உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IPL 2021: درمیان میں آر سی بی کی کپتانی سے ہٹائے جاسکتے ہیں وراٹ کوہلی

    IPL 2021: درمیان میں آر سی بی کی کپتانی سے ہٹایا جاسکتا ہے وراٹ کوہلی

    IPL 2021: درمیان میں آر سی بی کی کپتانی سے ہٹایا جاسکتا ہے وراٹ کوہلی

    IPL 2021: ایک سابق ہندوستانی کرکٹر نے نام نہ شائع کرنے کی شرط پر بتایا کہ ایسا لگتا ہے کہ وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کو رائل چیلنجرس بنگلور (RCB) کی کپتانی سے درمیان میں ہی ہٹایا جاسکتا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: ایسا امکان ہے کہ وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کو انڈین پریمیئر لیگ (IPL 2021) کے چل رہے متحدہ عرب امارات کے درمیان میں رائل چیلنجرس بنگلور کے کپتان کے عہدے سے ہٹایا جا سکتا ہے۔ یہ کہنا ہے ایک سابق ہندوستانی کرکٹر کا۔ پیر کو ابو ظہبی میں کولکاتا نائٹ رائیڈرس (کے کے آر) کے خلاف رائل چیلنجرس بنگلور (KKR vs RCB) کے کپتان وراٹ کوہلی کی خود سپردگی کو دیکھنے کے بعد یہ بات واضح طور پر دکھائی دے رہی ہے۔ ایک سابق ہندوستانی کرکٹر نے نام نہ شائع کرنے کی شرط پر بتایا کہ ایسا لگتا ہے کہ وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کو رائل چیلنجرس بنگلور (RCB) کی کپتانی سے درمیان میں ہی ہٹایا جاسکتا ہے۔

      دراصل کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف پہلے بلے بازی منتخب کرنے کے بعد وراٹ کوہلی 4 گیندوں میں 5 رن بناکر تیز گیند باز پرسدھ کرشنا کا شکار بنے۔ یہ میچ کا محض دوسرا اوور تھا۔ 32 سال کا یہ بلے باز پرسدھ کرشنا کی ایک اندر آتی ہوئی گیند پر چوک گیا اور گیند وراٹ کوہلی کے پیڈ سے لگی۔ امپائر نے انہیں ایل بی ڈبلیو آوٹ قرار دیا، جس پر وراٹ کوہلی نے ریویو لیا، لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا۔

      وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کو انڈین پریمیئر لیگ (IPL 2021) کے چل رہے متحدہ عرب امارات کے درمیان میں رائل چیلنجرس بنگلور کے کپتان کے عہدے سے ہٹایا جا سکتا ہے۔
      وراٹ کوہلی (Virat Kohli) کو انڈین پریمیئر لیگ (IPL 2021) کے چل رہے متحدہ عرب امارات کے درمیان میں رائل چیلنجرس بنگلور کے کپتان کے عہدے سے ہٹایا جا سکتا ہے۔


      یہاں تک کہ وراٹ کوہلی کی باڈی لینگویج بھی ویسا نہیں رہی، جیسی پورے میچ کے دوران ہوتی تھی۔ وہ حقیقت میں ایک ایسے کھلاڑی کے طور پر ابھر رہے تھے، جس نے آئی پی ایل 2021 کے بعد آر سی بی کے کپتان کے طور پر عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان کے اس طرح کے برتاو پر ماہرین کی نظر بھی گئی۔ گوتم گمبھیر نے بھی اس طرف دھیان دیا اور ان کے اس فیصلے کے وقت پر سوال کھڑا کیا۔ گوتم گمبھیر کا کہنا ہے کہ اگر وراٹ کوہلی کو ایسا کچھ کرنا ہوتا تو وہ آئی پی ایل کے بعد ایسا کرسکتے تھے۔

      ایک اور خراب کھیل اور آپ فوراً آر سی بی کی کپتانی میں تبدیلی دیکھ سکتے ہیں‘

      کرکٹ نیس میں شائع خبر کے مطابق، کچھ کرکٹروں نے یہ بھی مشورہ دیا کہ ٹیم بے وقت اعلان سے ’پریشان‘ لگ رہی تھی۔ ایک سابق ہندوستانی کرکٹر نام نہ شائع کرنے کی شرط پر بتایا کہ ایسا لگتا ہے کہ وراٹ کوہلی کو آر سی بی کی کپتانی سے ’درمیان میں‘ ہٹایا جاسکتا ہے۔ سابق کرکٹر نے کہا، ’دیکھئے وہ کس طرح کولکاتا نائٹ رائیڈرس کے خلاف کھیل رہے تھے۔ بس انجان! ایسا لگتا ہے کہ وہ اس وقت بہت جدوجہد کر رہے ہیں۔ ایسا امکان ہے کہ انہیں سیزن کے درمیان میں ہی ہٹایا جاسکتا ہے۔ یہ پہلے بھی دیگر ٹیموں کے ساتھ ہوا ہے، جیسے کے کے آر میں دنیش کارتک اور سن رائزرس حیدرآباد میں ڈیوڈ وارنر۔ انہیں یا تو ہٹا دیا گیا یا وہ خود ہی بیچ راستے سے ہٹ گئے۔ تو یہ آر سی بی میں بھی ہوسکتا ہے... کے کے آر اور آر سی بی کا میچ دیکھنے کے بعد مجھے ایسا لگ رہا ہے۔ ایک اور خراب کھیل اور آپ فوراً آر سی بی کی کپتانی میں تبدیلی دیکھ سکتے ہیں‘۔

      وراٹ کوہلی کو سال 2013 کے آئی پی ایل سیزن سے پہلے اس وقت کے سبکدوش کپتان ڈینیل ویٹوری کے جانشین کے طور پر آر سی بی کا کپتان مقرر کیا گیا تھا۔
      وراٹ کوہلی کو سال 2013 کے آئی پی ایل سیزن سے پہلے اس وقت کے سبکدوش کپتان ڈینیل ویٹوری کے جانشین کے طور پر آر سی بی کا کپتان مقرر کیا گیا تھا۔


      وراٹ کوہلی کو سال 2013 کے آئی پی ایل سیزن سے پہلے اس وقت کے سبکدوش کپتان ڈینیل ویٹوری کے جانشین کے طور پر آر سی بی کا کپتان مقرر کیا گیا تھا۔ تب سے ٹیم نے اس کے ماتحت 132 میچوں میں سے 62 میں غیر اطمینان بخش جیت درج کی، جس میں 66 ہار اور 4 بغیر نتیجے کے رہے۔

      وراٹ کوہلی کی جگہ کون لے سکتا ہے؟

      وراٹ کوہلی کی جگہ سینئر کھلاڑی اے بی ڈیویلیئرس ممکنہ طور پر مناسب دعویدار ہوں گے۔ ٹیم میں ان کی کافی عزت ہے، لیکن اس بات کا بھی امکان ہے کہ وہ اس تجویز کو قبول نہ کریں۔ ٹیم میں سینئرٹی کی بنیاد پر یجویندر چہل کا نام بھی زیر غور ہوسکتا ہے۔ یجویندر چہل میں آر سی بی کے لئے اہم وکٹ حاصل کرنے والے گیند باز بھی رہے ہیں۔ انہوں نے 106 میچوں میں 125 وکٹ حاصل کئے ہیں، جو انہوں نے اب تک فرنچائزی کے لئے کھیلے ہیں۔ شرے یس ایئر، رشبھ پنت اور سنجو سیمسن جیسے نوجوان کپتانوں کی تقرری کرنے کے حال کے دنوں میں دیکھے گئے رجحان کے بعد دیو دت پڈکل کا نام بھی لیا جا رہا ہے۔ کرناٹک کا یہ بلے باز گزشتہ کچھ سیشن میں آر سی بی کے لئے سب سے زیادہ رن بنانے والا کھلاڑی رہا ہے اور اسے وراٹ کوہلی کے پسندیدہ میں سے ایک مانا جاتا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: