اپنا ضلع منتخب کریں۔

    اظہر کی ڈیبیو ٹسٹ میں سنچری، روی شاستری کے ساتھ کی تھی ’ڈبل سنچری‘ والی پارٹنرشپ

    On this Day, 3 January: سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہرالدین (Mohammad Azharuddin) نے انگلینڈ کے خلاف ٹسٹ ڈیبیو کیا تھا۔ انہوں نے اپنی پہلی ہی ٹسٹ اننگ میں سنچری لگائی۔ محمد اظہرالدین پانچویں نمبر پر بلے بازی کرنے اترے اور 322 گیندیں کھیلیں۔ انہوں نے 10 چوکوں کی مدد سے 110 رن بنائے۔ روی شاستری نے بھی کولکاتا میں کھیلے گئے اس مقابلے میں سنچری لگائی اور محمد اظہر الدین کے ساتھ ٹرپل سنچری کی شراکت کی۔

    On this Day, 3 January: سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہرالدین (Mohammad Azharuddin) نے انگلینڈ کے خلاف ٹسٹ ڈیبیو کیا تھا۔ انہوں نے اپنی پہلی ہی ٹسٹ اننگ میں سنچری لگائی۔ محمد اظہرالدین پانچویں نمبر پر بلے بازی کرنے اترے اور 322 گیندیں کھیلیں۔ انہوں نے 10 چوکوں کی مدد سے 110 رن بنائے۔ روی شاستری نے بھی کولکاتا میں کھیلے گئے اس مقابلے میں سنچری لگائی اور محمد اظہر الدین کے ساتھ ٹرپل سنچری کی شراکت کی۔

    On this Day, 3 January: سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہرالدین (Mohammad Azharuddin) نے انگلینڈ کے خلاف ٹسٹ ڈیبیو کیا تھا۔ انہوں نے اپنی پہلی ہی ٹسٹ اننگ میں سنچری لگائی۔ محمد اظہرالدین پانچویں نمبر پر بلے بازی کرنے اترے اور 322 گیندیں کھیلیں۔ انہوں نے 10 چوکوں کی مدد سے 110 رن بنائے۔ روی شاستری نے بھی کولکاتا میں کھیلے گئے اس مقابلے میں سنچری لگائی اور محمد اظہر الدین کے ساتھ ٹرپل سنچری کی شراکت کی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: تین جنوری کا دن ہندوستانی کرکٹ کی تاریخ میں یادگار ہے۔ اسی دن محمد اظہرالدین (Mohammad Azharuddin) نے اپنے ڈیبیو ٹسٹ میں سنچری لگائی تھی۔ خاص بات یہ ہے کہ اسی میچ میں ان کے علاوہ روی شاستری (Ravi Shastri) نے بھی سنچری والی اننگ کھیلی تھی۔ کولکاتا کے ایڈن گارڈن میں دسمبر سے شروع ہوئے اس ٹسٹ میچ کے تیسرے دن جاکر دونوں کی سنچری مکمل ہوئی تھی۔ دراصل، تب تیسرے دن یعنی تین جنوری 1985 کو محمد اظہرالدین اور روی شاستری کی سنچری مکمل ہوئی تھی۔

      انگلینڈ ٹیم نے تب ہندوستان کا دورہ کیا تھا۔ ہندوستانی ٹیم کی کمان سنیل گواسکر سنبھال رہے تھے۔ ٹیم انڈیا نے اپنی پہلی اننگ 7 وکٹ پر 437 رن بناکر ڈکلیئر کی۔ محمد اظہر الدین پانچویں نمبر پر بلے بازی کرنے اترے اور 322 گیندیں کھیلیں۔ انہوں نے 10 چوکوں کی مدد سے 110 رن بنائے۔ روی شاستری نے 357 گیندوں کا سامنا کیا اور 13 چوکوں کی مدد سے 111 رنوں کی اننگ کھیلی۔

      دونوں نے انگلینڈ کے گیند بازوں کا ڈٹ کر سامنا کیا اور جم کر بلے بازی کی۔ روی شاستری اور محمد اظہر الدین نے پانچویں وکٹ کے لئے 214 رنوں کی بہترین شراکت بھی کی۔ روی شاستری پہلی اننگ میں نمبر-6 پر بلے بازی کرنے اترے تھے۔ انگلینڈ کے لئے فل ایڈمنڈس اور نارمین کوونس 3-3 وکٹ حاصل کئے تھے۔ اس کے بعد ڈیوڈ گوور کی کپتانی والی انگلینڈ ٹیم نے پہلی اننگ میں 276 رن بنائے۔

      ہندوستان نے دوسری اننگ میں ایک وکٹ گنواکر 29 رن بنائے۔ خاص بات ہے کہ روی شاستری دوسری اننگ میں اوپننگ کے لئے آئے۔ انہوں نے 50 گیندیں کھیلیں اور ایک چوکے کی مدد سے سات رن بنائے اور ناٹ آوٹ رہے۔ بعد میں چھٹے دن یعنی پانچ جنوری 1985 کو میچ ڈرا ختم ہوا۔ گیند بازی کی بات کریں تو ہندوستان کے چیتن شرما نے بہترین کارکردگی پیش کی اور 38 رن دے کر 4 وکٹ اپنے نام کئے۔ شیو لال یادو نے 86 رن دے کر چار وکٹ اپنے نام کئے۔

      محمداظہرالدین نے بعد میں ہندوستانی ٹیم کی کپتانی بھی سنبھالی۔ انہوں نے اپنے کیریئر میں 99 ٹسٹ میچوں میں کل 6215 رن بنائے۔ ونڈے میں انہوں نے 334 میچوں میں کل 9378 رن بنائے، جس میں سات سنچری اور 58 نصف سنچری شامل رہے۔ وہ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لینے کے بعد کرکٹ ایڈمنسٹریشن میں آگئے۔ وہیں روی شاستری نے ٹیم انڈیا کے چیف کوچ کی اہم ذمہ داریاں سنبھالیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: