உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Women Junior hockey World Cup: ماں لگاتی ہے سبزی کا ٹھیلا، بیٹی ممتاز خان جونیئر ہاکی ورلڈ کپ میں کر رہی کمال

     ہندوستانی خواتین کی ہاکی ٹیم اس مقابلے میں دوسری بار سیمی فائنل میں پہنچی ہے۔

    ہندوستانی خواتین کی ہاکی ٹیم اس مقابلے میں دوسری بار سیمی فائنل میں پہنچی ہے۔

    Women Junior hockey World Cup: جمعہ کی نماز سے پہلے ان کے ٹھیلے کے پاس حسب معمول بھیڑ تھی۔ اسی دوران 7,669 کلومیٹر دور جنوبی افریقہ کے شہر پوچ فسٹوم میں کھیلے جانے والے ویمنز جونیئر ہاکی ورلڈ کپ میں ان کی بیٹی ممتاز خان نے کھیل کے 11ویں منٹ میں گول کر کے جنوبی کوریا کے گول کیپر کو پیچھے چھوڑ دیا۔

    • Share this:
      Women Junior hockey World Cup: قیصر جہاں لکھنؤ کا توپ خانہ بازار کی تنگ گلیوں میں اس شدید گرمی میں سبزی کا ٹھیلا لگاتی ہیں۔ جمعہ کی نماز سے پہلے ان کے ٹھیلے کے پاس حسب معمول بھیڑ تھی۔ اسی دوران 7,669 کلومیٹر دور جنوبی افریقہ کے شہر پوچ فسٹوم میں کھیلے جانے والے ویمنز جونیئر ہاکی ورلڈ کپ میں ان کی بیٹی ممتاز خان نے کھیل کے 11ویں منٹ میں گول کر کے جنوبی کوریا کے گول کیپر کو پیچھے چھوڑ دیا۔ ممتاز mumtaz khan کے اس گول نے کوارٹر فائنل میچ میں ہندوستان کی جیت کی بنیاد رکھ دی۔ اس میچ میں ہندوستان نے کوریا کو 3-0 سے شکست دی۔ ہندوستانی خواتین کی ہاکی ٹیم اس مقابلے میں دوسری بار سیمی فائنل میں پہنچی ہے۔
      حالانکہ سبزی بیچنے والی قیصر ورلڈ کپ   World Cup میں اپنی بیٹی کا یہ کمال نہ دیکھ سکیں۔ ممتاز کو بہترین کارکردگی پر پلیئر آف دی میچ کے خطاب سے نوازا گیا۔ تاہم ماں کو اپنی بیٹی کو کھیلتے ہوئے دیکھ نہ پانے کا افسوس نہیں ہے۔ قیصر جہاں کا خیال ہے کہ مستقبل میں ایسے اور بھی کئی مواقع آئیں گے جب وہ اپنی بیٹی کو گول کرتے ہوئے دیکھیں گی۔

      Women's World Cup-2022: ایک ہاتھ سے لیا ایسا کیچ، ویڈیو دیکھ کر ایشت گارڈنر کو کریں گے سلام




      بیٹی کو کھیلتے نہ دیکھ پانے کا نہیں ملال
      انگریزی اخبار انڈین ایکسپریس سے بات کرتے ہوئے قیصر جہاں نے کہا کہ یہ میرے لیے مصروف وقت تھا۔ میں اپنی بیٹی کو گول کرتے دیکھنا پسند کرتی لیکن مجھے بھی روزی۔روٹی کمانی ہے۔ مجھے امید ہے کہ مستقبل میں ایسے اور بھی بہت سے مواقع ہوں گے جب میں اپنی بیٹی کو گول کرتے ہوئے دیکھوں گی۔"

      یہ بھی پڑھیں: اسقاط حمل کے بعد پیٹ میں ڈاکٹروں نے چھوڑ دیا بچے کا کچھ حصہ! 7ماہ تک بھیانک درد سے تڑپتی رہی خاتون

      دوسری طرف دیکھا جائے تو ماں کا اعتماد غلط نہیں ہے۔ کیونکہ جونیئر لیول سے آگے کا سفر مشکل ہوتا ہے۔ لیکن ممتاز کے اندر جو رفتار، صلاحیت اور ٹیلنٹ ہے اس کو دیکھ کر لگتا ہے کہ وہ سینئر لیول پر ٹیم کی نمائندگی کریں گی۔ جونیئر ہاکی ورلڈ کپ میں بھارت نے اب تک چار میں سے چار میچ جیتے ہیں جن میں ممتاز کا حصہ contribution سب سے زیادہ رہا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: