உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بابر اعظم سمیت پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ درج، پریکٹس میں پھہرایا تھا جھنڈا

    بابر اعظم سمیت پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ درج، پریکٹس میں پھہرایا تھا جھنڈا

    بابر اعظم سمیت پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ درج، پریکٹس میں پھہرایا تھا جھنڈا

    Bangladesh vs Pakistan: پاکستان کرکٹ ٹیم کے خلاف ڈھاکہ میں پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔ پوری ٹیم کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے، جس میں ٹیم کے کپتان بابر اعظم (Babar Azam) سمیت 21 کھلاڑیوں کو نامزد کیا گیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستان نے بنگلہ دیش (Pakistan vs Bangladesh) کے میر پور میں اپنے پریکٹس سیشن کے دوران اپنا قومی پرچم پھہرایا تھا۔ اس حادثہ کو لے کر کافی بڑا تنازعہ ہوگیا تھا۔ اس تنازعہ کے چھڑنے کے بعد پاکستانی کرکٹ ٹیم (Pakistan Cricket Team) نے پریکٹس کے دوران جھنڈا پھہرانے کی اجازت مانگی تھی، لیکن اب اس حادثہ میں ایک نیا موڑ آگیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ ڈھاکہ میں پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔ پوری ٹیم کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے، جس میں ٹیم کے کپتان بابر اعظم (Babar Azam) سمیت 21 کھلاڑیوں کو نامزد کیا گیا ہے۔

      پاکستانی ٹیم نے پھہرایا تھا پرچم

      جہاں پاکستان کے کرکٹروں نے پریکٹس سیشن کے دوران اپنا قومی پرچم پھہرایا، وہیں بنگلہ دیش کے ملک کے باشندوں نے اسے ملک کی آزادی کے گولڈن جوبلی کی تقریبات کے درمیان ایک سیاسی پیغام کے طور پر لیا۔ حالانکہ بین الاقوامی یا دوطرفہ کھیلوں کے دوران روایتی طور پر قومی پرچم پھہرائے جاتے ہیں، لیکن بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) نے 2014 میں اس ضابطہ پر پابندی عائد کردی تھی۔ بی سی سی بی نے بیرون ممالک کے کسی ملک کو اپنا قومی پرچم پھہرائے جانے کی پابندی عائد کردی تھی، لیکن بڑے پیمانے پر تنقید کے سبب انہیں فیصلہ واپس لینا پڑا تھا۔

       ڈھاکہ میں پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔ پوری ٹیم کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے، جس میں ٹیم کے کپتان بابر اعظم سمیت 21 کھلاڑیوں کو نامزد کیا گیا ہے۔
      ڈھاکہ میں پاکستانی ٹیم کے خلاف مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔ پوری ٹیم کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے، جس میں ٹیم کے کپتان بابر اعظم سمیت 21 کھلاڑیوں کو نامزد کیا گیا ہے۔


      سوشل میڈیا پر بڑھ گیا تھا تنازعہ

      اس حادثہ کے بعد ایک فین نے فیس بک پیج پر لکھا تھا، ’الگ الگ ملک بنگلہ دیش میں کئی بار آئے ہیں، لیکن کسی بھی ملک کو اپنے قومی پرچم کو پریکٹس کے دوران پھہرانے کی ضرورت نہیں پڑی ہے، لیکن ایسا کیوں کیا... یہ کیا ظاہر کرتا ہے‘؟ حالانکہ جب تنازعہ سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر جب طول پکڑنے لگا تو پاکستان کے میڈیا منیجر ابراہیم نے کہا کہ وہ لمبے وقت سے اپنا قومی پرچم پھہرانے کی روایت ہے۔ ان کی روایت ثقلین مشتاق کے زمانے میں شروع ہوئی تھی اور تب سے چلی آرہی ہے۔



      پاکستانی ٹیم نے دی تھی معاملے پر صفائی

      پاکستانی ٹیم کے میڈیا منیجر ابراہیم نے اسپورٹس اسٹار کو دیئے ایک انٹرویو میں کہا، ’یہ ہمارے لئے کوئی نئی بات نہیں ہے۔ ثقلین مشتاق کے ٹیم میں شامل ہونے کے بعد سے یہ ان کے کوچنگ درشن کا حصہ ہے۔ انہیں لگتا ہے کہ ملک کا جھنڈا کھلاڑی کے لئے ترغیب کا کام کرتا ہے۔ پاکستانی ٹیم اس وقت بنگلہ دیش میں ہے اور دو میچوں کی سیریز کا پہلا ٹسٹ 26 نومبر کو ظہور احمد چودھری اسٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔ پاکستان نے ٹی -20 انٹرنیشنل سیریز میں میزبان ٹیم کی سرزمین پر ہی ان کا صفایا کردیا۔ ٹی-20 سیریز میں ملی بڑی شکست کے بعد بنگلہ دیش ٹسٹ کرکٹ میں اپنی چھاپ چھوڑنے کا خواہاں ہوگا۔ پہلا ٹسٹ 26 نومبر سے شروع ہوگا، جبکہ دوسرا ٹسٹ چار دسمبر سے کھیلا جائے گا۔

      قومی، بین الا اقوامی، جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لئے نیوز18 اردو کو ٹوئٹر، فیس بک پر فالو کریں۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: