ہوم » نیوز » اسپورٹس

اس کھلاڑی نے پار کی توہم پرستی کی ساری حدیں ، پیشاب پئے بغیر نہیں کھیلتا میچ !

یو ایف سی چیمپئن نے خود ایک انٹرویو میں اس بات کا انکشاف کیا تھا کہ وہ کئی سالوں سے اپنا ہی پیشاب پی رہے ہیں ، جس سے ان کے جسم کو طاقت ملتی ہے ۔

  • Share this:
اس کھلاڑی نے پار کی توہم پرستی کی ساری حدیں ، پیشاب پئے بغیر نہیں کھیلتا میچ !
اس کھلاڑی نے پار کی توہم پرستی کی ساری حدیں ، پیشاب پئے بغیر نہیں کھیلتا میچ !

کھیل اور توہم پرستی کا بہت گہرا رشتہ ہوتا ہے ۔ اکثر کھلاڑی میدان پر عجیب و غریب حرکت کرتے نظر آتے ہیں ۔ یہی نہیں وہ میچ سے پہلے بھی کئی ایسے کام کرتے ہیں ، جو ان کے فنس کو حیران کردیتا ہے ۔ حالانکہ ایتھیلیٹ یا کھلاڑیوں کو اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ کوئی ان کے بارے میں کیا سوچ رہا ہوگا ، وہ تو صرف کامیابی حاصل کرنے کیلئے ایسے ٹوٹکے جاری رکھتا ہے ۔ توہم پرستی (Bizarre Superstition) بات کریں تو کوئی کھلاڑی اپنا لکی بریسلیٹ پہنتا ہے تو کوئی گلے میں اسپیشل چین پہنتا ہے ۔ کوئی جیب میں رومال رکھتا ہے تو کوئی میدان کے اندر سیدھا پاوں پہلے رکھتا ہے ۔ لیکن آج ہم آپ کو ایک ایسے فائٹر کے بارے میں بتائیں جو میچ جیتنے کیلئے اپنا ہی پیشاب پیتا ہے ۔ اس کو لگتا ہے کہ اپنا پیشاب پینے سے اس کو طاقت ملتی ہے اور اس کے بعد وہ ناقابل تسخیر ہوجاتا ہے ۔


لیوتو کاراوالہو ماشدا  (Lyoto Machida)  برازیل کے مسکڈ مارش آرٹ کے کھلاڑی ہیں ۔ وہ یو ایف سی کے لائٹ ہیوی ویٹ چمپئن شپ اپنے نام کرچکے ہیں ۔ اس کے ساتھ ہی ان کے نام کئی بڑے ریکارڈ بھی ہیں ۔ ایم ایم اے کی دنیا میں لیوتا ماشدا کا نام بڑے احترام کے ساتھ لیا جاتا ہے ۔ ماشدا نے اپنے کیریئر میں 35 میں س 26 میچ جیتے ہیں اور نو میں ان کو ہار کا منہ دیکھنا پڑا ہے ۔ گیارہ میچ انہوں نے اپنے حریف کو ناک آوٹ کرکے جیتے ہیں ۔


ظاہر سی بات ہے کہ لیوتو ماشدا کے اس بے مثال ریکارڈ کے پیچھے ان کی محنت پوشیدہ ہے ۔ ماشدا کے اندر غضب کی چالاکی ہے اور ان کا ایک ایک پنچ حریف پر ہتھوڑے کی طرح پڑتا ہے ۔ لیکن آپ کو یہ جانکار حیرانی ہوگی کہ ماشدا اپنی جیت کیلئے ایک ایسا ٹوٹکا کرتے ہیں ، جس کو سن کر کئی لوگوں کو یقین نہیں ہوگا ۔ لیوتو ماشدا اپنے میچ سے پہلے اپنا پیشاب پیتے ہیں ۔


اس یو ایف سی چیمپئن نے خود ایک انٹرویو میں اس بات کا انکشاف کیا تھا کہ وہ کئی سالوں سے اپنا ہی پیشاب پی رہے ہیں ، جس سے ان کے جسم کو طاقت ملتی ہے اور وہ فائٹ میں اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرپاتے ہیں ۔ صرف لیوتو ماشدا ہی نہیں بلکہ ان کے والد بھی ایسا ہی کام کرتے ہیں ۔ ماشدا کے والد نے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا تھا کہ ان کا بیٹا گزشتہ کئی سالوں سے صرف میچ نہیں بلکہ روزانہ اپنا پیشاب پینے لگا ہے ۔

ویسے پیشاب پینے والے لیوتو ماشدا واحد ایتھیلیٹ نہیں ہیں ۔ ان کے علاوہ میکسکو کے باکسر جوان مارکیز بھی ایسا ہی کرتے تھے ۔ ان کا دعوی تھا کہ ایسا کرنے سے انہیں زیادہ وٹامن ملتے ہیں ۔ لیکن سال 2011 میں انہوں نے ڈاکٹر کے مشورہ کے بعد اپنا پیشاب پینا چھوڑ دیا تھا ۔ اس کے علاوہ ایک اور مکس مارشل آرٹس فائٹر لیوک کمو بھی طاقت پانے کیلئے اپنا پیشاب پیتے ہیں ۔
First published: May 26, 2020 05:25 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading