ہوم » نیوز » اسپورٹس

توکیا سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم بنیں گے پاکستان کے کوچ؟

پاکستان کے سابق سلامی بلے بازجاوید میاں داد نے کہا کہ جب دوسرے ممالک کے کھلاڑی وسیم اکرم کی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں توپاکستان میں انہیں یہ ذمہ داری کیوں نہیں دی جاسکتی۔

  • Share this:
توکیا سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم بنیں گے پاکستان کے کوچ؟
پاکستان کے سابق کپتان وسیم اکرم سے پوری دنیا کے کرکٹر گیند بازی کا گر سیکھتے ہیں۔

آئی سی سی عالمی کپ 2019 کےبعد سے پاکستان کرکٹ ٹیم میں تبدیلی کا دور جاری ہے۔ عالمی کپ میں ٹیم کی کارکردگی کولےکرآج دواگست کوجائزہ میٹنگ ہورہی ہے۔ حالانکہ خبریں تھیں کہ ٹیم کے کوچ مکی آرتھراپنی جگہ بچائے رکھ سکتے ہیں، لیکن اب پاکستان کے سابق عظیم بلے بازنےعظیم گیند بازاورسوئنگ کے سلطان وسیم اکرم کوٹیم کے چیف کوچ کےلئےسب سے بہترین اورموزوں دعویداربتا دیا ہے۔


جاوید میاں داد نے گھریلوکوچ کے نظریے کی مضبوطی سے حمایت کرتے ہوئے کہا کہ اس عہدے کے لئے وسیم اکرم کا نام سب سے بہترہے۔ ایک طرف جہاں پوری دنیا کے کرکٹ کھیلنے والے ملک وسیم اکرم کی صلاحیت اومہارت کا فائدہ اٹھا رہے ہیں، جبکہ اپنے ہی ملک پاکستان میں ہم خود ایسا کرنے میں ناکام رہے ہیں۔


جاوید میاں داد نے کہا کہ وسیم اکرم کےپاس ٹپس بہت بہترہے۔ ایسے میں جبکہ دوسرے ملک کے کھلاڑی ان سے بات کرکے مشورہ طلب کررہےہیں تو ہم کیوں نہیں اپنے سابق کرکٹروں کویہ ذمہ داری نہیں دے سکتے؟ ٹیم کے موجودہ کوچ مکی آرتھرکی قیادت میں ٹیم عالمی کپ کے سیمی فائنل تک میں جگہ نہیں بنا سکی۔ اتنا ہی نہیں، مکی آرتھرکےکوچ رہتے ٹیم کئی ٹورنا منٹ ہارگئی۔


پاکستان کے سابق بلے باز جاوید میاں داد پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ رہ چکے ہیں۔
پاکستان کے سابق بلے باز جاوید میاں داد پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ رہ چکے ہیں۔


کرکٹ پاکستان ڈاٹ کام ڈاٹ پی کے کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی ٹیم کے 99-1998 میں ہندوستان دورے پرٹیم کے کوچ جاوید میاں داد اورکپتان وسیم اکرم تھے۔ میاں داد نے کہا کہ جب کھلاڑی اچھا کرتے ہیں توکوچ اس کا سہرا لینے کے لئے سب سے آگے جاتے ہیں، لیکن کچھ ٹورنامنٹ میں کھلاڑی اچھا نہیں کھیل پائے توپھرساری غلطی کھلاڑیوں کی بتا دی جاتی ہے۔

اگرآپ کے پاس ماہرین کی کمی ہے توپھرغیرملکی کوچ رکھنے کا نظریہ غلط نہیں ہے، لیکن اگرآپ کے ملک میں اچھے سابق کھلاڑی ہیں توپھرانہیں ذمہ داری دی جانی چاہئے۔ جاوید میاں داد نے ساتھ ہی کہا کہ غیرملکی کوچ تکنیک پرزیادہ منحصر کرتے ہیں۔ یہ طریقہ ابھرتےکرکٹروں کے لئے توکام کرسکتا ہے، لیکن سینئرلیول پرآپ کو ایسے کوچ کی ضرورت ہے جومیدان پرٹریننگ کے دوران کھلاڑیوں کی کمزوریوں کودورکرنے میں مدد کرسکے۔
First published: Aug 02, 2019 07:01 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading