உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Cricket Rules Changed:سچن تینڈولکر بھی اس تبدیلی سے خوش، لیکن انگریز کھلاڑی ہوئے خفا، کہا-اس میں اسکل نہیں

    انگلش فاسٹ بالر نے کہا، ’لہذا مانکڈ اب غیر منصفانہ نہیں رہا اور آؤٹ کرنے کا یہ طریقہ قانونی ہو گیا ہے۔بلے باز کو آؤٹ کرنے کے لیے مہارت کی ضرورت ہوتی ہے اور مانکڈ کو کسی مہارت کی ضرورت نہیں ہوتی۔

    انگلش فاسٹ بالر نے کہا، ’لہذا مانکڈ اب غیر منصفانہ نہیں رہا اور آؤٹ کرنے کا یہ طریقہ قانونی ہو گیا ہے۔بلے باز کو آؤٹ کرنے کے لیے مہارت کی ضرورت ہوتی ہے اور مانکڈ کو کسی مہارت کی ضرورت نہیں ہوتی۔

    انگلش فاسٹ بالر نے کہا، ’لہذا مانکڈ اب غیر منصفانہ نہیں رہا اور آؤٹ کرنے کا یہ طریقہ قانونی ہو گیا ہے۔بلے باز کو آؤٹ کرنے کے لیے مہارت کی ضرورت ہوتی ہے اور مانکڈ کو کسی مہارت کی ضرورت نہیں ہوتی۔

    • Share this:
      بدھ 9 مارچ کا آغاز دنیائے کرکٹ کے لیے ایک بڑی خبر کے ساتھ ہوا۔ کرکٹ کے اصول بنانے والے ادارے اور اس کے سرپرست میریلیبون کرکٹ کلب (MCC) نے کچھ قوانین میں تبدیلیوں کا اعلان کیا۔ اس اصول میں ایک خاص تبدیلی بھی کی گئی، جو ایک طویل عرصے سے کرکٹ کا حصہ ہے، لیکن اس پر عمل کرنے سے اکثر اسپورٹس مین شپ کی بحث چھڑ جاتی ہے۔ یہ نان اسٹرائیکر کے آخر میں ایک بالر کا رن آؤٹ ہے، جسے 8 مارچ 2021 تک ’مانکڈنگ‘(ICC Changes Mankadin Rule) کہا جاتا تھا۔ ایم سی سی نے اسے تبدیل کر کے اب رن آؤٹ کے ساتھ ضم کر دیا ہے اور اس فیصلے کو بہت سراہا جا رہا ہے۔ عظیم ہندوستانی بلے باز سچن ٹنڈولکر(Sachin Tendulkar) نے بھی اس کا خیرمقدم کیا ہے لیکن انگلینڈ کے لیجنڈ فاسٹ باؤلر اسٹورٹ براڈ(Stuart Broad) اس تبدیلی سے اتفاق نہیں کرتے اور اسے غلط قرار دیا ہے۔

      MCC نے غیر منصفانہ کھیل یعنی ’اَن فیئر پلے‘ سے ’مانکڈنگ‘ کو ہٹانے کا فیصلہ کیا اور اسے نئے ’رن آؤٹ‘ قانون کے ساتھ ملا دیا ہے۔ اس فیصلے کا خاص طور پر ہندوستانی کھلاڑیوں اور ہندوستانی شائقین نے خیرمقدم کیا ہے، کیونکہ اس کا نام عظیم ہندوستانی آل راؤنڈر ونو مانکڈ کے نام پر رکھا گیا تھا، جنہوں نے 1948 میں سب سے پہلے آسٹریلوی بلے باز بل براؤن کو اس طرح آؤٹ کیا تھا۔ اس کے بعد سے جب بھی کسی گیند باز نے اسے استعمال کیا، اسے کھیل کے جذبات کے خلاف سمجھا گیا۔ تجربہ کار ہندوستانی اسپنر روی چندرن اشون سمیت کئی کھلاڑی اسے آؤٹ کرنے کا صحیح طریقہ مانتے رہے ہیں۔


      نام بدل دئیے جانے سے خوش ہیں سچن
      اس تبدیلی کی خبر نے سابق ہندوستانی کھلاڑیوں اور شائقین کو خوش کردیا اور ساتھ ہی تنڈولکر بھی ہیں جنہوں نے اس فیصلے کو سراہا ہے۔ سابق ہندوستانی بلے باز نے کہا کہ وہ اس طرح کے آؤٹ کو بیان کرنے کے لیے لفظ ’مانکڈنگ‘ کے استعمال کے خلاف تھے۔

      تنڈولکر نے ایک ویڈیو میں کہا،میں واقعی خوش ہوں کہ اسے رن آؤٹ میں تبدیل کر دیا گیا۔ میرے مطابق اسے پہلے ہی رن آؤٹ ہو جانا چاہیے تھا۔ تو یہ ہم سب کے لیے اچھی خبر ہے۔ میں اس سے راضی نہیں تھا، لیکن اب ایسا نہیں ہوگا۔‘


      براڈ نے رول کو بتایا غلط
      تاہم، بظاہر ہر کوئی اس فیصلے سے خوش نہیں ہے اور اس میں انگلینڈ کے لیجنڈری فاسٹ باؤلر براڈ بھی شامل ہیں، جو اکثر ’کھیل کے جذبات‘ کے بارے میں بات کرتے ہیں۔ براڈ نے ایم سی سی کے فیصلے کو غیر منصفانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسے کسی بھی صورت میں آؤٹ کرنے کے مقابلے میں کسی مہارت کی ضرورت نہیں ہوگی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Shane Warne Demise:شین وارن کی ’بال آف دی سنچوری‘ کی حیران کن کہانی

      یہ بھی پڑھیں:
      Explained:سدھارتھ شکلا، اندر کمار، پونیت راجکمار اور اب شین وارن،ہارٹ اٹیک سے کیسے بچیں؟

      انگلش فاسٹ بالر نے کہا، ’لہذا مانکڈ اب غیر منصفانہ نہیں رہا اور آؤٹ کرنے کا یہ طریقہ قانونی ہو گیا ہے۔ کیا یہ ہمیشہ باہر نکلنے کا ایک درست طریقہ نہیں تھا اور غیر منصفانہ ہونا شخصی نہیں تھا؟ میرے خیال میں یہ غلط ہے اور میں اسے صحیح نہیں سمجھتا۔ بلے باز کو آؤٹ کرنے کے لیے مہارت کی ضرورت ہوتی ہے اور مانکڈ کو کسی مہارت کی ضرورت نہیں ہوتی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: