ہوم » نیوز » اسپورٹس

بنگلہ دیش سے جیت کر بھی ہار گیا پاکستان، سیمی فائنل میں نہیں بنا پایا جگہ

پاکستان کی طرف سے شاہین آفریدی نے شاندارگیند بازی کرتے ہوئے 5 وکٹ حاصل کئے اور ٹیم کی جیت میں اہم کردارادا کیا۔

  • Share this:
بنگلہ دیش سے جیت کر بھی ہار گیا پاکستان، سیمی فائنل میں نہیں بنا پایا جگہ
پاکستان نے بنگلہ دیش کو شکست دے دی۔

پاکستان کی ٹیم آئی سی سی عالمی کپ میں سال 1992 کی تاریخ دوہرانے سے ناکام رہی اور بنگلہ دیش کے خلاف آخری لیگ میچ کے ساتھ ٹورنامنٹ میں سفرختم ہوگیا۔ سیمی فائنل میں پہنچنےکی ناممکن امیدیں لے کرپاکستان نے ٹاس جیت کرپہلے بلے بازی منتخب کی اور315 کا بڑا اسکورکھڑا کیا۔ 'مین آف دی میچ' رہے شاہین آفریدی کی شاندارگیند بازی کی مدد سے انہوں نے بنگلہ دیش کو221 پرہی آل آوٹ کردیا۔ پاکستان نے 94 رنوں سے جیت حاصل کی اورجیت کے ساتھ ٹورنامنٹ کا خاتمہ کیا۔


سیمی فائنل میں پہنچنے کے لئے پاکستان کو بنگلہ دیش کو8 رن پرآل آوٹ کرنا تھا۔ حالانکہ وہ ایسا کرنے میں ناکام رہے۔ ٹیم کا ٹاپ آرڈربہت کمال نہیں کرسکا اور 78 کے کل اسکور پر انہوں نے تین وکٹ گنوا دیئے تھے۔ پاکستان کی طرف سے شاہین آفریدی شاندارگیند بازی کرتے ہوئے 9.1 اوورمیں 35 رن دے کر6 وکٹ حاصل کئے اوربنگلہ دیش کی ہارطے کی۔


محمد عامرنے پاکستان کو پہلی کامیابی سومیا سرکارکو 22 رن کے اسکورپرآوٹ کرکے دلائی۔ اس کے بعد شاہین آفریدی نے تمیم اقبال (8) کوبولڈ کرکے بنگلہ دیش کودوسرا جھٹکا دیا۔ اس کے بعد وہاب ریاض نے مشفق الرحیم (16) کو بولڈ کیا۔ لٹن دا (62) اورشکیب الحسن (64) نے بڑی شراکت کی کوشش کی، لیکن شاہین آفریدی نےلٹن داس کے بعد شکیب الحسن کوآوٹ کرکے بنگلہ دیش کو بڑا جھٹکا دیا۔


شاہین آفریدی نے 9.1 اوورمیں 35 رن دے کر 6 وکٹ حاصل کئے۔
شاہین آفریدی نے 9.1 اوورمیں 35 رن دے کر 6 وکٹ حاصل کئے۔


شکیب الحسن نے اس میچ میں اپنی 64 رنوں کی اننگ سے عالمی کپ میں 606 رن بناکرعالمی ریکارڈ قائم کئے۔ حالانکہ وہ سچن تندولکرکا ریکارڈ توڑنے سے چوک گئے۔ شکیب الحسن کے جانے کے بعد محمود اللہ اورمصدق حسین (16) نے 43 رنوں کی شراکت کی، جسے شاداب خان نے توڑا۔ ان کی گیند پرمصدق حسین بابراعظم کو کیچ تھما بیٹھے۔ شاہین آفریدی نے 41 ویں اوورمیں محمود اللہ (29) اورسیف الدین کوگولڈن ڈک کیا۔ کپتان مشرف مرتضیٰ صرف 15 رن کا ہی تعاون کرپائے۔ اپنا 9 واں اوور لے کرآئے شاہین نے مستفیض الرحمان (1) کو بولڈ کیا اورچھٹا وکٹ حاصل کیا۔

شکیب الحسن نے 64 رنوں کی اننگ کھیلی اورورلڈ کپ میں 606 رن بنائے۔
شکیب الحسن نے 64 رنوں کی اننگ کھیلی اورورلڈ کپ میں 606 رن بنائے۔


پاکستان نے دیا تھا 316 رنوں کا ہدف 

پاکستان نے ٹاس جیت کرپہلے بلے بازی کرنے کافیصلہ کیا اور 50 اوورمیں رن بنائے۔ فخر زمان کا وکٹ جلدی کھو دینے کے بعد امام الحق اوربابراعظم کی شانداربلے بازی سے پاکستان کے لئے بڑے اسکورکی بنیاد رکھی۔ دونوں کے درمیان دوسرے وکٹ کے لئے 157 رنوں کی شراکت کی۔ حالانکہ بابراعظم 96 رن پرایل بی ڈبلیوہوگئے اورسنچری بنانے سے محروم رہ گئے۔ ان کے بعد محمد حفیظ نے رن ریٹ میں کوئی کمی نہیں آنے دی اورتیزی سے رن جوڑے۔ بابراعظم کے جانے کے بعد امام الحق (100) نے سنچری پوری کی، لیکن بدقسمت طریقے سے آوٹ ہوئے۔ مستفیض الرحمان کی گیند کو بیک فٹ پرکھیلنے گئے امام الحق ہٹ وکٹ ہوگئے۔
First published: Jul 05, 2019 11:55 PM IST