ہوم » نیوز » اسپورٹس

سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہرالدین نے حیدرآباد کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر کا دوبارہ عہدہ سنبھالا

جسٹس (ر) ورما نے کہا کہ ایچ سی اے کے صدر محمد اظہرالدین کے خلاف ہونے والی کسی بھی کارروائی سے ان کی شخصیت کو نقصان نہیں ہوگا۔ لہذا میں ہدایت دیتا ہوں کہ محمد اظہرالدین بحیثیت صدر رہیں گے اور عہدیداروں کے خلاف تمام شکایات کا فیصلہ محتسب ہی کرے گا‘‘۔

  • Share this:
سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہرالدین نے حیدرآباد کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر کا دوبارہ عہدہ سنبھالا
سابق ہندوستانی کپتان محمد اظہرالدین نے حیدرآباد کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر کا دوبارہ عہدہ سنبھالا

معروف سابق کرکٹر محمد اظہرالدین (Mohammed Azharuddin) نے اتوار کے روز محتسب جسٹس (ر) دیپک ورما (Deepak Verma) کے ذریعہ حیدرآباد کرکٹ ایسوسی ایشن (Hyderabad Cricket Association) کے صدر کی حیثیت سے دوبارہ عہدہ سنبھالا ہے۔ جنہوں نے ایپکس کونسل کے پانچ ممبروں کو بھی عارضی طور پر نا اہل کردیا تھا. انھوں نے ہی سابق ہندوستانی کپتان کو معطل کردیا تھا۔


ایک عبوری حکم میں ایچ سی اے محتسب نے ایچ سی اے اپیکس کونسل کے پانچ ارکان کے جان منوج، نائب صدر، آر وجیانند، نریش شرما، سریندر اگروال، انورادھا کو عارضی طور پر نا اہل کردیا۔ ایپکس کونسل نے اظہرالدین کو اپنے آئین کی مبینہ خلاف ورزی کے الزام میں معطل کردیا تھا۔


اظہرالدین کے خلاف تنازعات کے الزامات لگائے گئے۔ جسٹس (ر) ورما نے اپنے حکم میں نشاندہی کی کہ اظہرالدین کے خلاف شکایت محتسب کو نہیں ارسال کی گئی ہے اور اس کی کوئی قانونی صداقت نہیں ہے۔


اظہرالدین کے خلاف تنازعات کے الزامات لگائے گئے۔ جسٹس (ر) ورما نے اپنے حکم میں نشاندہی کی کہ اظہرالدین کے خلاف شکایت محتسب کو نہیں ارسال کی گئی ہے اور اس کی کوئی قانونی صداقت نہیں ہے۔
اظہرالدین کے خلاف تنازعات کے الزامات لگائے گئے۔ جسٹس (ر) ورما نے اپنے حکم میں نشاندہی کی کہ اظہرالدین کے خلاف شکایت محتسب کو نہیں ارسال کی گئی ہے اور اس کی کوئی قانونی صداقت نہیں ہے۔


ایپکس کونسل اپنے طور پر کوئی فیصلہ نہیں لے سکتی۔ لہذا میں مناسب سمجھتا ہوں کہ ان پانچ ممبروں کی جانب سے منتخب کردہ صدر کو معطل کرنے شوکاز پر نوٹس جاری کرنے اور ان سے پرہیز کرنے کی ہدایت کی جانے والی قرار داد (اگر کوئی ہے) کو مسترد کرنا مناسب ہے۔ جسٹس (ر) ورما نے کہا کہ ایچ سی اے کے صدر محمد اظہرالدین کے خلاف ہونے والی کسی بھی کارروائی سے ان کی شخصیت کو نقصان نہیں ہوگا۔ لہذا میں ہدایت دیتا ہوں کہ محمد اظہرالدین بحیثیت صدر رہیں گے اور عہدیداروں کے خلاف تمام شکایات کا فیصلہ محتسب ہی کرے گا‘‘۔

جسٹس (ر) ورما نے نوٹ کیا کہ ’’مذکورہ حقائق اور خصوصیات سے یہ واضح طور پر ظاہر ہوتا ہے کہ کرکٹ کے کھیل کی حوصلہ افزائی کرنے کے بجائے، ہر ایک ان سب سے بہتر وجوہات کی بنا پر اپنی اپنی سیاست کھیل رہا ہے۔ اس طرح انھوں نے اسی مقصد کو شکست دی جس کے لئے ایچ سی اے تشکیل دیا گیا ہے‘‘۔

ایپکس کونسل کے پانچ ممبروں کے بارے میں حکم میں جسٹس ورما نے کہا کہ ’’میں یہ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ صرف اس وجہ سے کہ یہ پانچ ممبران اپنے طور پر اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ میں محتسب نہیں ہوں، وہ میرے اختیارات نہیں چھین سکتے جس کی اب تصدیق ہوگئی ہے۔ ہائی کورٹ کے فیصلے اور 85 ویں اے جی ایم کے منٹوں سے بھی‘‘۔

"یہ ممبران صرف یہ کہہ کر قانون کے مناسب عمل سے بچ نہیں سکتے ہیں کہ وہ میری تقرری پر راضی نہیں ہیں۔ مذکورہ بالا سے واضح ہے کہ ان ممبروں کی بدنظمی ہوتی ہے اور وہ ایچ سی اے کی آسانی سے کام کرنا نہیں چاہتے ہیں‘‘۔

محتسب نے کہا کہ ’’اس وجہ سے اور مذکورہ وجوہات کی بناء پر میں اس کے ذریعہ ہدایت کرتا ہوں کہ یہ ممبران اپیکس کونسل کے عہدیداروں کی حیثیت سے ان شکایات کو حتمی شکل دینے تک عارضی طور پر اپنے فرائض کی انجام دہی سے نااہل ہوجاتے ہیں‘‘۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 05, 2021 04:52 PM IST