உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    On This Day in 1999: جب بنگلہ دیش نے پاکستان کو دھول چٹا دی! سعید انور بھی ہوئے تھے ناکام

    بنگلہ دیش نے 1999 کرکٹ عالمی کپ میں سب سے بڑا الٹ پھیر کیا تھا۔ 31 مئی 1999 کو کھیلے گئے ایک میچ میں اس نے پاکستان کو 62 رنوں سے ہرایا۔ یہ عالمی کپ میں بنگلہ دیش کی پاکستان کے خلاف پہلی جیت تھی۔

    بنگلہ دیش نے 1999 کرکٹ عالمی کپ میں سب سے بڑا الٹ پھیر کیا تھا۔ 31 مئی 1999 کو کھیلے گئے ایک میچ میں اس نے پاکستان کو 62 رنوں سے ہرایا۔ یہ عالمی کپ میں بنگلہ دیش کی پاکستان کے خلاف پہلی جیت تھی۔

    بنگلہ دیش نے 1999 کرکٹ عالمی کپ میں سب سے بڑا الٹ پھیر کیا تھا۔ 31 مئی 1999 کو کھیلے گئے ایک میچ میں اس نے پاکستان کو 62 رنوں سے ہرایا۔ یہ عالمی کپ میں بنگلہ دیش کی پاکستان کے خلاف پہلی جیت تھی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: بنگلہ دیش کے کرکٹ فینس کے لئے آج کا دن بے حد خاص ہے۔ آج سے 23 سال پہلے 31 مئی 1999 کو بنگلہ دیش نے عالمی کپ کے ایک میچ میں تاریخ رقم کی تھی۔ اس مقابلے میں اس نے پاکستان کو ہرایا۔ بنگلہ دیش کو یہ میچ جتانے میں اکرم خان، شہریار حسین اور خالد محمود نے اہم کردار نبھایا۔ اس میچ کو 1999 کرکٹ عالمی کپ کا سب سے بڑا الٹ پھیر مانا گیا۔ نارتھمپٹن میں کھیلے گئے مقابلے میں بنگلہ دیش نے پاکستان کو  62 رنوں سے شکست دی تھی۔

      نارتھمپٹن کے کاونٹی گراونڈ پر کھیلے گئے میچ میں پاکستان نے ٹاس جیت کر فیلڈنگ کی۔ بلے بازی کرنے اتری بنگلہ دیش کی ٹیم نے اپنی اننگ میں 9 وکٹ پر 223 رن بنائے۔ بنگلہ دیش کی طرف سے اکرم خان 42، شہریار حسین 39 اور خالد محمود 27 رن بناکر ٹاپ اسکورر رہے۔ ان کے علاوہ امین الاسلام 15، خالد مسعود 15، منہاج العابدین 14 اور نعیم الرحمن نے 13 رنوں کی اننگ کھیلی۔ پاکستان کے لئے ثقلین مشتاق نے سب سے زیادہ 5 وکٹ حاصل کئے۔ ان کے علاوہ وقار یونس کو دو وکٹ ملے۔ وسیم اکرم ایک کھلاڑی کو آوٹ کرنے میں کامیاب رہے۔

      161 رنوں پر ڈھیر ہوا پاکستان

      جیت کے لئے 224 رنوں کے ہدف کا تعاقب کرنے اتری پاکستانی ٹیم کی شروعات کافی خراب رہی۔ اس کا پہلا وکٹ 5 رن پر گرگیا۔ اننگ کی شروعات کرنے آئے شاہد آفریدی 2 رن بناکر آوٹ ہوئے۔ اس کے بعد تیسرے نمبر پر بلے بازی کرنے آئے اعجاز احمد کھاتہ نہیں کھول پائے۔ سعید انور 9 رن بن کر آوٹ ہوگئے۔ اس دوران انضمام الحق 7 اور سلیم ملک 5 رن بنا پائے۔ ایک وقت پاکستان نے 42 رنوں پر 5 وکٹ گنوا دیئے تھے۔

      سال 2022 میں چھوڑی چھاپ

      اس کے بعد ساتویں نمبر پر بلے بازی کرنے آئے کپتان وسیم اکرم نے اظہر محمود کے ساتھ پاکستان کی اننگ کو آگے بڑھایا۔ ان دونوں بلے بازوں نے  55 رنوں کی شراکت کی۔ تاہم اظہر محمود کے آوٹ ہونے کے بعد پاکستان کے ہاتھ سے یہ میچ نکل گیا۔ محمود 29 رن بناکر آوٹ ہوئے۔ ان کے آوٹ ہونے کے بعد وسیم اکرم بھی نہیں ٹکے، وہ بھی 29 رن بناکر آوٹ ہوئے۔

      آخر میں ثقلین مشتاق اور وقار یونس نے ہار ٹالنے کی کوشش کی، لیکن وہ ناکام رہے۔ ثقلین مشتاق نے 21 اور وقار یونس نے 11 رن بنائے۔ اس طرح پاکستان کی پوری ٹیم 44.3 اوور میں 161 رنوں پر آل آوٹ ہوگئی۔ بنگلہ دیش کی طرف سے خالد محمود نے 3 وکٹ حاصل کئے۔ انہیں پلیئر آف دی میچ کے خطاب سے نوازا گیا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: