உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    INDvsNZ: راہل دراوڑ اور اننگ دکلیئر کرنے کے تین تنازعہ: پلیئر، کپتان اور اب کوچ کے طور پر، یہاں دیکھیں پورا معاملہ

    ہندوستان کانپور ٹسٹ نہیں جیت سکا اور اس کے پیچھے تاخیر سے اننگ ڈکلیئر کرنے کو وجہ بتایا جا رہا ہے۔ (تصویر: اے پی)

    ہندوستان کانپور ٹسٹ نہیں جیت سکا اور اس کے پیچھے تاخیر سے اننگ ڈکلیئر کرنے کو وجہ بتایا جا رہا ہے۔ (تصویر: اے پی)

    India vs New Zealand: سچن تندولکر تک نے اپنی بایو گرافی میں راہل دراوڑ (Rahul Dravid and Innings declaration) کے ایسے فیصلے کا تفصیل سے ذکر کیا ہے۔ 100 سنچری لگانے والے سچن تندولکر نے یہ سمجھانے کی کوشش کی ہے کہ راہل دراوڑ نے کیسے اور کیا غلطی کی۔ ہم یہاں ایسے تین میچوں کا ذکر کر رہے ہیں، جب راہل دراوڑ کھلاڑی، کپتان اور کوچ کے طور پر اننگ ڈکلیئر کرنے کے فیصلے میں شامل رہے اور ان کی سوچ بدلتی رہی۔ ان تین میں سے ہندوستان ایک ہی میچ جیت پایا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ہندوستان کانپور ٹسٹ (Kanpur Test) میں صرف ایک وکٹ سے جیت سے دور رہ گیا۔ اس کے بعد سب سے زیادہ بحث اس بات پر ہوئی کہ کیا ٹیم انڈیا (Team India) نے اننگ ڈکلیئر کرنے میں تاخیر کردی تھی؟ اس بحث کے مرکز میں کپتان اجنکیا رہانے (Ajinkya Rahane) سے زیادہ کوچ راہل دراوڑ (Rahul Dravid) تھے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ جو راہل دراوڑ سے دور رہنے کے لئے جانے جاتے ہیں، وہ اننگ ڈکلیئر کرنے سے متعلق بحث ہونے پر اکثر مرکز میں آجاتے ہیں۔ اپنے کھیل میں تسلسل کے لئے مشہور رہے راہل دراوڑ کا نظریہ اننگ ڈکلیئر کرنے میں بدلتے جاتے ہیں۔ کانپور میں کھیلے گئے ہندوستان - نیوزی لینڈ ٹسٹ میچ میں بھی یہی ہوا۔

      سچن تندولکر تک نے اپنی بایو گرافی میں راہل دراوڑ کے ایسے فیصلے کا تفصیل سے ذکر کیا ہے۔ 100 سنچری لگانے والے سچن تندولکر نے یہ سمجھانے کی کوشش کی ہے کہ راہل دراوڑ نے کیسے اور کیا غلطی کی۔ ہم یہاں ایسے تین میچوں کا ذکر کر رہے ہیں، جب راہل دراوڑ کھلاڑی، کپتان اور کوچ کے طور پر اننگ ڈکلیئر کرنے کے فیصلے میں شامل رہے اور ان کی سوچ بدلتی رہی۔ ان تین میں سے ہندوستان ایک ہی میچ جیت پایا۔

      3 عظیم کرکٹروں نے مانا کانپور میں ہوئی تاخیر

      سب سے پہلے کانپور، ٹسٹ میچ کی بات، جو راہل دراوڑ کے لئے بطور کوچ پہلا ٹسٹ میچ بھی تھا۔ ہندوستان نے نیوزی لینڈ کے خلاف اس میچ کے چوتھے دن تب اننگ ڈکلیئر کی، جب صرف 4 اوور کا کھیل باقی تھا۔ اس وجہ سے ہندوستان کو آخری اوور میں 98 اوور کی گیند بازی کا موقع ہی مل پایا۔ ہندوستان نے اس دوران نیوزی لینڈ کے 9 وکٹ حاصل کئے، لیکن آخری جوڑی نہیں توڑ پایا۔ اس کے بعد سے ہی یہ بحث زوروں پر رہی کہ کیا ہندوستان نے اس دوران نیوزی لینڈ کے 9 وکٹ جھٹکے، لیکن آخری جوڑی نہیں توڑ پایا۔ اس کے بعد سے ہی یہ بحث زوروں پر رہی کہ کیا ہندوستان نے تاخیر سے اننگ ڈکلیئر کی۔ میچ کے دوران اور بعد میں بھی اسٹار اسپورٹس پر کمنٹری کر رہے وی وی ایس لکشمن، عرفان پٹھان اور آکاش چوپڑا تینوں ہی اس بات پر متفق تھے کہ ہندوستان نے تاخیر کردی ہے۔ عرفان پٹھان نے تو یہاں تک کہا کہ اگر وراٹ کوہلی کپتان ہوتے تو شاید وہ پہلے اننگ ڈکلیئر تاکہ گیند بازوں کو وکٹ لینے کا زیادہ وقت مل پاتا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: