ہوم » نیوز » اسپورٹس

جموں و کشمیر : کورونا دور میں بھی بیرونی ریاستوں سے آنے والا مزدور طبقہ اپنے کام میں ہے مصروف

Jammu and Kashmir News : جموں و کشمیر میں کورونا کے ڈر سے کافی تعداد میں لوگ لاک ڈاؤن ، کورونا کرفیو اور ویک اینڈ لاک ڈاؤن کے چلتے اپنے گھروں میں ہی رہنا مناسب سمجھ رہے ہیں ، لیکن کچھ ایسے بھی لوگ ہیں اپنی زندگی بنا کسی ڈر خوف کے گزر بسر کر رہے ہیں ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : کورونا دور میں بھی بیرونی ریاستوں سے آنے والا مزدور طبقہ اپنے کام میں ہے مصروف
جموں و کشمیر : کورونا دور میں بھی بیرونی ریاستوں سے آنے والا مزدور طبقہ اپنے کام میں ہے مصروف

جموں و کشمیر: جموں و کشمیر میں بھی کورونا معاملات بڑھتے جا رہے ہیں ۔ لگاتار کورونا معاملات میں اضافہ نظر آرہا ہے ۔ جموں و کشمیر میں کورونا معاملات سے اموات میں بھی اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے ۔ اس کے باوجود جموں و کشمیر میں کئی ایسے لوگ موجود ہیں ، جو اپنی زندگی بنا کسی خوف کے بسر کر رہے ہیں ۔ جموں و کشمیر میں کورونا کے ڈر سے کافی تعداد میں لوگ لاک ڈاؤن ، کورونا کرفیو اور ویک اینڈ لاک ڈاؤن کے چلتے اپنے گھروں میں ہی رہنا مناسب سمجھ رہے ہیں ، لیکن کچھ ایسے بھی لوگ ہیں اپنی زندگی بنا کسی ڈر خوف کے گزر بسر کر رہے ہیں ۔ ان میں زیادہ تر لوگ بیرونی ریاستوں سے آئے ہوئے مزدور ہیں ، جو آج بھی جموں و کشمیر میں جاری تعمیراتی کاموں میں تمام کووڈ گائیڈ لائنس کو اپناتے ہوئے اپنا کام کر رہے ہیں ۔


جموں میں بھی بیرونی ریاستوں سے آئے ہوئے مزدور مختلف علاقوں میں چل رہے سرکاری اور غیر سرکاری تعمیرات کے کام کرتے ہوئے نظر آرہے ہیں ۔ اعداد و شمار کے مطابق تقریباً 10000 سے زائد بیرونی ریاستوں سے آئے ہوئے مزدور جموں کے کئی علاقوں میں کام کر رہے ہیں ۔ جموں اخنور نیشنل ہائی وے میں 4 لین کا کام تیزی سے چل رہا ہے ۔ وہاں بھی تقریباً 300 سے زائد مزدور اس وقت کام کر رہے ہیں ۔


بہار سے تعلق رکھنے والے مزدور یوگیش نے بتایا کہ وہ دسمبر ماہ سے جموں میں کام کر رہے ہیں ۔ جب وہ جموں میں آئے تھے ، تب کورونا کافی حد تک قابو میں تھا۔ تب وہ صبح 9 بجے سے شام 6 بجے تک کام کرتے تھے اور آج جب پورا ملک کورونا وبا سے جوجھ رہا ہے تو آج بھی وہ صبح 9 بجے سے شام 6 بجے تک کام کرتے ہیں ۔ اتراکھنڈ کے رہنے والے انکُش نامی مزدور نے بتایا کمپنی کے مالک نے ہمیں بلایا اور بتایا اگر آپ سرکار کی طرف سے دی گئی ہدایات پرعمل کریں گے ، تو آپ کو کورونا سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ آپ ماسک پہنا کریں ، سینیٹائزر استعمال کریں اور سوشل ڈسٹینسنگ کو مدنظر رکھتے ہوئےاپنا کام کریں ۔ ان ہی ہدایتوں پہ عمل کرتے ہوئے ہم اپنا کام بنا کسی خوف کے کر رہے ہیں ۔


بہار کے رہنے والے پیارے لال مزدور کا کہنا ہے کہ وہ بخوبی جانتے ہیں کہ کورونا وبا ہے ، لیکن ہمیں اس کے ساتھ جینا سیکھنا ہوگا ۔ اگر ہم کورونا کے ڈر سے کام کرنا چھوڑ دیں اور گھر میں بیٹھ جائیں تو اس سے ہم کورونا سے بھلے ہی بچ جائیں ، لیکن پیٹ کی آگ سے کیسے بچیں گے ۔ اس کے علاوہ جموں میں جو سرکاری کام چل رہے ہیں ، اگر ہم وہاں مزدوری پر نہ جائیں تو سرکار کے تعمیراتی کام کون کرے گا ۔ ہم پوری طرح سرکار کی دی گئی ہدایات پر عمل کر رہے ہیں اور اپنا کام کر رہے ہیں ۔

بیشتر مزدوروں کا کہنا ہے کہ جموں و کشمیر میں جتنے بھی سرکار کے تعمیراتی کام چل رہے ہیں ، اگر ہم کورونا کے ڈر سے گھروں میں بیٹھ جائیں ، تو سرکار کے تعمیراتی کام مکمل نہیں ہو پائیں گے ۔ ہمیں اب کورونا کے ساتھ جینا پڑے گا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 27, 2021 11:38 PM IST