உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان کرکٹ میں مچ گیا کہرام، عالمی کپ کھیلنے والا کھلاڑی فکسنگ کے الزام میں ہوا معطل

    پاکستان کرکٹ میں مچ گیا کہرام، عالمی کپ کھیلنے والا کھلاڑی فکسنگ کے الزام میں ہوا معطل

    پاکستان کرکٹ میں مچ گیا کہرام، عالمی کپ کھیلنے والا کھلاڑی فکسنگ کے الزام میں ہوا معطل

    پاکستان کرکٹ ایک بار پھر سرخیوں میں ہے۔ پی سی بی (PCB) نے نیشل ٹی-20 عالمی کپ کے دوران فکسنگ کی جانکاری نہیں دینے کے الزام میں ذیشان ملک (Zeeshan Malik) کو معطل کردیا ہے۔ اس سے پہلے اسی طرح کے الزام میں عمراکمل پر 18 ماہ کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

    • Share this:
      لاہور: پاکستان کرکٹ میں ایک بار پھر بھونچال آگیا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ (PCB) نے فکسنگ کی جانکاری نہیں دینے کے الزام میں نیشنل ٹی-20 عالمی کپ کھیلنے والے ذیشان ملک (Zeesan Malik) کو معطل کردیا ہے۔ اس کے سبب وہ اب کسی بھی طرح کے ٹورنامنٹ میں شامل نہیں ہوسکیں گے۔ ذیشان نے 2016 میں انڈر-19 عالمی کپ میں شاندار کارکردگی پیش کرکے سب کی توجہ اپنی جانب مرکوز کی تھی۔ انہوں نے 56 کی اوسط سے 225 رن بنائے تھے۔

      ذیشان ملک (Zeesan Malik) نے نیشنل ٹی-20 عالمی کپ کے 5 میچوں میں ناردن ٹیم کی طرف سے کھیلتے ہوئے 25 کی اوسط سے 123 رن بنائے تھے۔ حالانکہ ان کی ٹیم فائنل میں نہیں پہنچ سکی تھی۔ 24 سال کے بلے باز پر الزام ہے کہ انہوں نے فکسنگ سے متعلق پی سی بی کو جانکاری نہیں دی۔ بورڈ نے جمعرات کو انہیں آرٹیکل 4.7.1 کے اینٹی کرپشن کوڈ کے تحت معطل کردیا ہے۔ ذیشان ملک نے 2016 میں فرسٹ کلاس ڈیبیو کیا تھا۔ 2019-20 کے سیزن میں انہوں نے 52 کی اوسط سے شاندار 780 رن بنائے تھے۔

      عمر اکمل کو اسی طرح کرنا پڑا تھا پابندی کا سامنا

      اس سے قبل اسی ضوابط کا حوالہ دیتے ہوئے سابق کرکٹر عمر اکمل کو بھی پی سی بی نے معطل کیا تھا۔ اپریل 2020 میں انہیں تین سال کے لئے معطل کیا گیا تھا، لیکن اپیل کے بعد ان کی سزا کی مدت کم کرکے 18 ماہ کر دیا گیا تھا۔ انہوں نے اگست میں واپسی کی تھی۔ حالانکہ ان کے امریکہ سے کھیلنے کی خبریں آرہی ہیں، لیکن انہوں نے بعد میں اس کی تردید کردی تھی۔

      پاکست

      پاکستان کرکٹ میں فکسنگ کی تاریخ لمبی رہی ہے۔ ٹیم کے سابق کپتان سلمان بٹ خود اس میں پھنس چکے ہیں اور انہیں جیل تک جانا پڑا تھا۔ 28 اگست 2010 کے پاکستان کے تیز گیند باز محمد عامر اور محمد آصف پر پیسے لے کر نوبال پھینکنے کے الزام لگے تھے۔ سلمان بٹ بھی اس میں شامل تھے۔ حالانکہ محمد عامر کو اس کے بعد سال 2016 میں پھر سے پاکستانی ٹیم میں جگہ مل گئی تھی۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: