உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Cricket New Rules:مانکڈنگ کو ملا رن آؤٹ کا درجہ، 5 مرتبہ اس طرح شکار کرنے والے ہندوستانی کرکٹر نے کہی بڑی بات

     MCC نے قوانین میں ترمیم کرتے ہوئے کہا کہ’بالنگ اینڈ پر کھڑے بلے باز کو رن آؤٹ کرنے کو رول 41 (غیر منصفانہ کھیل) اور قاعدہ 38 (رن آؤٹ) سے ہٹا دیا گیا ہے۔ اصول کے الفاظ میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔ کارتک کے علاوہ روی چندرن اشون جیسے گیند باز ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے ایسا کرنے کی وکالت کر رہے تھے۔

    MCC نے قوانین میں ترمیم کرتے ہوئے کہا کہ’بالنگ اینڈ پر کھڑے بلے باز کو رن آؤٹ کرنے کو رول 41 (غیر منصفانہ کھیل) اور قاعدہ 38 (رن آؤٹ) سے ہٹا دیا گیا ہے۔ اصول کے الفاظ میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔ کارتک کے علاوہ روی چندرن اشون جیسے گیند باز ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے ایسا کرنے کی وکالت کر رہے تھے۔

    MCC نے قوانین میں ترمیم کرتے ہوئے کہا کہ’بالنگ اینڈ پر کھڑے بلے باز کو رن آؤٹ کرنے کو رول 41 (غیر منصفانہ کھیل) اور قاعدہ 38 (رن آؤٹ) سے ہٹا دیا گیا ہے۔ اصول کے الفاظ میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔ کارتک کے علاوہ روی چندرن اشون جیسے گیند باز ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے ایسا کرنے کی وکالت کر رہے تھے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ہندوستان کے سابق اسپنر مرلی کارتک بدھ کو اس وقت خوش تھے جب میریلیبون کرکٹ کلب، کھیل کی قانون سازی کرنے والی باڈی نے مانکڈنگ کو قانونی حیثیت دینے کے لیے اپنے قوانین میں تبدیلی کی۔ بلے باز کے بولنگ اینڈ پر کریز چھوڑ کر رن آؤٹ ہونے پر مرلی کارتک کئی بار تنقید کی زد میں آ چکے ہیں۔ کارتک، فرسٹ کلاس کرکٹ میں 644 وکٹوں کے ساتھ اپنے وقت کے سرفہرست بائیں ہاتھ کے اسپنروں میں سے ایک تھے۔ انہوں نے ہندوستان کے لیے آٹھ ٹیسٹ اور 37 ایک روزہ بین الاقوامی میچ کھیلے ہیں۔ جب وہ کھیلتے تھے تو وہ مختلف فارمیٹس میں بولنگ اینڈ پر پانچ بلے بازوں کو کریز سے باہر نکلنے کے لیے رن آؤٹ کرچکے ہیں۔

      بدھ کو، MCC نے قوانین میں ترمیم کرتے ہوئے کہا کہ’بالنگ اینڈ پر کھڑے بلے باز کو رن آؤٹ کرنے کو رول 41 (غیر منصفانہ کھیل) اور قاعدہ 38 (رن آؤٹ) سے ہٹا دیا گیا ہے۔ اصول کے الفاظ میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔ کارتک کے علاوہ روی چندرن اشون جیسے گیند باز ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے ایسا کرنے کی وکالت کر رہے تھے۔ کارتک نے پی ٹی آئی سے کہا، ’اسپورٹس مین شپ ہوتی ہے لیکن میں نے ہمیشہ کہا ہے کہ یہ اسپورٹس مین شپ نہیں ہے۔ درحقیقت وہی لوگ جو اس کی خلاف ورزی کر رہے تھے جو اسپورٹس مین شپ کے پردے میں چھپے ہوئے تھے۔ یہ الٹا چور کوتوال کو ڈانٹنے کا معاملہ تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Ind vs Pak 2022: ہندوستان نے جیت کے ساتھ کیا آغاز ، پاکستان کو دی کراری شکست

      یہ بھی پڑھیں:
      ہرفارمیٹ میں رہاشین وارن کاجلوہ:ٹسٹ میں700وکٹ ینے والے پہلے گیندباز،IPLکے پہلے چمپئن کپتان

      مرلی کارتک نے کیا کہا؟
      یہ محسوس کرتے ہوئے کہ وہ درست ثابت ہوئے، کارتک نے کہا، ’میں کہوں گا کہ وہ صحیح ثابت ہوئے‘ میں نے صحیح محسوس کیا۔ یہ یقینی طور پر وقت تھا کہ ہم ایسا کرنے کے لیے گیند بازوں کو مجرم قرار دینا بند کر دیں۔ یہ بلے باز ہی تھے جو ناجائز فائدہ اٹھا رہے تھے اور بالر پر الزام لگایا جاتا رہا تھا۔ انہیں غلط کہہ رہے تھے۔ وہ میری لڑائی تھی۔ میں ہمیشہ لوگوں سے کہتا تھا کہ اگر یہ رول کو منظوری ملی تو میں تمام 11 کھلاڑیوں کو رن آؤٹ کردوں گا۔‘
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: