உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عمران خان بھی نہیں بچا پائے پاکستان- نیوزی لینڈ سیریز، سیکورٹی اسباب سے عین موقع پر منسوخ ہوئی سیریز

    پاکستان- نیوزی لینڈ سیری سیکورٹی اسباب سے عین موقع پر منسوخ

    پاکستان- نیوزی لینڈ سیری سیکورٹی اسباب سے عین موقع پر منسوخ

    پاکستان اور نیوزی لینڈ سیریز سیکورٹی خدشات کے باعث آج منسوخ کردی گئی۔ نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم 18 سال بعد تین ون ڈے اور پانچ ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلنے کے لیے 11 ستمبر کو پاکستان آئی تھی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی: پاکستان اور نیوزی لینڈ سیریز سیکورٹی خدشات کے باعث آج منسوخ کردی گئی۔ نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم 18 سال بعد تین ون ڈے اور پانچ ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلنے کے لیے 11 ستمبر کو پاکستان آئی تھی۔ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ 'نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے آگاہ کیا ہے کہ انہیں سیکورٹی کے حوالے سے الرٹ کیا گیا ہے اس لیے یکطرفہ طور پر سیریز ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
      بیان میں کہا گیا کہ 'پاکستان کرکٹ بورڈ اور حکومت پاکستان نے مہمان ٹیم کی سیکورٹی کے لیے مکمل حفاظتی انتظامات کئے ہیں۔ ہم نے نیوزی کرکٹ بورڈ کو بھی یہی یقین دہانی کرائی تھی اور وزیر اعظم نے ذاتی طور پر نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کو رابطہ کرکے انہیں بتایا کہ ہماری سیکورٹی انٹیلیجنس دنیا کی ایک بہترین ایجنسی ہے اور مہمان ٹیم کو کوئی سیکورٹی کا خطرہ نہیں ہے'۔ 
      انہوں نے بتایا کہ 'نیوزی لینڈ ٹیم کے آفیشلز نے حکومت پاکستان کی سیکورٹی پر اطمینان کا اظہار کیا تھا'۔ نیوزی لینڈ کے خلاف ون ڈے سیریز راولپنڈی اسٹیڈیم میں کھیلی جانی تھی، میچز 17، 19 اور 21 ستمبر کوکھیلے جانے تھے۔ اس کے علاوہ لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں پاکستان کے خلاف نیوزی لینڈ نے 25 ستمبر سے 3 اکتوبر تک پانچ ٹی 20 میچز بھی کھیلے جانے تھے۔




      پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے خود نیوزی لینڈ کے وزیر اعظم سے بات کی، لیکن وہ کھلاڑی کی سیکورٹی کے پیش نظر ان کی ماننے کو تیار نہیں ہوئیں۔
      پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے خود نیوزی لینڈ کے وزیر اعظم سے بات کی، لیکن وہ کھلاڑی کی سیکورٹی کے پیش نظر ان کی ماننے کو تیار نہیں ہوئیں۔

      نیوزی لینڈ نے راولپنڈی میں ہونے والے پہلے ونڈے سے عین قبل پورا دورہ منسوخ کردیا۔ دورہ منسوخ ہونے کی وجہ کورونا وائرس نہیں رہا۔ اس کی وجہ تھی پاکستان کی سیکورٹی صورتحال۔ نیوزی لینڈ کی حکومت نے فوراً کرکٹ ٹیم کو پاکستان سے لوٹنے کا حکم دیا اور اس کے بعد پورا دورہ ہی منسوخ کرنا پڑا۔ دراصل نیوزی لینڈ کی سیکورٹی ایجنسی کے الرٹ کے بعد نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کو ہوٹل سے اسٹیڈیم نہیں جانے دیا گیا اور کچھ دیر بعد ہی دورہ منسوخ ہوگیا۔ نیوزی لینڈ کی ٹیم کو فوراً ملک لوٹنے کے لئے بلایا گیا ہے۔ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے خود نیوزی لینڈ کے وزیر اعظم سے بات کی، لیکن وہ کھلاڑی کی سیکورٹی کے پیش نظر ان کی ماننے کو تیار نہیں ہوئیں۔


      نیوز ایجنسی یو این آئی اردو کے اِن پُٹ کے ساتھ۔



      Published by:Nisar Ahmad
      First published: