உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پرویز رسول پر جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے لگایا پچ رولر چوری کرنے کا الزام، کرکٹر نے دیا جواب

    پرویز رسول پر جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے لگایا پچ رولر چوری کرنے کا الزام، کشمیری کرکٹر نے دیا جواب

    پرویز رسول پر جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے لگایا پچ رولر چوری کرنے کا الزام، کشمیری کرکٹر نے دیا جواب

    جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن (JKCA) نے پرویز رسول (Parvez Rasool) کو جاری کیا نوٹس ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ کرکٹ رولر کو واپس کریں یا پولیس کارروائی کے لئے تیار رہیں۔ اپنے جواب میں پرویز رسول نے کبھی بھی رولر لینے سے انکار کیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ایک لاپتہ کرکٹ رولر نے ہندوستانی کرکٹر پرویز رسول (Parvez Rasool) کو جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن (JKCA) کے ساتھ ایک عجیب ہی لڑائی میں کھڑا کر دیا ہے۔ جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے پرویز رسول کو جاری کیا نوٹس ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ کرکٹ رولر کو واپس کریں یا پولیس کارروائی کے لئے تیار رہیں۔ اپنے جواب میں پرویز رسول نے کبھی بھی رولر لینے سے انکار کیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے انتظامیہ سے پوچھا ہے، ’کیا یہ ایک بین الاقوامی کرکٹر کے ساتھ سلوک کرنے کا طریقہ ہے، جس نے جموں وکشمیر کرکٹ کو زندگی اور جان دی ہے‘؟

      یہ معاملہ اس حد تک بڑھ گیا ہے کہ جے کے سی اے چلانے کے لئے ہندوستانی کرکٹ بورڈ (BCCI) کے ذریعہ تقرری تین رکنی ذیلی کمیٹی میں شامل بی جے پی ترجمان بریگیڈیئر (ریٹائرڈ) انل گپتا نے ایک ای میل لکھا ہے۔ ’کیا ہمارے پاس کوئی ثبوت ہے، جو ہم ان پر الزام لگا رہے ہیں‘۔ انل گپتا کے ای میل پر پرویز رسول کو دیگر منتظمین کے ساتھ نامزد کیا گیا تھا۔ انل گپتا نے ’دی انڈین ایکسپریس‘ کو بتایا کہ معاملے کو ’ہائپ‘ کیا جا رہا تھا اور یہ میل پرویز رسول کو اس لئے لکھا گیا تھا، کیونکہ سبھی ضلع ایسوسی ایشن کے ڈاک پتے دستیاب نہیں تھے اور پرویز رسول کا نام اس کے ضلع کے جے کے سی اے رجسٹر میں تھا۔

      جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے پرویز رسول کو جاری کیا نوٹس ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ کرکٹ رولر کو واپس کریں یا پولیس کارروائی کے لئے تیار رہیں۔ اپنے جواب میں پرویز رسول نے کبھی بھی رولر لینے سے انکار کیا ہے۔
      جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن نے پرویز رسول کو جاری کیا نوٹس ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ کرکٹ رولر کو واپس کریں یا پولیس کارروائی کے لئے تیار رہیں۔ اپنے جواب میں پرویز رسول نے کبھی بھی رولر لینے سے انکار کیا ہے۔


      پرویز رسول اننت ناگ ضلع کے بجبہرا کے رہنے والے ہیں۔ جموں وکشمری کرکٹ ایسوسی ایشن نے پہلے بجبہرا کے محمد شفیع کو نوٹس بھیجا اور پھر پرویز رسول کو دوسرا نوٹس۔ گپتا نے کہا کہ انہوں نے ایسا اس لئے کیا، کیونکہ رجسٹر میں ان کے ریکارڈ میں پرویز رسول کا نام تھا۔ گپتا نے مزید کہا کہ ہم نے نہ صرف پرویز رسول کو بلکہ سبھی ضلع ایسوسی ایشن کو اور سری نگر سے جے کے سی اے مشینری لینے والے کو بھی لکھا ہے۔ ہم نے ایسا اس لئے کیا کیونکہ ہم ایک آڈٹ رپورٹ تیار کرنا چاہتے ہیں، کھاتہ بہی کو بنائے رکھنے کی ضرورت ہے۔ سالوں سے یہاں شاید ہی کوئی کتاب رکھی گئی ہو۔ اس لئے کورٹ کے حکم کے بعد جب ہم نے کام کاج سنبھالا تو دیکھا کہ یہ مشینری نہیں مل رہی ہے۔

      ذیلی کمیٹی جون میں جموں وکشمیر ہائی کورٹ کے ذریعہ ایک حکم منظور کرنے کے بعد وجود میں آیا کہ بی سی سی آئی کو جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن چلانا چاہئے۔ بی جے پی کے دو ترجمان انل گپتا اور وکیل سنیل کوٹھی کو کرکٹر متھن منہاس کے ساتھ پینل میں نامزد کیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ سری نگر میں کرکٹ کی ترقی کو دیکھنے اور ذیلی کمیٹی کو رپورٹ کرنے کے لئے ماجد ڈار کو تقرر کیا گیا تھا۔ ’سمیتی رکن جے کے سی اے‘ کے ذریعہ دستخط کئے گئے پرویز رسول کو ای میل میں ممکنہ پولیس کارروائی کی وارننگ دی گئی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: