اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ’ہندوستان کے عوام پاکستان کو ہندوستان میں کرکٹ کھیلتے دیکھنا چاہتے ہیں‘ شاہد آفریدی

    شاہد آفریدی (PIC: Shahid Afridi/Instagram)

    شاہد آفریدی (PIC: Shahid Afridi/Instagram)

    شاہد آفریدی نے کہا کہ ہندوستانی شائقین سرحد پار سے آنے والے کرکٹرز کو خوش آمدید کہنا چاہیں گے کیونکہ وہ بڑے پرستار ہیں۔ آفریدی نے کریک پاکستان ڈاٹ کام کے حوالے سے کہا کہ ’’پاکستان اور ہندوستان کے تعلقات ہمیشہ کرکٹ کی وجہ سے بہتر ہوئے ہیں‘‘۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Pakistan
    • Share this:
      پاکستان کے سابق کرکٹر شاہد آفریدی (Shahid Afridi) نے کہا ہے کہ ہندوستانی شائقین پاکستانی کرکٹرز کو جلد از جلد پاکستان کو ہندوستان میں کرکٹ کھیلتے دیکھنا چاہتے ہیں کیونکہ دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات تقریباً دس سال سے معطل ہیں۔ پاکستان نے آخری بار جنوری 2013 میں دو طرفہ سیریز کے لیے ہندوستان کا دورہ کیا تھا اور دونوں ٹیمیں صرف ایک بار ہندوستان میں کھیلی ہیں جو کہ کولکاتہ کے مشہور ایڈن گارڈنز میں 2016 کے ٹی 20 ورلڈ کپ میں ہوا تھا۔

      سابق کرکٹر شاہد آفریدی نے کہا کہ ہندوستانی شائقین سرحد پار سے آنے والے کرکٹرز کو خوش آمدید کہنا چاہیں گے کیونکہ وہ بڑے پرستار ہیں۔ آفریدی نے کریک پاکستان ڈاٹ کام کے حوالے سے کہا کہ ’’پاکستان اور ہندوستان کے تعلقات ہمیشہ کرکٹ کی وجہ سے بہتر ہوئے ہیں‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستانی پاکستان کو ہندوستان میں کرکٹ کھیلتا دیکھنا چاہتے ہیں۔ آفریدی کے بیانات 2023 کے ایشیا کپ کے دوران دونوں بورڈز کی گردن زدنی ہونے کے بعد سامنے آئے ہیں اور یہ سب اس وقت شروع ہوا جب بی سی سی آئی کے سیکریٹری جے شاہ نے اکتوبر میں اس بات کی تصدیق کی تھی کہ وہ اپنی ٹیم کو ٹورنامنٹ کے لیے پاکستان نہیں بھیجیں گے۔

      اس نے پی سی بی کے سربراہ رمیز راجہ کو ٹائٹ فار ٹاٹ انداز میں جواب دینے پر اکسایا کیونکہ انہوں نے کہا کہ اگر بی سی سی آئی نے اپنا موقف تبدیل نہیں کیا تو وہ 2023 کے ون ڈے ورلڈ کپ سے دستبردار ہوجائیں گے۔ شاہد آفریدی نے چیئرمین پی سی بی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ رمیض راجہ جس طرح بول رہے تھے، میں اسے سن کر حیران رہ گیا۔ پاکستان کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے انگلینڈ کے خلاف جاری پہلے ٹیسٹ کے لیے راولپنڈی کی پچ کے بارے میں پی سی بی کے چیئرمین رمیض راجہ کے تبصرے پر تنقید کی۔ میچ کے پہلے دن پچ کو جانچ پڑتال کا سامنا کرنا پڑا جہاں انگلینڈ نے زوردار انداز میں 500 سے زیادہ رنز بنائے کیونکہ پاکستانی باؤلرز نے جوابی حملہ کرنے والی بلے بازی کے نقطہ نظر کے خلاف بری طرح جدوجہد کی۔

      یی بھی پڑھیں 

      راجہ نے ایک چونکا دینے والا بیان دیا کہ پاکستان نے ابھی تک ٹیسٹ میچ کی مثالی پچ بنانے کے ضابطے کو نہیں توڑا ہے۔ آفریدی چیئرمین پی سی بی کے تبصروں سے متاثر نہیں ہوئے اور کہا کہ ملک طویل عرصے سے بین الاقوامی میچوں کی میزبانی کر رہا ہے اور راجہ کے بیان نے انہیں چونکا دیا۔

      انھوں نے کہا کہ جس طرح رمیض بول رہے تھے، میرا مطلب ہے کہ میں ان کی بات سن کر حیران رہ گیا کہ ہم اس طرح کے ٹریک نہیں بنا سکتے۔ اتنے عرصے سے پاکستان میں انٹرنیشنل میچز ہو رہے ہیں لیکن پھر ہم کہتے ہیں ایسی چیزیں نہیں ہونا چاہیے۔ آفریدی نے سماء ٹی وی کو بتایا کہ وہ ایک ٹرننگ ٹریک چاہتے ہیں جو مجھے لگتا ہے کہ اس موسم میں یہ کچھ بڑا ہوتا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: