உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    MI vs LSG Match Report: ممبئی نے پہلی بار ہارے مسلسل 6 مقابلے، روہت شرما کی سب سے خراب کارکردگی، لکھنو نے جیت حاصل کی

     آئی پی ایل کے 15ویں سیزن میں ممبئی انڈینس (Mumbai Indians) کو مسلسل چھٹی شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ ممبئی کے بریبورن اسٹیڈیم میں کھیلے گئے مقابلے میں لکھنو سپر جائنٹس کی ٹیم نے ممبئی کو 18 رنوں سے ہرایا۔

    آئی پی ایل کے 15ویں سیزن میں ممبئی انڈینس (Mumbai Indians) کو مسلسل چھٹی شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ ممبئی کے بریبورن اسٹیڈیم میں کھیلے گئے مقابلے میں لکھنو سپر جائنٹس کی ٹیم نے ممبئی کو 18 رنوں سے ہرایا۔

    آئی پی ایل کے 15ویں سیزن میں ممبئی انڈینس (Mumbai Indians) کو مسلسل چھٹی شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ ممبئی کے بریبورن اسٹیڈیم میں کھیلے گئے مقابلے میں لکھنو سپر جائنٹس کی ٹیم نے ممبئی کو 18 رنوں سے ہرایا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: آئی پی ایل کے 15ویں سیزن میں ممبئی انڈینس (Mumbai Indians) کو مسلسل چھٹی شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ ممبئی کے بریبورن اسٹیڈیم میں کھیلے گئے مقابلے میں لکھنو سپر جائنٹس کی ٹیم نے ممبئی کو 18 رنوں سے ہرایا۔ کے ایل راہل (KL Rahul) کی سنچری اننگ کی بدولت لکھنو نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے ممبئی انڈینس کے سامنے 200 رنوں کا ہدف رکھا۔ اس کے جواب میں ممبئی کی ٹیم مقررہ 20 اوور میں 9 وکٹ کے نقصان پر 181 رن ہی بناسکی۔ آئی پی ایل کی تاریخ میں ایسا پہلی بار ہوا ہے، جب ممبئی کی ٹیم کو مسلسل چھ میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ممبئی انڈینس کو پانچ بار آئی پی ایل چمپئن بنانے والے روہت شرما کی بھی یہ سب سے خراب کارکردگی ہے۔

      کے ایل راہل نے 100ویں آئی پی ایل میچ میں کیا کمال

      اس سے قبل کے ایل راہل کی ناٹ آوٹ سنچری شراکت کی بدولت لکھنو سپر جائنٹس نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے چار وکٹ پر 199 رن بنائے۔ اپنا 100واں آئی پی ایل میچ کھیل رہے کے ایل راہل نے 60 گیندوں کی ناٹ آوٹ اننگ میں 9 چوکے اور 5 چھکے لگائے۔ اس دوران انہیں سلامی بلے باز کوئنٹن ڈی کاک (13گیندوں میں 24 رن) اور تجربہ کار منیش پانڈے (29 گیندوں میں 38 رن) کا اچھا ساتھ ملا۔ انہوں نے کوئنٹن ڈی کاک کے ساتھ پہلے وکٹ کے لئے 52 جبکہ منیش پانڈے کے ساتھ دوسرے وکٹ کے لئے 72 رن جوڑے۔

      ممبئی انڈینس کے فیلڈروں نے 10 بار کیچ چھوڑا

      اچھی بلے بازی کے علاوہ ممبئی کے فیلڈروں نے بھی لکھنو کا بھرپور ساتھ دیا۔ میچ کے دوران تقریباً 10 بار ایسا ہوا، جب گیند ان کے ہاتھوں سے جھٹک گئی۔ کے ایل راہل اور ڈی کاک نے پہلے بلے بازی کی دعوت ملنے کے بعد ٹیم کو تیز شروعات دلائی۔ ممبئی کے لئے ڈیبیو کر رہے فیبین ایلن (46 رن پر ایک وکٹ) کا استقبال ڈی کاک نے چھکے سے کیا، لیکن اگلی گیندپر ایل بی ڈبلیو آوٹ ہوگئے۔ منیش پانڈے نے ٹیم میں واپسی کا جشن پہلی گیند پر چوکا لگاکر منایا، جس سے پاور پلے میں لکھنو کا اسکور ایک وکٹ پر 57 رن ہوگیا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      IPL 2022: ممبئی انڈینس کے ’کھلاڑی‘ کر رہے ہیں بہترین کارکردگی، لیکن ٹیم اب تک پھسڈی

      کے ایل راہل نے اس سیزن کی دوسری سنچری لگائی

      کے ایل راہل نے مروگن اشون اور جے دیو انادکٹ کے خلاف چھکا لگاکر رن کی رفتار کو تیز کیا، جس سے ٹیم نے 12ویں اوور میں رنوں کی سنچری مکمل کی۔ انہوں نے اور منیش پانڈے نے 13ویں اوور میں ملس کے خلاف دو دو چوکے لگائے۔ منیش پانڈے خطرناک ہوتے اس سے پہلے ہی مروگن اشون نے انہیں بولڈ کرکے پویلین کی راہ دکھائی۔ مارکس اسٹوئنس (10 رن) نے کریز پر اترنے کے بعد پہلی ہی گیند پر چھکا لگایا۔ کے ایل راہل نے اس کے بعد ایلن کے اوور میں دو چھکے اور ایک چوکا لگایا، جس سے ممبئی نے 15 اوور میں 150 رن پورے کئے۔ بمراہ کا اگلا اوور کفایتی رہا۔ انہوں نے چار اوور میں صرف 24 رن دیئے۔

      جے دیو انادکٹ نے اس کے بعد اسٹوئنس (10) اور دیپک ہڈا (15) کو 18ویں اور 20ویں اوور میں آوٹ کیا۔ اس درمیان کے ایل راہل نے 19ویں اوور میں ملس کے خلاف چوکا لگاکر ہڈا کو اسٹرائیک دیا، جنہوں نے گیند کو باونڈری لائن کے باہر بھیج دیا۔ اس کے بعد کے ایل راہل نے چوکا لگاکر 56 گیندوں میں سیزن کی دوسری سنچری مکمل کی۔ لکھنو نے اس اوور سے 22 رن بٹورے، جس سے ملس نے تین اوور میں بغیر کامیابی کے 54 رن لٹائے۔ جے دیو انادکٹ نے آخری اوور میں صرف چار رن دے کر لکھنو کی ٹیم کو 200 کے اسکور تک پہنچنے سے روک دیا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: