உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہمیں پیسہ نہیں چاہئے، پلیز ہمارا استعمال کرلو، پاکستان کی ہار سے ناراض لیجنڈ کا پی سی بی پر نشانہ

    ایشیا کپ کے فائنل میں پاکستان کو سری لنکا کے ہاتھوں پر ہار جھیلنی پڑی تھی۔

    ایشیا کپ کے فائنل میں پاکستان کو سری لنکا کے ہاتھوں پر ہار جھیلنی پڑی تھی۔

    پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان جاوید میانداد نے اپنے ہی ملک کے کرکٹ بورڈ پر سابق عظیم کرکٹروں کو نظر انداز کرنے کا الزام لگایا ہے۔ اس عظیم کرکٹر نے کہا کہ ایشیا کپ میں ٹیم کی ہار کے بعد کہا کہ ہمارے پاس تجربہ اور خواہش ہے اور پاکستانی ٹیم کی بغیر پیسے لئے مدد کرنے کو تیار ہیں، لیکن پی سی بی کسی کو پوچھتی نہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستان کی ٹیم ایشیا کپ 2022 کے فائنل میں تو پہنچی تھی، لیکن خطاب جیتنے سے محروم رہ گئی۔ فائنل میں اسے سری لنکا نے 23 رنوں سے ہرا دیا۔ اس ہار کے ساتھ ہی اس کے 10 سال بعد ایشیا کپ جیتنے کا خواب بھی ادھورا ہی رہ گیا۔ پاکستان کی اس شکست سے سابق کپتان جاوید میاندان مایوس ہیں اور انہوں نے ایشیا کپ کے دوران ان کے جیسے پاکستان کے سابق کھلاڑیوں کا استعمال نہیں کرنے کے لئے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) پر تنقید کی ہے۔ جاوید میانداد نے پی سی بی پر پاکستان کے لیجنڈ کرکٹروں کو نظر انداز کرنے کا الزام لگایا ہے۔

      جاوید میانداد نے کرکٹ پاکستان سے کہا، ‘میرے جیسے لوگ یہاں بیٹھے ہیں۔ ذاتی طور پر، مجھے کچھ نہیں چاہئے، لیکن ہمارا استعمال کریں۔ میں نے ہمیشہ پاکستان کو پہلے رکھا ہے۔ آپ کے یہاں لوگ ہیں۔ ہمیں پیسہ نہیں چاہئے۔ مجھے یقین ہے کہ کھلاڑیوں کو میری موجودگی سے فائدہ ہوگا۔ میرے پاس کافی تجربہ ہے، جس طرح سے پاکستان ایشیا کپ کا فائنل ہاری، اس سے مجھے مایوسی ہوتی ہے‘۔

       جاوید میانداد نے کرکٹ پاکستان سے کہا، ‘میرے جیسے لوگ یہاں بیٹھے ہیں۔ ذاتی طور پر، مجھے کچھ نہیں چاہئے، لیکن ہمارا استعمال کریں۔ میں نے ہمیشہ پاکستان کو پہلے رکھا ہے۔

      جاوید میانداد نے کرکٹ پاکستان سے کہا، ‘میرے جیسے لوگ یہاں بیٹھے ہیں۔ ذاتی طور پر، مجھے کچھ نہیں چاہئے، لیکن ہمارا استعمال کریں۔ میں نے ہمیشہ پاکستان کو پہلے رکھا ہے۔


      کھلاڑیوں میں میچ کے حالات کی سمجھ نہیں: جاوید میانداد

      جاوید میانداد نے مزید کہا، ’یہ حقیقت میں شرمناک ہے۔ آپ کے یہاں اتنے سارے لوگ ہیں، کہاں ہے آپ کی قومیت؟ آپ کس پاکستان کی بات کر رہے ہیں‘؟ پاکستان کے لئے 124 ٹسٹ اور 233 ونڈے کھیلنے والے جاوید میانداد نے مشورہ دیا کہ وہ پاکستانی ٹیم کی مدد کرسکتے ہیں اور ان کا ماننا ہے کہ موجودہ کھلاڑیوں کے پاس میچ کے حالات کو سمجھنے کا شعور نہیں ہے‘۔

      میانداد نے مزید کہا، ’اگر میں وہاں ہوتا، تو میں انہیں وکٹ ہاتھ میں رکھنے اور صحیح وقت پر تیزی سے رن بنانے کو کہتا۔ میرے پاس تجربہ ہے، لیکن یہ بچے نہیں جانتے، بس میدان پر آتے ہی مارنا شروع کردیتے ہیں۔ انہیں نہیں معلوم کہ کس گیند باز کے خلاف آپ کو اٹیک کرنا ہے، انہیں نہیں معلوم کہ کب وکٹ پر ٹکے رہنا ہے اور کب کھیلنے کا انداز بدلنا ہے‘۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: