உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    IPL 2022: ڈریسنگ روم میں بیٹھ کر کوئی فارم حاصل نہیں ہوتی، وراٹ کوہلی کے بریک پر گواسکر کی دو ٹوک

    IPL 2022: سنیل گواسکر نے وراٹ کوہلی کو بریک دیئے جانے سے متعلق بڑی بات کہی ہے۔ (Instagram)

    IPL 2022: سنیل گواسکر نے وراٹ کوہلی کو بریک دیئے جانے سے متعلق بڑی بات کہی ہے۔ (Instagram)

    IPL 2022: وراٹ کوہلی اب تک بڑی اننگ نہیں کھیل سکے ہیں۔ وہ سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف تیسری بار گولڈن ڈک کا شکار ہوئے۔ وراٹ کوہلی نے آئی پی ایل کے 12 میچوں میں 111 کے اسٹرائیک ریٹ سے 216 رن بنائے ہیں۔ انہوں نے اس سیزن میں صرف ایک نصف سنچری لگائی ہے اور 6 سنگل ڈیزٹ اسکور ان کے نام ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ٹیم انڈیا کے سابق کپتان وراٹ کوہلی کا آئی پی ایل 2022 میں بھی بلا خاموش ہے۔ وہ رنوں کے لئے جدوجہد کر رہے ہیں۔ ایک دن پہلے سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف وراٹ کوہلی ایک بار پھر پہلی ہی گیند پر آوٹ ہوگئے۔ یہ اس سیزن میں تیسرا موقع تھا، جب وراٹ کوہلی گولڈن ڈک کا شکار ہوئے۔ وراٹ کوہلی کے بغیر کھاتہ کھولے پویلین لوٹنے کے بعد دوبارہ انہیں آرام دیئے جانے کا مطالبہ ہونے لگا ہے۔ تاہم سابق، ہندوستانی کپتان سنیل گواسکر اس سے اتفاق نہیں رکھتے۔ الٹا، انہوں نے تو وراٹ کوہلی کو وارننگ تک دے ڈالی۔

      وراٹ کوہلی نے آئی پی ایل کے 12 میچوں میں 111 کے اسٹرائیک ریٹ سے 216 رن بنائے ہیں۔ انہوں نے اس سیزن میں صرف ایک نصف سنچری لگائی ہے اور 6 سنگل ڈیزٹ اسکور ان کے نام ہیں۔ یہ کسی بھی آئی پی ایل میں ان کی سب سے خراب کارکردگی ہے۔ اسی وجہ سے انہیں بریک دیئے جانے کا مطالبہ اٹھ رہا ہے۔ حال ہی میں سابق ہندوستانی چیف کوچ روی شاستری نے بھی یہی کہا تھا کہ وراٹ کوہلی بری طرح پک چکے ہیں اور انہیں اب کچھ وقت کے لئے بریک دیا جانا چاہئے۔ کئی عظیم کرکٹروں نے بھی روی شاستری کے سُر میں سُر ملاتے ہوئے وراٹ کوہلی کو آرام دیئے جانے کی وکالت کی تھی، لیکن سنیل گواسکر اس کے خلاف ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      IPL 2022: عمران ملک کی رفتار کو نظر انداز کرنا مشکل، آئی پی ایل کا ادا کرنا چاہئے شکریہ

      ڈریسنگ روم میں بیٹھنے سے فارم حاصل نہیں ہوگا: گواسکر

      سنیل گواسکر نے وراٹ کوہلی کو لے کر اسٹار اسپورٹس پر کہا، ’بریک کا مطلب یہ نہیں ہے کہ وہ (وراٹ کوہلی) ہندوستان کے میچوں کو یاد کریں گے۔ ہندوستان کے لئے کھیلنا ان کی پہلی اور اولین ترجیح ہونی چاہئے۔ یہ بالکل صاف اور سیدھا ہے۔ میرا ماننا ہے کہ اگر کھیلیں گے ہی نہیں، تو پھر کیسے کھوئی فارم حاصل کریں گے؟ چینج روم میں بیٹھے رہنے سے تو آپ کا فارم واپس نہیں آئے گا، جتنا زیادہ آپ کھیلیں گے، اتنا ہی زیادہ اس بات کا امکان ہے کہ آپ پرانے رنگ میں لوٹ آئیں‘۔

      ’ہم سب کوہلی کو رن بناتے ہوئے دیکھنا چاہتے ہیں‘

      سابق ہندوستانی کپتان نے مزید کہا، ’آپ پورے ہندوستان میں جاکر پوچھئے، جو بھی کرکٹ کو جانتا ہے اور اس کھیل کو فالو کرتا ہے تو سبھی یہی کہیں گے کہ ہمیں ہندوستان کے لئے وراٹ کوہلی کا فارم واپس چاہئے۔ تو آپ ٹیم انڈیا کے لئے کھیلنے سے تو بریک نہیں لے سکتے ہیں۔ آپ چاہتے ہیں کہ وراٹ کوہلی ہندوستان کے لئے رن بنانا شروع کریں۔ ہم سب یہی چاہتے ہیں۔ ہم سبھی اسے پھر سے بڑے رن بناتے ہوئے دیکھنا چاہتے ہیں‘۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: