ ساہا کو ڈین پئٹ نے آؤٹ کیا۔ جڈیجہ 46 گیندوں میں ایک چھکے کی مدد سے 30 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔ مہاراج نے 55 اوور کی میراتھن بولنگ میں 189 رن دے کر تین وکٹ لئے جبکہ فلینڈر، پئٹ، متھوسامي اور ایلگر کو ایک ایک وکٹ ملا۔
First published: Oct 03, 2019 07:42 PM IST