ہوم » نیوز » اسپورٹس

IPL 2020: پلے آف میں اب بھی پہنچ سکتی ہے دھونی کی ٹیم، یہ ہے پورا معاملہ

IPL 2020 Playoffs: مہندرسنگھ دھونی (MS Dhoni) کی ٹیم چنئی سپرکنگس (Chennai Super Kings) اب بھی پلے آف میں پہنچ سکتی ہے۔ آئیے آئی پی ایل کے الگ الگ حالات کے ذریعہ اسے سمجھنے کی کوشش کرتے ہیں۔

  • Share this:
IPL 2020: پلے آف میں اب بھی پہنچ سکتی ہے دھونی کی ٹیم، یہ ہے پورا معاملہ
IPL 2020: پلے آف میں اب بھی پہنچ سکتی ہے دھونی کی ٹیم

نئی دہلی: اس سال کے آئی پی ایل (IPL 2020) میں 40 میچوں کے بعد پلے آف (Playoffs) کی ریس بے حد دلچسپ ہوگئی ہے۔ تین ٹیمیں- دہلی کیپٹلس، رائل چیلنجرس بنگلور اور ممبئی انڈینس کا پلے آف میں پہنچنا تقریباً طے لگ رہا ہے، لیکن چوتھی ٹیم کونسی ہوگی، اس کو لے کر تعطل برقرار ہے۔ ایسے میں ہر کسی کی نگاہیں چنئی سپرکنگس (Chennai Super Kings) پر مرکوز ہیں۔ دھونی کی کپتانی میں اس ٹیم نے ہر بار آئی پی ایل کے پلے آف کے لئے کوالیفائی کیا ہے، لیکن اس بار دھونی کی ٹیم مشکل میں پھنس گئی ہے۔ اس بار فی الحال چنئی سپرکنگس کی ٹیم پوائنٹس ٹیبل (Points Table) میں آخری مقام پر ہے۔ ساتھ ہی نیٹ رن ریٹ بھی مائنس میں ہے۔ ایسے میں سوال اٹھتا ہے کہ کیا دھونی (Dhoni) کی ٹیم اب بھی پلے آف میں پہنچ سکتی ہے۔ آئیے آئی پی ایل کے الگ الگ حالات کے ذریعہ اسے سمجھنےکی کوشش کرتے ہیں۔


چنئی کے باقی بڑے میچ


چنئی سپرکنگس کو ابھی 4 میچ مزید کھیلنا ہے۔ یہ میچ ہے ممبئی انڈینس، رائل چیلنجرس بنگلور اور کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف۔


چنئی سپرکنگس کو باقی بچے چاروں میچ میں جیت درج کرنی ہوگی۔ چنئی کو یہ بھی امید کرنی ہوگی کہ موجودہ ٹاپ تین ٹیموں (دہلی کیپٹلس، رائل چیلنجرس بنگلور اور ممبئی انڈینس) اپنے تمام باقی میچ جیتتی رہیں۔ ساتھ ہی ان تینوں ٹیموں کے آپس میں ہونے والے مقابلے سے بھی چنئی سپرکنگس کو کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ چنئی سپرکنگس کی ٹیم چوتھے نمبر پر پہنچ سکتی ہے، اگر کے کے آر باقی بچے 4 میں سے صرف ایک میچ جیتے۔

دھونی کی کپتانی میں اس ٹیم نے ہر بار آئی پی ایل کے پلے آف کے لئے کوالیفائی کیا ہے، لیکن اس بار دھونی کی ٹیم مشکل میں پھنس گئی ہے۔ اس بار فی الحال چنئی سپرکنگس کی ٹیم پوائنٹس ٹیبل (Points Table) میں آخری مقام پر ہے۔
دھونی کی کپتانی میں اس ٹیم نے ہر بار آئی پی ایل کے پلے آف کے لئے کوالیفائی کیا ہے، لیکن اس بار دھونی کی ٹیم مشکل میں پھنس گئی ہے۔ اس بار فی الحال چنئی سپرکنگس کی ٹیم پوائنٹس ٹیبل (Points Table) میں آخری مقام پر ہے۔


اس کے علاوہ چنئی سپرکنگس کو خدا سے یہ بھی دعا کرنی ہوگی کہ سن رائزرس حیدرآباد، کنگس الیون پنجاب اور راجستھان رائلس کو دو سے زیادہ میچوں میں جیت نہ ملے۔ ایسے حالات میں چنئی کے کھاتے میں 14 پوائنٹ آجائیں گے اور وہ بغیر نیٹ رن ریٹ کے ساتھ پلے آف میں پہنچ جائے گی۔

نیٹ رن ریٹ سے فیصلہ ہونے پر

ایک اور وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ چنئی سپرکنگس کی ٹیم نیٹ رن ریٹ کی بنیاد پر کوالیفائی کرجائے۔ کئی ٹیموں کے 14 پوائنٹ ہوسکتے ہیں۔ ایسے میں چنئی سپرکنگس کو نیٹ رن ریٹ کو بہتر کرنے کے لئے بڑے فرق  سے کم از کم دو میچ جیتنے ہوں گے۔ باقی بچے سارے میچ بھی جیتنے ہوں گے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 23, 2020 10:13 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading